ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کولگام :کوروناوائرس کے قہرکےبعد اب روسی سفیدوں کی وباسے عوام پریشان

روسی سفیدوں سے اُڑنے والی روئی نہ صرف ماحول کو آلودہ کر رہی ہے بلکہ الرجی کے ذریعے عام لوگ بیمار پڑ رہے ہیں۔ روسی سفیدے اور ان سے اُڑنے والی روئی وادی کشمیر کے لوگوں کے لیے کسی نئے عذاب سے کم نہیں۔

  • Share this:
کولگام :کوروناوائرس کے قہرکےبعد اب روسی سفیدوں کی وباسے عوام پریشان
کوروناوائرس اور روئی سے ہونے والی الرجی کے یکساں علامتیں ہیں اور خدشات زیادہ ہیں۔

وادی میں کوروناوائرس وباء کے چلتے مکینوں کے لیے ایک نئی مصیبت پیدا ہو گئی ہے۔ روسی سفیدوں سے اُڑنے والی روئی نہ صرف ماحول کو آلودہ کر رہی ہے بلکہ الرجی کے ذریعے عام لوگ بیمار پڑ رہے ہیں۔ روسی سفیدے اور ان سے اُڑنے والی روئی وادی کشمیر کے لوگوں کے لیے کسی نئے عذاب سے کم نہیں، ریاستی ہائی کورٹ نے اگرچہ کچھ سال قبل ہی روسی سفیدوں کو کاٹنے کے احکامات صادر کیے ہیں تاہم زمینی سطح پر اسکا اثر کم دیکھنے کو مل رہا ہے اور زیادہ سے زیادہ درخت لگاے جا رہے ہیں۔ ادھر سفیدوں سے خارج ہونے والی روئی راہ گیروں ،مقامی باشندوں کے ناک، منہء اور گھروں میں جا رہی ہے جس سے نئی بیماریاں پھوٹ پڑنے کے خدشات ظاہر ہو رہے ہیں


 کوروناوائرس اور روئی سے ہونے والی الرجی کے  یکساں علامتیں ہیں  اور خدشات زیادہ ہیں۔
کوروناوائرس اور روئی سے ہونے والی الرجی کے یکساں علامتیں ہیں اور خدشات زیادہ ہیں۔


کوروناوائرس اور روئی سے ہونے والی الرجی کے یکساں علامتیں ہیں اور خدشات زیادہ ہیں۔ لوگوں نے اس حوالے سے مداخلت کی اپیل کی ماہر ماحولیات و سماجی کارکن راو فرمان علی کا کہنا ہے کہ روسی سفیدوں پر پہلے ہی پابندی کے احکامات صادر کیے گیے تھے جبکہ سفیدوں سے خارج ہونے والی روئی کوروناوائرس وبا میں مہلک ثابت ہو سکتی ہے ، کورٹ کے احکامات عمل میں لانے کے لیے محکمہ مال اور انتظامیہ کو کاروائی کرنے کے لیے پہل کرنی چاہیے تاکہ وبا کا خاتمہ ہو۔


ماہر امراض چھاتی ڈاکٹر فہیم عالم کے مطابق کوروناوائرس اور سفیدوں سے ہونے والی الرجی کے علامات ایک ہونے سےمریضوں میں بھی تشویش پھیل گئی ہے اور بعض بیمار جو سفیدوں کی روئی سے متاثر ہوتے ہیں انہیں لگتا ہے کہ وی کویڈ مثبت ہیں جو کہ المیہ ہے اور اسے کاٹنے کی ضرورت ہے۔وادی کے لوگوں نے کہا ہے کہ وبا ءکے اس دور میں لوگوں کی پریشانیوں کو بڑھانے کے بجاے انہیں کم کرنے کی ضرورت ہے اور دوسی سفیدوں کی وبا سے لوگوں کو نجات دلانے کے لیے اقدامات اُٹھانے کی ضرورت ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 31, 2021 12:21 AM IST