உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu Kashmir: جموں-کشمیر کو رئیل اسٹیٹ سرمایہ کاروں کے لئے کھولنے پر عمر اور محبوبہ نے ظاہر کی ناراضگی، مرکزی حکومت پر کی تنقید

    محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ۔ (فائل فوٹو)

    محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ۔ (فائل فوٹو)

    الزام بھی لگایا کہ علاقے کی آبادیات (Demographics) بدلنے کے لئے ایسا کیا جارہا ہے۔ جموں کشمیر انتظامیہ نے مرکز کے زیر انتظام ریاست میں آبادکاری اور اقتصادی پروجیکٹس کی ترقی کے لئے ملک کے رئیل اسٹیٹ سرمایہ کاروں کے ساتھ 18،300 کروڑ روپے کے 39 ایم او یو پر دستخط کیے ہیں، جس کے بعد ان دونوں رہنماؤں نے تبصرہ کیا ہے۔

    • Share this:
      سرینگر: جموں و کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ عمر عبداللہ (Omar Abdullah ) اور محبوبہ مفتی (Mehbooba Mufti) نے مرکز کے زیر انتظام ریاست کو رئیل اسٹیٹ سرمایہ کاروں (Real estate investors) کے لئے کھولنے کو لے کر انتظامیہ پر نشانہ لگایا ہے ، ساتھ ہی الزام بھی لگایا کہ علاقے کی آبادیات (Demographics) بدلنے کے لئے ایسا کیا جارہا ہے۔ جموں کشمیر انتظامیہ نے مرکز کے زیر انتظام ریاست میں آبادکاری اور اقتصادی پروجیکٹس کی ترقی کے لئے ملک کے رئیل اسٹیٹ سرمایہ کاروں کے ساتھ 18،300 کروڑ روپے کے 39 ایم او یو پر دستخط کیے ہیں، جس کے بعد ان دونوں رہنماؤں نے تبصرہ کیا ہے۔

      عمر عبداللہ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ایک بار پھر حکومت کی اصلی منشا سامنے آگئی ہے۔ لداخ کے لوگوں کی زمین، نوکری، ڈومیسائل قانون اور پہچان کو محفوظ رکھتے ہوئے جموں - کشمیر کو بیچنے کے لئے رکھا جارہا ہے۔ جموں کے لوگں کو محتاط رہنا چاہیے۔ سرمایہ کار کشمیر سے بہت پہلے جموں میں زمین خریدیں گے۔

      وہیں محبوبہ مفتی نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے واحد مسلم اکثریتی ریاست کو غیر انسانی بنانے، الگ تھلگ کرنے اور کمزور کرنے کے لئے جموں کشمیر کے خصوصی درجے کو غیر قانونی طور سے منسوخ کردیا گیا تھا۔ ہندوستانی حکومت کی کھلے عام لوٹ اور ہمارے وسائل کی فروختگی سے پتہ چلتاہے کہ اس کا واحد مقصد ہماری پہچان کو ختم کرنا اور آبادیات کو بدلنا ہے۔

      سیاسی جماعتیں لوگوں کو بھڑکانے کی کوشش کررہی ہیں: سنہا
      اپوزیشن پارٹیوں کے ترقی کے نام پر مقامی لوگوں کی زمینیں ہڑپنے کے الزامات پر منوج سنہا نے کہا کہ یہ ڈر پیدا کرنے اور لوگوں کو بھڑکانے کی کوشش ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے آبادی سے متعلق کوئی تبدیلی نہیں ہوگی۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: