உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جنوبی کشمیر کے پانپور جھیل میں مہاجر پرندوں کی آمد شروع، ہر سال آتے ہیں مختلف قسم کے پرندے

    ہر سال یہاں ہزاروں کی تعداد مختلف اقسام پرندے سرما میں رہتے ہیں موجود

    ہر سال یہاں ہزاروں کی تعداد مختلف اقسام پرندے سرما میں رہتے ہیں موجود

    اس جھیل میں مختلف اقسام کی مچھلیاں بھی پائی جارہی ہے یہ جھیل زعفران کے کھیتوں کے بیچوں بیچ اپنے دلکش نظارے پیش کررہا لیکن ستم ظریفی کی بات یہ ہے کی اس جھیل کی جانب ابھی تک کسی بھی سرکار نے کوئی توجہ نہیں دی ہے جس کی وجہ سے یہ جھیل اب آہستہ آہستہ اپنی شناخت کھو رہی ہے

    • Share this:
    سید منظورجنوبی کشمیر کے قصبہ پانپور میں موجود دوسال کنال اراضی پر مشتمل خوبصورت چھتلم جھیل میں ان دنوں مہمان پرندوں کی آمد شروع ہوئی ہے اور ہرسال موسم سرما میں یہاں لاکھوں کی تعداد میں مہاجر پرندے موجود ہوتے ہیں یہ مختلف اقسام کے مہاجر پرندے دنیا کے کئی ممالک سے یہاں آتے ہیں اور قریباً تین ماہ تک یہاں قیام کرتے ہیں اسلئے یہ آبی پناہ گاہ جنوبی کشمیر میں بہت مقبول اور اس سال بھی جھیل میں مختلف اقسام کے پرندوں نے آنا شروع کیا ہے۔ اس سال جھیل میں کچھ نئے اقسام کے پرندے بھی دیکھنے کو مل رہے ہیں۔۔

    وہیں اس جھیل میں مختلف اقسام کی مچھلیاں بھی پائی جارہی ہے یہ جھیل زعفران کے کھیتوں کے بیچوں بیچ اپنے دلکش نظارے پیش کررہا لیکن ستم ظریفی کی بات یہ ہے کی اس جھیل کی جانب ابھی تک کسی بھی سرکار نے کوئی توجہ نہیں دی ہے جس کی وجہ سے یہ جھیل اب آہستہ آہستہ اپنی شناخت کھو رہی ہے۔ علاقے کے ایک نوجوان طارق احمد نے بتایا کہ علاقے کے لوگوں نے کئی بار سرکار کو تحریری طور جھیل کی خستہ حالی کے حوالے سے آگاہ کیا لیکن ابھی تک اس حوالے سے کوئی بھی اقدام نہیں اٹھایا گیا ہے۔

    وہیَ دوسری جانب کئی جگہوں پر جھیل سکڑتا جارہا ہے جب کہ جھیل کے اندر بڑی تعداد میں گندگی بھی جمع ہوگئی ہے اگرچہ جھیل کی دیکھ ریکھ محکمہ فیشریس ،وایلد لایف،محکمہ ویٹلینڈ کے زمہ ہے لیکن یہ سبھی محکمےابھی تک اسکی خوبصورت جھیل کی شان شوکت بحال کرنے میں ناکام ہوئے ہیں۔ مقامی لوگ سرکار سے مطالبہ کررہے ہیں کہ اس جھیل کو ایکو ٹوریزم کے ساتھ جوڈا جائے تاکہ علاقے میں پڑے لکھے نوجواںوں کے لئے روزگار کے وسائل پیدا ہوسکے۔ مقامی لوگ یہ بھی مطالبہ کر رہے ہیں کہ جھیل کی چاروں طرف فینسینگ کی جائے تاکہ اس ورسے کو بچایا جاسکے اور مہمان پرندوں کے لئے ٹھوس اقدام کئے جائے تاکہ یہ جانور یہاں محفوظ رہے۔

     
    Published by:Sana Naeem
    First published: