உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    طالبان کی آڑ میں پاکستان نے جموں وکشمیر پر ڈالی نظر، آئی ایس آئی نے آئی ایس کے پی کو بنایا مہرہ

    طالبان کی آڑ میں پاکستان نے جموں وکشمیر پر ڈالی نظر، آئی ایس آئی نے آئی ایس کے پی کو بنایا مہرہ

    Taliban-Pakistan Relations: خفیہ ایجنسیوں کو بے حد خفیہ اِن پُٹ ملے ہیں، جس میں کہا جارہا ہے کہ پاکستان اور طالبان جموں وکشمیر میں اپنی توسیع کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ اس کے لئے پاکستان اور طالبان نے آئی ایس کے پی کو اپنا مہرہ بنایا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: افغانستان (Afghanistan) میں  طالبان کے اقتدار میں مسلسل دخل دے رہا پاکستان ایک بار پھر جموں وکشمیر (Jammu-Kashmir) میں بدامنی پھیلانے کی فراق میں ہیں۔ اس ضمن میں پاکستان طالبان کے مخالف گروپ کہے جانے والے آئی ایس کے پی یعنی اسلامک اسٹیٹ خراسان صوبہ کو مہرہ بنانے کی تیاری کر رہا ہے۔ اس بات کی جانکاری خفیہ ایجنسی کو ملی ہے۔ ان پُٹس کے مطابق، پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی نے ایک پلان تیار کیا ہے، جس کے تحت اسلامک اسٹیٹ خراسان صوبہ کی آڑ میں جموں وکشمیر میں دہشت گردانہ سرگرمیاں بڑھانے کی سازش کی گئی ہے۔ مسلسل خبریں آتی رہی ہیں کہ پاکستان، افغانستان کی نئی طالبان حکومت میں مسلسل مداخلت کر رہا ہے۔

      خفیہ ایجنسیوں کو بے حد خفیہ اِن پُٹ ملے ہیں، جس میں کہا جارہا ہے کہ پاکستان اور طالبان جموں وکشمیر میں اپنی توسیع کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔ اس کے لئے پاکستان اور طالبان نے آئی ایس کے پی کو اپنا مہرہ بنایا ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ طالبان اور پاکستان نے آئی ایس کے پی کے موجودہ سربراہ اسلم فاروقی کو افغانستان جیل سے رہا کرایا ہے۔ وہ بغرال جیل میں بند تھا۔

      دراصل، طالبان کو آئی ایس کے پی کے دشمن کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ وہیں کابل میں گرودوارہ، کابل سفارت خانہ ودیگر مقامات پر آئی ایس کے پی کی طرف سے کئے گئے حملوں کی افغانستان نے مخالفت کی تھی۔ کہا جا رہا ہے کہ آئی ایس کے پی کے موجودہ سربراہ کے تار دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ سے بھی وابستہ ہیں۔ اس سے پہلے القاعدہ نے آئی ایس کے پی کے سابق سربراہ ضیا الحق کا قتل کر دیا تھا۔ اس کے بعد اسلم فاروقی کو پاکستان کی آئی ایس آئی اور طالبان نے محفوظ پناہ گاہ دیا تھا اور اب وہ اسی کے ذریعہ جموں وکشمیر میں دستک کی کوشش کر رہا ہے۔

      کچھ ماہ ہوں گے اہم

      سیکورٹی ایجنسیاں بتاتی ہیں کہ آنے والے کچھ ماہ جموں وکشمیر کے لئے بے حد حساس ہوسکتے ہیں۔ کیونکہ جس طرح سے جموں وکشمیر میں امن وامان قائم ہوا ہے، اس سے کئی دہشت گرد تنظیمیں بوکھلائی ہوئی ہیں اور وہ چاہ کر بھی کچھ کر نہیں پا رہے ہیں، کیونکہ ہماری فوج اور ہماری فورس نے آپریشن آل آوٹ کے تحت تقریباً جموں وکشمیر میں دہشت گردی کا خاتمہ کردیا ہے۔ ایجنسیوں کا کہنا ہے کہ آئی ایس کے پی آنے والے دنوں میں ایک بڑی دہشت گرد تنظیم ابھر کر سامنے آسکتی ہے۔ اس تنظیم کو طالبان کی مکمل حمایت حاصل ہے۔

      آنند تیواری کی خصوصی رپورٹ
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: