உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مرکز کی نئی تعلیمی پالیسی سے جموں وکشمیر میں بے روزگاری میں کمی آنے کا امکان

    مرکز کی نئی تعلیمی پالیسی سے جموں وکشمیر میں بے روزگاری میں کمی آنے کا امکان

    مرکز کی نئی تعلیمی پالیسی سے جموں وکشمیر میں بے روزگاری میں کمی آنے کا امکان

    اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹکنالوجی (IUST) اونتی پورہ میں نئی تعلیمی پالیسی کے تحت پڑے لکھے نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے حوالے سے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ مرکزی حکومت کے مختلف اسکل ڈیولپمنٹ پروگراموں کے تحت ان بے روزگار نوجوانوں کو با اختیار بنایا جا رہا ہے۔

    • Share this:
    اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹکنالوجی (IUST) اونتی پورہ میں نئی تعلیمی پالیسی کے تحت پڑے لکھے نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے حوالے سے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ مرکزی حکومت کے مختلف اسکل ڈیولپمنٹ پروگراموں کے تحت ان بے روزگار نوجوانوں کو با اختیار بنایا جا رہا ہے۔ سوموار کو اسلامی یونیورسٹی آف ساٸنس اینڈ ٹکنا لوجی کی جانب سے کالج پرنسپلز کے لیے انوویشن اینڈ انٹر پرینیور شپ ڈیولپمنٹ (سی آئی ای ڈی) کی جدت طرازی اور کاروباری صلاحیتوں کی تعمیر پر ورکشاپ" کا انعقاد کیا گیا ہے، جس کے تحت وادی کشمیر کے تمام اضلاع کے کالج پرنسپلز کو انٹرپریونیر شپ کو کالجوں میں متعارف کرانے کے فاٸدے بتائے گئے۔

    پروگرم کے دوران ماہرین نے وادی کے مختلف اضلاع سے آئے ہوئے پرنسپلوں کو کالجوں میں انٹرپرنیورشپ  کے حوالے سے جانکاری فراہم کی اور انہیں انٹرپریونیر شپ کو بڑھانے کے حوالے سے مختلف معاملات پر بھی ضروری جانکاری فراہم کی گئی ہے۔ ڈاریکٹر کالیجز یاسمین عشاٸی نے اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے کہا کہ انٹر پریونیور شپ میں ہمیں جدت لانی چاہئے تاکہ روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع پیدا کئے جاسکیں۔ انہوں نے پروگرام میں شریک وادی کے تمام اضلاع سے شریک ہونے والے  پرنسپلوں سے کہا کہ وہ اپنے اپنے متعلقہ علاقوں کے کالجز میں انٹر پریونیر شپ کو ترجیحی بنیاد پر طالب علموں میں انٹر پریونیر شپ کے متعلق رحجان پیدا کریں تاکہ تعلیم سے فارغ ہونے کے بعد ہمارے بچے اپنا روزگار کمانے میں نہ صرف خود کفیل بن جائے بلکہ وہ دوسروں کے لئے بھی روزگار کے وساٸل پیدا کر سکیں۔

    یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر شکیل احمد رامشو نے کہا ہے کہ وادی کے تمام کالجوں کے پرنسپلوں کے لیے اس ورکشاپ کے انعقاد کا مقصد انہیں انٹرپرینیورشپ اور اسکل ڈیولپمنٹ پروگرام کے فوائد کے بارے میں درست معلومات فراہم کرنا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ان پروگراموں کی مدد سے کالج کے طلباء کو ہنر مند بنایا جا سکتا ہے، جس کے بعد وہ روزگار کے مواقع تلاش کرسکتے ہیں۔

    نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہویے کچھ طلبہ نے بتایا کہ ایسے پروگرام منقعد کرنے سے انہیں کافی فائدہ مل رہا ہے اور مرکزی حکومت کشمیری یوتھ کو خودکفیل بنانے کے غرض سے اقدام اٹھا رہی ہے اور وہ دن دور نہیں ہے کہ جلد ہی جموں کشمیر میں بے روزگاری ختم ہوجائے گی۔ ایک طالب توصیف احمد نے بتایا کہ نوجوان نسل کو بھی سرکاری نوکریوں کے پیچھے نہیں رہنا چاہئے اور ایسے مرکزی معاونت والی اسکیموں کا فائدہ اٹھانا چاہئے۔
    قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں.
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: