ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: عمر عبداللہ نے کہا- آرٹیکل 370 کے خلاف دائر عرضیوں پر ہو فوری سماعت

نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ پیپلز الائنس برائے گپکر اعلامیہ نے عدالت عظمیٰ میں دفعہ 370 اور 35 اے کی تنسیخ کے خلاف دائر کی جانے والی عرضیوں پر فوری شنوائی کی درخواست کی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 09, 2020 06:45 PM IST
  • Share this:
جموں وکشمیر: عمر عبداللہ نے کہا- آرٹیکل 370 کے خلاف دائر عرضیوں پر ہو فوری سماعت
جموں وکشمیر: عمر عبداللہ نے کہا- آرٹیکل 370 کے خلاف دائر عرضیوں پر ہو فوری سماعت

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ پیپلز الائنس برائے گپکار اعلامیہ نے عدالت عظمیٰ میں دفعہ 370 اور 35 اے کی تنسیخ کے خلاف دائر کی جانے والی عرضیوں پر فوری سماعت کی درخواست کی ہے۔ بتادیں کہ مرکزی حکومت کی طرف سے سال گذشتہ کے پانچ اگست کے دفعہ 370 اور دفعہ 35 اے کی تنسیخ کے فیصلوں کے خلاف جموں وکشمیر کی مختلف علاقائی سیاسی جماعتوں نے عدالت عظمیٰ میں عرضیاں دائر کی ہیں۔

عمر عبداللہ نے ایک ٹویٹ کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے کہا: 'پیپلز الائنس کی حالیہ میٹنگ میں لئے جانے والے فیصلے کے مطابق ہم نے عدالت عظمیٰ سے ان عرضیوں کی فوری طور پر شنوائی کرنے کی درخواست کی ہے جن میں سال گذشتہ کے پانچ اگست کے فیصلوں کو چلینج کیا گیا ہے'۔ انہوں نے جس ٹویٹ کو ری ٹویٹ کیا ہے اس میں کہا گیا ہے: 'جموں و کشمیر پیپلز کانفرنس نے عدالت عظمیٰ کی طرف رجوع کیا ہے کہ دفعہ 370، دفعہ35 اے اور جموں و کشمیر کو دو وفاقی حصوں میں منقسم کرنے کے خلاف دائر کی جانے والی عرضیوں کی فوری شنوائی کی جائے'۔



سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں اگلے ایک یا دو برس میں اسمبلی کے انتخابات ہونے کے کوئی امکانات نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ حد بندی کمیشن نے ابھی تک زمینی سطح پر اپنا کام شروع بھی نہیں کیا ہے۔
سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں اگلے ایک یا دو برس میں اسمبلی کے انتخابات ہونے کے کوئی امکانات نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ حد بندی کمیشن نے ابھی تک زمینی سطح پر اپنا کام شروع بھی نہیں کیا ہے۔


نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں اگلے ایک یا دو برس میں اسمبلی کے انتخابات ہونے کے کوئی امکانات نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ حد بندی کمیشن نے ابھی تک زمینی سطح پر اپنا کام شروع بھی نہیں کیا ہے۔ عمر عبداللہ نے اتوار کو نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا: 'اس وقت اسمبلی انتخابات کے انعقاد کی کوئی گنجائش ہی نہیں ہے ، اگر حد بندی کمیشن تشکیل نہیں دیا گیا ہوتا تو انتخابات کے امکانات تھے'۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'کورونا وائرس کی وجہ سے حد بندی کمیشن نے اپنا کام زمینی سطح پر شروع بھی نہیں کیا ہے ۔ ابھی تو ان کو علاقوں کا دورہ کرنا ہے اور وفود سے بھی ملاقات کرنی ہے ۔ تجاویز مانگنی ہیں ۔ پھر جا کر اپنی رپورٹ حکومت کے سامنے پیش کرنا ہے ۔ مجھے نہیں لگتا ہے کہ اگلے ایک دو برس میں یہاں اسمبلی انتخابات کا ہونا ممکن ہوگا'۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 09, 2020 06:45 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading