உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: پلوامہ میں پولیس اہلکار ریاض احمد کو گھر کے باہر دہشت گردوں نے بنایا گولیوں کا نشانہ

    پلوامہ میں پولیس اہلکار ریاض احمد کو گھر کے باہر دہشت گردوں نے بنایا گولیوں کا نشانہ

    پلوامہ میں پولیس اہلکار ریاض احمد کو گھر کے باہر دہشت گردوں نے بنایا گولیوں کا نشانہ

    جموں وکشمیر کے پلوامہ میں پولس اہلکاروں پر دہشت گردانہ حملے میں پولیس اہلکار شہید ہوگیا۔تفصیلات کے مطابق، ضلع پلوامہ کے گڈورہ علاقے میں دہشت گردوں نے آج صبح پولیس کانسٹبل کو گولیاں مارکر شہید کر دیا۔

    • Share this:
    پلوامہ: جموں وکشمیر کے پلوامہ میں پولس اہلکاروں پر دہشت گردانہ حملے میں پولیس اہلکار شہید ہوگیا۔تفصیلات کے مطابق، ضلع پلوامہ کے گڈورہ علاقے میں دہشت گردوں نے آج صبح پولیس کانسٹبل کو گولیاں مارکر شہید کر دیا۔ پولیس اہلکار ریاض احمد پر دہشت گردانہ حملہ اس وقت کیا گیا جب وہ اپنے چار بچوں کو اسکول بس میں چھوڑ کر گھر کے باہر کھڑے تھے۔ اس واقعہ سے پورا علاقہ ماتم میں ڈوب گیا ہے۔ جبکہ پولیس نے اس سلسلے میں بڑے پیمانے پر تحقیقات شروع کردی۔

    پولیس کانسٹیبل ریاض احمد ٹھوکرکو کیا پتہ تھا کہ وہ اپنے چار سالہ بچے کو اسکول چھوڑنے کے ساتھ ہی خود دنیا چھوڑنے والا ہے۔ گڈورہ پلوامہ میں پولیس کانسٹیبل پر دہشت گردوں نے نزدیک سے اس وقت گولیاں ماردیں، جب اپنے گیٹ کے گھر کے اندر داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔ گولیاں لگنے سے ریاض شدید طور پر زخمی ہوا اگرچہ اسے پہلے پلوامہ ڈسٹرکٹ اسپتال لیا گیا۔

    پولیس اہلکار ریاض احمد پر دہشت گردانہ حملہ سے پورا علاقہ ماتم میں ڈوب گیا ہے۔
    پولیس اہلکار ریاض احمد پر دہشت گردانہ حملہ سے پورا علاقہ ماتم میں ڈوب گیا ہے۔


    تاہم اس حالت نازک ہونے کے سبب اسے فوری طور پر آرمی اسپتال سری نگر منتقل کیا گیا، جہاں پر وہ زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا۔ ریاض کی لاش جوں ہی اس کے آبایی علاقہ گڈورہ پہنچائی گئی تو وہاں صف ماتم بچھ گیا۔ تمام قانونی لوازمات کو پورا کرکے لاشیں وارثین کے حوالے کردی گئیں۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    جموں وکشمیر: کشمیری پنڈت راہل بھٹ کے قاتل دہشت گردوں کو فوج نے مار گرایا
    گڈورہ پلوامہ میں شہید پولیس اہلکار کی تدفین آج بعد دوپہر ادا کی گئی، جہاں پر ہزاروں کی تعداد میں جن میں پولیس اور سول افسران بھی موجود تھے، نے نماز جنازہ میں شرکت کی۔ ریاض جموں وکشمیر پولیس میں پہلے بطور ایس پی او تعینات ہوا تھا اور پانچ سال قبل ایس پی او اس کی ترقی دے کر اسے کانسٹبل بنایا گیا تھا۔ آج کل اننت ناگ کے ہیڈ پوسٹ آفس میں سیکورٹی پر تعینات تھا اور گزشتہ شام کو گھر چھٹی پر آیا تھا۔


    دوسری جانب، پولیس نے اس سلسلے میں کیس درچ کرکے بڑے پیمانے پر حملے میں ملوث دہشت گردوں کی تلاش شروع کردی ہے۔ ریاض اپنے کنبے کا واحد کمانے والا تھا، بوڑھے والدین اور چار سال کے معصوم لڑکے کے علاوہ بیوہ کو پیچھے چھوڑ گیا ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: