ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نےکہا- کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی

جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نےکہا کہ وادی کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی ہے اور تشدد کے واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے۔ پولیس اور عوام کے درمیان رشتہ بھی مزید مضبوط ہوگیا ہے اور دونوں مل کر مکمل امن و امان کی بحالی کے لئے کام کر رہے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Jul 24, 2020 06:52 PM IST
  • Share this:
جموں وکشمیر: پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نےکہا- کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی
جموں وکشمیر: پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا- کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی۔

جموں: جموں وکشمیر کے پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ وادی کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی ہے اور تشدد کے واقعات میں نمایاں کمی آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس اور عوام کے درمیان رشتہ بھی مزید مضبوط ہوگیا ہے اور دونوں مل کر مکمل امن و امان کی بحالی کے لئے کام کررہے ہیں۔ پولیس سربراہ نے جمعہ کے روز ضلع ادھم پور میں ہاوسنگ کالونی پارک میں 'اوپن ایئر جم' کا افتتاح کرنے کے بعد نامہ نگاروں کو بتایا: 'جموں اور کشمیر دونوں خطوں کی مجموعی سیکورٹی صورتحال بہت اچھی ہے۔ پہلے کے مقابلے میں اب تشدد کے واقعات میں بھی نمایاں کمی آئی ہے۔ لاء اینڈ آڈر کی صورتحال پہلے سے بہت بہتر ہوئی ہے'۔

پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کا مزید کہنا تھا: 'عوام میں امن کی بحالی کی امید مضبوط ہوئی ہے۔ پولیس اور عوام کے درمیان رشتے میں مزید بہتری آئی ہے۔ ہم ایک دوسرے سے مل کر لاء اینڈ آڈر کو برقرار رکھنے، امن کو بحال کرنے اور کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لئے کام کررہے ہیں'۔ قبل ازیں پولیس سربراہ نے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی ہمیشہ کوشش رہتی ہے کہ وادی کشمیر میں امن و امان کی صورتحال کو خراب کیا جائے۔

انہوں نے کہا: 'پاکستان کے پیٹ میں درد ایسی رہتی ہے کہ جس کا علاج وہ یہاں امن خراب کر کے کرتا ہے۔ یہاں تشدد ہوتا ہے تو اس کو روٹی اچھے سے ہضم ہوجاتی ہے۔ یہاں قتل و غارت ہو تو اس کو نیند اچھی آتی ہے'۔ ان کا مزید کہنا تھا: 'یہاں سسٹم کے اندر کوئی خرابی پیدا ہوجاتی ہے تو اس کو چین نصیب ہوجاتا ہے۔ لیکن ہم اس کو زیادہ دیر تک چین نصیب ہونے نہیں دیتے ہیں۔ ہم بہت جلد پورے جموں خطے کو ملی ٹینسی سے پاک کریں گے۔ ہاں پاکستان ہمیں مہمان بھیجتا رہے گا اور ہم ان کی خاطر داری کرتے رہیں گے'۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 24, 2020 06:45 PM IST