ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

دہشت گرد تنظیموں کی نئی سازش: فوج کے بلٹ پروف جیکٹس اور ہیلمٹ لوٹنے کی منصوبہ بندی

دہشت گردوں کا خیال ہے کہ ہندوستانی فوج اور سکیورٹی فورسز جو بلٹ پروف ہیلمٹ ، پٹکا اور بلٹ پروف جیکٹس استعمال کرتی ہیں وہ بہترین معیار کے ہیں۔

  • Share this:
دہشت گرد تنظیموں کی نئی سازش: فوج کے بلٹ پروف جیکٹس اور ہیلمٹ لوٹنے کی منصوبہ بندی
دہشت گردوں نے ہتھیاروں کے ساتھ ساتھ بلٹ پروف ہیلمٹ اور بندوق لوٹنے کا بھی منصوبہ بنایاہے

نئی دہلی:پچھلے کچھ مہینوں میں ، بہت سے دہشت گرد سرحد پر یا انکاؤنٹر میں ہلاک ہوگئے۔ اس صورتحال میں دہشت گرد تنظیموں کو لگتا ہے کہ سکیورٹی فورسز کے ساتھ مقابلے کے دوران بلٹ پروف ہیلمٹ اور پٹکا ان کے لئے کارآمد ثابت ہوسکتے ہیں۔ اسی لئے دہشت گردوں نے ہتھیاروں کے ساتھ ساتھ بلٹ پروف ہیلمٹ اور بندوق لوٹنے کا بھی منصوبہ بنایاہے۔دراصل ، سکیورٹی ایجنسیاں ایک طویل عرصے سے دہشت گردوں کی اس نئی سازش کو ڈی کوڈ کرنے میں مصروف تھیں۔ سکیورٹی فورسز کے اعلیٰ عہدیداروں پر مشتمل ذرائع کے مطابق ، درحقیقت دہشت گردوں نے فوج کے آپریشن اور پچھلے کچھ مہینوں سے دہشت گردوں کے خلاف بھارتی سکیورٹی فورسز کے ذریعے دہشت گردوں کی صفائی کے بعد یہ نئی سازش رچی جارہی ہے۔


فوج کے یونٹوں پر حملہ کرکے لوٹ مار کی منصوبہ بندی


دہشت گردوں کا خیال ہے کہ ہندوستانی فوج اور سکیورٹی فورسز جو بلٹ پروف ہیلمٹ ، پٹکا اور بلٹ پروف جیکٹس کا استعمال کرتے ہیں وہ بہترین معیار کے ہیں۔ لہذا ، فوج اور سکیورٹی فورسز کے دستوں پر حملہ کرنے اور انہیں لوٹنے کے لئے ایک بڑا منصوبہ بنایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ، جموں کے سنبہ سیکٹر کی ایک سرحدی چوکی پر تعینات فوجیوں کو اس سیکٹر میں پاکستان کے چمن خورد اور گیلر ٹنڈا علاقوں میں بغیر پائلٹ کے طیارہ (یو اے وی) / ڈرون کی نقل و حرکت مسلسل دیکھنے میں آرہی ہے۔ سکیورٹی ایجنسیا ں اس کو لیکر چوکس ہے۔جموں وکشمیر: نوشہرہ سیکٹر میں ایل او سی پر پاکستان کی گولی باری میں فوج کا JCO شہید


ڈرون کیمروں کے ذریعے ریکی کرنے کا شک

دراصل، سکیورٹی فورسز کو شبہ ہے کہ دہشت گردوں کی دراندازی کے لئے پاکستان سے ڈرون کیمروں کے ذریعے بین الاقوامی سرحد کے آس پاس کے علاقوں پر چھاپے مار ی کی جارہی ہے۔ اتناہی نہیں ، ڈرون کے ذریعے بین الاقوامی سرحد کے آس پاس کے کسی خاص جگہ پر بم بھاری کی سازش بھی ہوسکتی ہے۔ تین دن پہلے ، 20 مارچ کو ، سمبا سیکٹر میں بین الاقوامی بارڈر سے 500-1000 میٹر پرواز صبح 9:15 سے 9:45 بجے تک اور پھر 11:32سے 11:35 بجے کے درمیان500 سے 800 میٹر کی بلندی پر اڑتی ہوئی دیکھی گئی ہے

بظاہر ، جموں و کشمیر میں مسلسل بہتری والی صورتحال سے سرحد پار بیٹھے دہشت گرد خوش نہیں ہیں اور اسی لیے جموں و کشمیر میں دہشت گرد وادی کشمیر میں بدامنی پھیلانے کے لئے کچھ حکم نامے جاری کر رہے ہیں۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Mar 24, 2021 08:12 AM IST