உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیر کے نوجوانوں میں ایسے زہرگھول رہا ہے پاکستان، ماہرین کی وارننگ- ایک نسل ختم ہوجائے گی

    کشمیر کے نوجوانوں میں ایسے زہرگھول رہا ہے پاکستان

    کشمیر کے نوجوانوں میں ایسے زہرگھول رہا ہے پاکستان

    Pakistan Drugs Kashmir Youth: جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ (Jammu and Kashmir Police Chief Dilbag Singh) کا کہنا ہے کہ پاکستان (Pakistan) نوجوانوں کو نشیلی اشیا کا عادی بنا رہا ہے۔ انہوں نے پاکستان کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا، ’وہ وہی گندہ کھیل دوہرا رہے ہیں، جو انہوں نے پنجاب میں کھیلا تھا‘۔

    • Share this:

      سری نگر: کشمیر (Kashmir) میں نشیلی اشیا، خاص طور پر ہیروئن کی اسمگلنگ شباب پر پہنچ رہی ہے اور ماہرین نے آگاہ کیا ہے کہ اس برائی سے ایک نسل کو کھودینے کا خطرہ ہے اور بیشتر نوجوان نشے کی لت کے شکار ہوسکتے ہیں۔ جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ (Jammu and Kashmir Police Chief Dilbag Singh) کا کہنا ہے کہ پاکستان (Pakistan) نوجوانوں کو نشیلی اشیا کا عادی بنا رہا ہے۔


      دہشت گردی کی شکار کشمیر وادی (Kashmir Valley) کے منظرنامہ میں سماجی کارکنان اور ڈاکٹروں کی رائے ہے کہ تین دہائیوں سے چلے آرہے دہشت گردانہ تشدد نے جہاں ایک نسل کو برباد کیا ہے، وہیں نشے کی برائی کی موجودہ نسل پر منفی اثر پڑے گا۔




      جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کا کہنا ہے کہ پاکستان نوجوانوں کو نشیلی اشیا کا عادی بنا رہا ہے۔
      جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کا کہنا ہے کہ پاکستان نوجوانوں کو نشیلی اشیا کا عادی بنا رہا ہے۔

      گندہ کھیل دوہرا رہا ہے پاکستان


      دلباغ سنگھ نے پاکستان کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا، ’وہ وہی گندہ کھیل دوہرا رہے ہیں، جو انہوں نے پنجاب میں کھیلا تھا‘۔ پہلے ہتھیاروں کی ٹریننگ دینا اور بعد میں نوجوانوں کو نشیلی اشیا سے برباد کرنا۔ ماہرین کے ان تبصروں کے بارے میں پوچھے جانے پرکہ کشمیرنے دہشت گردی میں ایک نسل گنوا دی ہے اور نشیلی اشیا کی برائی سے وہ آئندہ نسل گنوا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’یقینی طور پر ہاں میری اس بارے میں کوئی دو رائے نہیں ہیں‘۔


      یہ بھی پڑھیں۔


      جموں وکشمیر میں دہشت گردی پر بڑی کارروائی، اس سال ہلاک ہوئے 134 دہشت گرد، 135 گرفتار


      پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کی اپیل


       پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نےکہاکہ نشیلی اشیا کے خطرے سے متاثرہ اہم علاقوں شمالی کشمیر میں کرناہ، جنوبی کشمیر میں اننت ناگ اور جموں کے کچھ علاقے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس نے سری نگر اور جموں میں نشہ مکتی مرکز قائم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے اور کچھ اور نشہ مکتی مرکز شمالی کشمیر میں بنائے جا رہے ہیں۔ پولیس سربراہ نے اپنی اپیل میں کہا، ’مجھے لگتا ہے کہ یہ سماجی - مذہبی لیڈروں کے لئے نوجوان کو خطرے سے دور کرنے کے لئے فوری اثر سے اقدام کرنے کا وقت ہے۔ آج ہمارے پاس وقت ہے اور ہوسکتا ہے کہ کل ہمارے پاس وقت نہ ہو۔ اس لئے ابھی اور تیزی سے کام کرنا بہتر ہے‘۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: