உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir: غلام نبی آزاد نے نئی پارٹی بنانے سے کیا انکار، مستقبل سے متعلق کہی یہ بڑی بات

    Ghulam Nabi Azad: پنجاب میں کیپٹن امریندر سنگھ کی بغاوت کے بعد اب ایسا لگ رہا ہے کہ جموں وکشمیر میں سینئر لیڈر غلام نبی آزاد (Ghulam Nabi Azad) نے بھی پارٹی کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ آزاد ان دنوں جموں وکشمیر میں زبردست ریلیاں کر رہے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ ان ریلیوں میں وہ کانگریس کے خلاف بیان بازی کر رہے ہیں۔ سیاسی گلیاروں میں ایسی خبریں ہیں کہ غلام نبی آزاد خود اپنی پارٹی لانچ کرسکتے ہیں۔

    Ghulam Nabi Azad: پنجاب میں کیپٹن امریندر سنگھ کی بغاوت کے بعد اب ایسا لگ رہا ہے کہ جموں وکشمیر میں سینئر لیڈر غلام نبی آزاد (Ghulam Nabi Azad) نے بھی پارٹی کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ آزاد ان دنوں جموں وکشمیر میں زبردست ریلیاں کر رہے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ ان ریلیوں میں وہ کانگریس کے خلاف بیان بازی کر رہے ہیں۔ سیاسی گلیاروں میں ایسی خبریں ہیں کہ غلام نبی آزاد خود اپنی پارٹی لانچ کرسکتے ہیں۔

    Ghulam Nabi Azad: پنجاب میں کیپٹن امریندر سنگھ کی بغاوت کے بعد اب ایسا لگ رہا ہے کہ جموں وکشمیر میں سینئر لیڈر غلام نبی آزاد (Ghulam Nabi Azad) نے بھی پارٹی کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ آزاد ان دنوں جموں وکشمیر میں زبردست ریلیاں کر رہے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ ان ریلیوں میں وہ کانگریس کے خلاف بیان بازی کر رہے ہیں۔ سیاسی گلیاروں میں ایسی خبریں ہیں کہ غلام نبی آزاد خود اپنی پارٹی لانچ کرسکتے ہیں۔

    • Share this:
      سری نگر: کانگریس (Congress) کے غیر مطمئن لیڈروں میں شامل غلام نبی آزاد نے جموں وکشمیر (Jammu-Kashmir) میں نئی پارٹی بنانے سے انکار کردیا ہے۔ حالانکہ انہوں نے اشاروں ہی اشاروں میں یہ بھی کہہ دیا کہ کون جانتا ہے کہ مستقبل میں کیا ہوگا۔ دراصل غلام نبی آزاد مسلسل جموں وکشمیر میں ریلیوں سے خطاب کر رہے ہیں، جس سے قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ وہ ایک نئی پارٹی بنا رہے ہیں۔ غلام نبی آزاد کے مسلسل ریلی کرنے اور ان کے 20 وفاداروں کے ایک کے بعد استعفیٰ نے کانگریس کی تشویش میں اضافہ کردیا ہے۔ حالانکہ انہوں نے کہا ہے کہ ریلیاں جموں وکشمیر میں سیاسی سرگرمیوں کو دوبارہ شروع کرنے کے لئے کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 370 ہٹانے اور ریاست کا درجہ ختم کرنے کے بعد جموں وکشمیر میں سیاسی سرگرمیاں ٹھنڈے بستے میں چلی گئی ہیں۔

      غلام نبی آزاد نے کھول دیا محاذ!

      پنجاب میں کیپٹن امریندر سنگھ کی بغاوت کے بعد اب ایسا لگ رہا ہے کہ جموں وکشمیر میں سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے بھی پارٹی کے خلاف محاذ کھول دیا ہے۔ آزاد ان دنوں جموں وکشمیر میں زبردست ریلیاں کر رہے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ ان ریلیوں میں وہ کانگریس کے خلاف بیان بازی کر رہے ہیں۔ سیاسی گلیاروں میں ایسی خبریں ہیں کہ غلام نبی آزاد خود اپنی پارٹی لانچ کرسکتے ہیں۔ حالانکہ غلام نبی آزاد نے کہا کہ وہ اپنی ابھی کوئی پارٹی نہیں بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا، کوئی نہیں کہہ سکتا کہ سیاست میں آگے کیا ہوگا، جیسے کوئی نہیں جانتا کہ وہ کب مرجائے گا۔ سیاست میں آگے کیا ہوگا اس کی پیشین گوئی کوئی نہیں کرسکتا، لیکن پارٹی بنانے کا میرا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

      غلام نبی آزاد نے اعلیٰ قیادت کی تنقید کی

      غلام نبی آزاد نے کانگریس کے اعلیٰ کمان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب کوئی تنقید سننا نہیں چاہتا ہے اور بولنے پر درکنار کردیا جاتا ہے۔ آزاد نے کہا کہ کوئی بھی قیادت کو چیلنج نہیں دے رہا ہے۔ ایک وقت میں جب پارٹی کے اندر سب کچھ صحیح نہیں چل رہا تھا، اس وقت اندرا گاندھی اور راجیو گاندھی نے مجھے بہت زیادہ آزادی دی تھی۔ وہ تنقید کا کبھی برا نہیں مانتے تھے۔ وہ اسے جارحانہ طور پر نہیں دیکھتے تھے، لیکن آج کی قیادت اسے جارحانہ رویے کے طور پر دیکھتی ہے۔

      مسلسل استعفیٰ دے رہے ہیں غلام نبی آزاد کے قریبی

      جموں وکشمیر کانگریس میں سیاسی تصویر تیزی سے بدل رہی ہے۔ غلام نبی آزاد کے تقریباً 20 قریبی لیڈروں نے گزشتہ دو ہفتوں میں پارٹی کے الگ الگ عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ اپنے استعفیٰ میں لیڈروں نے غلام احمد میر کو ریاستی یونٹ کے عہدے سے ہٹانے سمیت کانگریس میں بڑی تبدیلی کا مطالبہ کیا ہے۔ ان لیڈروں نے الزام لگایا ہے کہ انہیں ریاستی کانگریس قیادت کے ’مخالفانہ رویہ‘ کے سبب یہ قدم اٹھانا پڑا۔

      قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: