உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آرین خان کی گرفتاری پربیان دینامحبوبہ مفتی کوپڑامہنگا، دہلی پولیس سے کی گئی شکایت

    Youtube Video

    پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا الزام ہے کہ بی جے پی کے ووٹ بینک کے استحکام کے لئے مسلمانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر کے بیٹے جس پر چار کسانوں کو ہلاک کرنے کا الزام ہے، کی بجائے مرکزی ایجنسیاں 23 سالہ نوجوان کے پیچھے پڑی ہیں کیونکہ اس کے نام کے ساتھ ’خان‘ جڑا ہے۔ محبوبہ مفتی نے ان باتوں کا اظہار پیر کے روز اپنے ایک ٹویٹ میں کیا۔

    • Share this:
      پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا الزام ہے کہ بی جے پی کے ووٹ بینک کے استحکام کے لئے مسلمانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر کے بیٹے جس پر چار کسانوں کو ہلاک کرنے کا الزام ہے، کی بجائے مرکزی ایجنسیاں 23 سالہ نوجوان کے پیچھے پڑی ہیں کیونکہ اس کے نام کے ساتھ ’خان‘ جڑا ہے۔ محبوبہ مفتی نے ان باتوں کا اظہار پیر کے روز اپنے ایک ٹویٹ میں کیا۔


      انہوں نے اس ٹویٹ میں مزید کہا: ’ستم ظریفی یہ ہے کہ بی جے پی کے ووٹ بینک کو مستحکم کرنے کے لئے مسلمانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے‘۔ محبو بہ مفتی کے اس بیان کے بعد ان کو تنقید کا نشانہ بنایاجارہاہے۔ آرین خان ڈرگس کیس میں محبوبہ مفتی کے خلاف مبینہ اشتعال انگیز بیان پر دہلی پولیس میں شکایت درج کرائی گئی۔ ایڈوکیٹ کے ونیت جندال، اکشتا نے شکایت درج کرتے ہوئے محبوبہ مفتی پر فرقہ وارانہ کشیدگی پھیلانے کا الزام لگایاہے۔


      وہیں دوسری جانب پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ خون خرابے کو روکنے کا واحد راستہ بات چیت ہے۔انہوں نے یہ بات پیر کو یہاں پی ڈی پی کے ایک اجتماع کے حاشئے پر نامہ نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔محبوبہ مفتی نے حالیہ ہلاکتوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا: 'اقلیتی طبقوں سے تعلق رکھنے والے افراد کی حالیہ ہلاکتوں کے بعد تقریباً 40 اساتذہ کو پکڑا گیا ہے اور 700 کے قریب لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اس پکڑ دھکڑ کے بعد بھی لوگوں کو تحفظ کا احساس نہیں مل رہا ہے'۔ان کا مزید کہنا تھا: 'ہمارے پاس دوسرا راستہ وہی ہے جو واجپائی جی نے اپنایا تھا۔ انہوں نے جموں و کشمیر کو مصیبت سے باہر نکالنے کے لئے بات چیت کا راستہ اختیار کیا تھا۔ اس سے جموں و کشمیر کے ماحول میں نمایاں تبدیلی آئی تھی اور ہلاکتوں میں کمی آ گئی تھی'۔


      محبوبہ مفتی نے کہا کہ چین کے ساتھ مذاکرات ناکام ہونے کے باوجود بھی اس کا سلسلہ جاری ہے۔انہوں نے کہا: 'ہمیں یہاں بھی بات چیت کے دروازے بند نہیں کرنے چاہیں۔ آج ہی پونچھ میں جے سی او سمیت پانچ جوان مارے گئے؟۔ان کا مزید کہنا تھا: 'یہ خون خرابہ کب تک چلے گا؟ کب تک بی جے پی خون پر سیاست کرتی رہے گی؟ واجپائی کا راستہ بالکل صحیح تھا۔ خون خرابے کو روکنے کا واحد راستہ بات چیت ہے'۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: