உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیر میں صوفی فیسٹول کا انعقاد، ماہرین نے کہا صوفیائے کرام کے پیغام کو عام کرنے کی ضرورت 

    محکمہ سیاحت کی طرف سے منعقد اس پروگرام کا مقصد کشمیر کی صوفی روایات کو نئی نسل تک پہنچانے اور صوفیوں کے پیغام اخوت اور امن کو پوری دنیا تک پہنچانا ہے ۔

    محکمہ سیاحت کی طرف سے منعقد اس پروگرام کا مقصد کشمیر کی صوفی روایات کو نئی نسل تک پہنچانے اور صوفیوں کے پیغام اخوت اور امن کو پوری دنیا تک پہنچانا ہے ۔

    محکمہ سیاحت کی طرف سے منعقد اس پروگرام کا مقصد کشمیر کی صوفی روایات کو نئی نسل تک پہنچانے اور صوفیوں کے پیغام اخوت اور امن کو پوری دنیا تک پہنچانا ہے ۔

    • Share this:
    سرینگر میں آج صوفی فیسٹول منعقد کیا گیا۔ محکمہ سیاحت کی طرف سے منعقد اس پروگرام کا مقصد کشمیر کی صوفی روایات کو نئی نسل تک پہنچانے اور صوفیوں کے پیغام اخوت اور امن کو پوری دنیا تک پہنچانا ہے ۔ پروگرام میں رشی صوفی تحریک سے وابستہ کئی افراد نے شرکت کی۔ معروف براڈ کاسٹر اور شاعر ستیش عمل نے پروگرام کی نظامت کی۔ انھوں نے کہا کہ کشمیر کی صدیوں پرانی صوفی تحریک کو تمام مذاہب کا سنگم اور مغز سے تعبیر کیا۔ انھوں نے عظیم صوفی شیخ نور دین نورانی اور لل دید کے پیغام کا ذکر کیا۔ انھوں نے اس فیسٹول کے انعقاد پر کافی خوشی کا اظہار کیا اور کہا کہ کشمیر کے صوفیائے کرام کے پیغام کو عالمی سطح پر عام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ امن و بھائی چارے کی ا پیغام پوری دنیا میں پھیلے۔

    پروگرام دہلی گھرانے کی وسعت اقبال نے کلام امیر خسرو پیش کیا۔ سیکریٹری محکمہ سیاحت سرمد حفیظ نے کہا کہ صوفیائے کرام کے پیغام کو عام کرنے کے لئے کئی ایسے پروگرام منعقد کئے جائیں گے تاکہ کشمیر کی اس عظیم تہذیب کو پوری دنیا تک پہنچایا جاسکے۔ وسعت اقبال نے کشمیر کی صوفی تحریک کو موجودہ دور کے تمام مسائل کا حل قرار دیا۔
    پروفیسر آفاق عزیز نے شیوازم پر اپنی تقریر کے دوران کہا کہ لل دید کے کلام اور فلسفے پر روشنی ڈالی اور انکی شیخ نور دین نورانی کے تئیں عقیدت اور کہا کہ کشمیر کے مسلمان اور کشمیری پنڈت اور سکھ ان سب صوفیا کے تئیں برابر محبت اور عقیدت رکھتے ہیں۔

    سرینگر کے مئیر جنید عازم متو نے اپنی تقریر میں کہا کہ موجودہ شورش اور تذبذب کے دور میں صوفیائے کرام کے پیغام کو عام کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔جنید عازم نے کہا کہ صوفی ازم ہماری تہذیب کا لازم حصہ ہے اور اپنی نئی نسل تک اُنکے کلام اور پیغام کو پہنچانا ہمارا فریضہ ہے ۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: