உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیرمیں دہشت گردوں کودھکیل رہا ہے پاکستان، جتنے دہشت گرد مقامی ہوتے ہیں اتنے ہی پاکستانی

    کشمیرمیں دہشت گردوں کودھکیل رہا ہے پاکستان، جتنے دہشت گرد مقامی ہوتے ہیں اتنے ہی پاکستانی

    وادی کشمیرمیں دہشت گردوں کی صفوں میں مقامی دہشت گردوں کے ساتھ ساتھ خاصی تعداد میں پاکستانی دہشت گردوں کی شمولیت ہوتی ہے۔ شمالی کشمیرمیں حزب المجاہدین ایک مرتبہ پھر اپناقدم جمانےکی کوشش میں ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    بارہمولہ: وادی کشمیرمیں دہشت گردوں کی صفوں میں مقامی دہشت گردوں کے ساتھ ساتھ خاصی تعداد میں پاکستانی دہشت گردوں کی شمولیت ہوتی ہے۔ شمالی کشمیر میں حزب المجاہدین ایک مرتبہ پھر اپنا قدم جمانے کی کوشش میں ہیں۔ شمالی کشمیر کے حیدر بیگ پٹن میں قائم فوج کے دس سیکٹر میں آرمی، پولیس، سی آرپی ایف اور ایس ایس بی کی مشترکہ پریس کانفرنس میں آرمی دس سیکٹر کے کمانڈر برگیڈئیر نریش مشرا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شمالی کشمیر کے پٹن اور اس کے آس پاس کے علاقوں میں حزب المجاہدین اپنے پیرجمانےکی کوشش کر رہے ہیں۔

    کمانڈر برگیڈیئر نریش مشرا نے بتایا کہ گزشتہ کئی مہینوں سے یہ دیکھا گیا کہ جتنے بھی انکاؤنٹر ہوئےہیں، ان میں ضرورپاکستانی دہشت گرد شامل ہوتے ہیں۔ اس سے یہ صاف ظاہر ہوتا ہے کہ پاکستان کشمیر میں دہشت گردوں کو دھکیل رہا ہے۔ انہوں نےکہا کہ یہ کہنا غلط ہے کہ سارے کے سارے مقامی ہوتے ہیں بلکہ جتنے مقامی ہوتے ہیں اتنے ہی پاکستانی ہوتے ہیں۔ جموں وکشمیر پولیس کے شمالی کشمیرکے ڈی آئی جی سلیمان چودھری نے بھی پریس کانفرنس میں بتایا کہ جب سے جموں و کشمیرمیں دفعہ 370 کو منسوخ کیا گیا، تب سے پاکستان کی طرف سے یہ کوشش رہی ہےکہ یہاں زیادہ سے زیادہ نوجوانوں کو دہشت گردانہ صفوں میں بھرتی کیا جائے۔ اس کا بین ثبوت کپواڑہ،کیرن اوردیگرمقامات پردیکھا گیا۔ سلیمان چودھری نے مزید بتایا کہ سیکورٹی فورسیز کی یہ کوشش رہتی ہےکہ یہاں کے نوجوانوں کو دہشت گردی کی جانب راغب ہونے سے بچایا جا سکے۔ انہوں نے کشمیر کے نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ غلط راستہ ترک کریں۔

    کمانڈر برگیڈیئر نریش مشرا نے بتایا کہ گزشتہ کئی مہینوں سے یہ دیکھا گیا کہ جتنے بھی انکاؤنٹر ہوئےہیں، ان میں ضرورپاکستانی دہشت گرد شامل ہوتے ہیں۔
    کمانڈر برگیڈیئر نریش مشرا نے بتایا کہ گزشتہ کئی مہینوں سے یہ دیکھا گیا کہ جتنے بھی انکاؤنٹر ہوئےہیں، ان میں ضرورپاکستانی دہشت گرد شامل ہوتے ہیں۔


    آرمی کے کمانڈر بریگیڈیئر نریش مشرا نے بھی بتایا کہ وادی کشمیر کے نوجوان ملک کے لئے اہم اثاثہ ہیں۔ اگریہ لوگ صیحح راستے پر چلیں گے اوران کا مین ایجنڈا تعمیروترقی رہے تو وہ کشمیر کیا ملک کے لئےبہت ہی بہتر ہوگا۔ نریش مشرا نے مزید بتایا کہ جوں ہی انہیں کسی نوجوان کے دہشت گردوں صفوں میں شامل ہونے کی اطلاع ملتی ہے تو وہ ان کےوالدین یارشتہ داروں کےذریعےسےاسےواپس لانےکی کوشش کرتےہیں،جس میں وہ بہت حد تک کامیاب ہوئےہیں۔مشرانےواضح کردیاکہ جوملیٹنٹ بنناچاہتاہےاسےموقع نہیں دیاجائےگا۔گزشتہ روزشمالی کشمیرکےیدی پورہ پٹن میں ہوئے انکاؤنٹرسے متعلق پریس کانفرنس میں ان باتوں کااظہارکیاگیا۔اس انکاؤنٹرمیں تین ملیٹنٹ مارے گئے،ایک میجرسمیت دوپولیس اہلکاربھی زخمی ہوئے ۔انکاؤنٹر کےدوران رہائشی مکان میں پھنسے مقامی افراد کوفوج نے بحفاظت باہر نکالا تھا۔جس کے بعد ملی ٹنٹوں کو مارا گیا۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: