ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر میں انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتا ہے نوروز کا تہوار، اس دن  لوگ کرتے ہیں یہ کام

نوروز کا تہوار  جموں وکشمیر میں انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتاہے۔ اس دن  لوگ اپنے دوست اور اقارب کے گھر جاکر نوروز کی مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ عید کے تہوار کی طرح گھروں میں باضابطہ دعوتوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔کشمیر میں  زیادہ تر حضرت علی  کی خلافت وامامت  کی خوشی میں یہ دن  منایاجاتا ہے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر میں انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتا ہے نوروز کا تہوار، اس دن  لوگ کرتے ہیں یہ کام
وادی کشمیر میں نوروز nowruz 2021 کا تہوار انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتاہے۔

نوروز کا تہوار جموں وکشمیر میں انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتاہے۔ اس دن لوگ اپنے دوست اور اقارب کے گھر جاکر نوروز کی مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ عید کے تہوار کی طرح گھروں میں باضابطہ دعوتوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ کشمیر میں زیادہ تر حضرت علی کی خلافت وامامت کی خوشی میں یہ دن منایاجاتا ہے۔ وادی کشمیر میں نوروز nowruz 2021 کا تہوار انتہائی جوش و خروش کے ساتھ منایاجاتاہے۔ نوروز کے موقع پر وادی میں مختلف پکوانوں کے ساتھ ساتھ کشمیری ندرو کا پکوان خاص طور پر تیار کیا جاتا تھا۔ لوگ خاص کر بچے نئے کپڑے پہنتے ہیں ۔ اس دن کے موقع پر کشمیرکے خاص طور پر شیعہ آبادی والے علاقوں میں لوگ اپنے دوست اور اقارب کے گھر جاکر نوروز کی مبارکباد پیش کرتے ہیں جبکہ بچوں میں نقدی کے علاوہ اخروٹ بھی تقسیم کیے جاتے ہیں۔


عید کے تہوار کی طرح گھروں میں باضابطہ دعوتوں کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ اس دن لوگ ایک دوسرے سے گلے ملتے ہیں۔ خوشی کا اظہاکرتے ہیں ۔اللہ کی عبادت میں مشغول بھی رہتے ہیں ۔ہرایک کے چہرے پر مسکراہٹ نظرآتی ہے۔نوروز کے دن بچوں کے جیبوں میں اخروٹ رکھتے ہیں خواتین جگہ جگہ لوک گیت گاتے ہیں تاہم اب اس میں کمی واقع ہوئی ہے۔ سید عباس نامی ایک مقامی نے نیوز18 اردو کو بتایا کہ نوروز ہر سال بڑے جوش وخروش کے ساتھ منایاجاتاہے۔یہ دن خوشیوں کو دن ہے اس دن خوشیوں کودوسروں کے ساتھ بانٹ دیاجاتاہے۔ وادی کشمیر میں نوروز موسم بہار کے استقبال اور اس دن رونما ہونے والے اسلامی تاریخی واقعات کی خوشی میں منایا جاتا ہے۔




کشمیر میں زیادہ تر حضرت علی کی خلافت وامامت کی خوشی میں یہ دن منایاجاتاہے۔وادی کشمیر کے شیعہ آبادی والے علاقوں میں اس تہوار کی خوشیاں قریب ایک ہفتے تک منائی جاتی ہیں۔ ایرانی تہذیب اور تمدن کے کشمیر پر گہرے اثرات سے ہی نوروز کا تہوار یہاں انتہائی جوش وخروش کے ساتھ منایا جاتا ہے۔ نوروزکے تہوار کے ساتھ ہی وادی میں چھوٹے بڑے پارکوں میں پھول پودے اور میوہ باغات میں مختلف اقسام کے میوہ درخت لگانے کا بھی باضابطہ آغاز ہوتا ہے ۔

ڈاکٹر الطاف نے نیوز18اردوکوبتایا کہ اس دن خوشیوں کو بانٹ دیا جاتا ہے جیساکہ آج کے دور میں زیادہ تر لوگ ذہنی تناؤ کا شکار ہوتے ہیں ذہنی تناؤسے نکالنے کے لئے بھی اس دن کی اہمیت اب زیادہ دی جارہی ہے کیونکہ جب یہ خوشی کا دن ہوتاہے تو ذہنی تناؤکے شکار لوگوں کے ساتھ زیادہ ہی وقت صرف کیاجاتاہے تاکہ وہ اس دلدل سے نکل سکیں ۔گزشتہ سال کورناوائرس کے خوف اور بازاروں کے بند ہونے کی وجہ سے نوروز کا تہوار متاثر ہوا تھا آج دعا ہی کی جاتی ہے کہ نوروزکا یہ تہوارجموں وکشمیر کے لئے امن، ترقی اور خوشحالی کا باعث بنے گا۔ ساتھ ہی کورنا وئرس کے جلد خاتمے کے لئے ثابت ہو ۔ گزشتہ سال کورنا وائرس کے پھیلنے کے لاحق خطرات اور احتیاطی تدابیر کے تحت نوروز عالم کی تقاریب اور جشن منسو خ کر دئے گئے تھے۔ اس سال لوگوں نے گھروں میں سادگی سے نوروز کا تہوار منایا۔
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 21, 2021 08:14 PM IST