உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں۔کشمیر میں CBI کی چھاپے ماری پر سیاسی بیان بازی، عام آدمی پارٹی نےBJP کی تنقید کی

    عام آدمی پارٹی کے جموں و کشمیر انچارج اور دہلی حکومت کے وزیر عمران حسین نے کہا کہ روزگار جموں و کشمیر کا بڑا مسئلہ ہے۔ جموں و کشمیر کے نوجوانوں کی جموں و کشمیر میں بہت سی آسامیاں ہیں، لیکن ان پر بھرتی نہیں ہوپاتیں۔

    عام آدمی پارٹی کے جموں و کشمیر انچارج اور دہلی حکومت کے وزیر عمران حسین نے کہا کہ روزگار جموں و کشمیر کا بڑا مسئلہ ہے۔ جموں و کشمیر کے نوجوانوں کی جموں و کشمیر میں بہت سی آسامیاں ہیں، لیکن ان پر بھرتی نہیں ہوپاتیں۔

    عام آدمی پارٹی کے جموں و کشمیر انچارج اور دہلی حکومت کے وزیر عمران حسین نے کہا کہ روزگار جموں و کشمیر کا بڑا مسئلہ ہے۔ جموں و کشمیر کے نوجوانوں کی جموں و کشمیر میں بہت سی آسامیاں ہیں، لیکن ان پر بھرتی نہیں ہوپاتیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Jammu and Kashmir
    • Share this:
    جموں و کشمیر میں آج سی بی آئی کی جانب سے سب انسپکٹر کی بھرتی کے سلسلے میں چھاپہ مارا گیا اور اس کیس سے متعلق کڑیوں کو حل کرنے کے لیے تلاشی مہم چلائی گئی۔ جموں خطہ کے ساتھ ساتھ سی بی آئی نے سری نگر خطہ میں یہ کارروائی کی۔ 1200 سب انسپکٹر کے عہدوں پر بھرتی معاملے میں بے ضابطگیوں کو دیکھتے ہوئے سی بی آئی نے یہ کارروائی کی ہے لیکن اب اس پورے معاملے پر سیاست شروع ہو گئی ہے۔ عام آدمی پارٹی کے جموں و کشمیر انچارج اور دہلی حکومت کے وزیر عمران حسین نے کہا کہ روزگار جموں و کشمیر کا بڑا مسئلہ ہے۔

    جموں و کشمیر کے نوجوانوں کی جموں و کشمیر میں بہت سی آسامیاں ہیں لیکن ان پر بھرتی نہیں ہوپاتی۔ بعض اوقات پرچے لیک ہو جاتے ہیں جس کے بعد بھرتیاں منسوخ کرنی پڑتی ہیں۔ عمران حسین نے کہا کہ جو بھی گناہ گار ہے اس کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔ جو لوگ اس معاملے میں ملوث ہیں ان کے خلاف کارروائی درست ہے لیکن جو تقرریاں نہیں ہو سکیں ان آسامیوں کو دوبارہ لایا جائے۔

    دہلی فسادات: دو سالوں سے جیل میں قید عمر خالد کے اہل خانہ کو ضمانت کی امید


    اسکول بس میں 3 سال کی بچی کا ریپ! ڈرائیور اور خاتون ہیلپر دونوں گرفتار

    عمران حسین نے کہا کہ جموں و کشمیر میں براہ راست بی جے پی کی حکومت ہے یہی وجہ ہے کہ اس معاملے میں ملوث بی جے پی لیڈروں کو بچانے کی کوشش کی گئی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ 27 مارچ 2022 کو 1200 تقرری کے لیے سب انسپکٹر کی آسامیاں آئی تھیں لیکن بڑے پیمانے پر گڑبڑی اور بے ضابطگی ہوئی جس کے بعد حتمی نتیجہ جون 2022 میں آیا اور جولائی میں یہ بھرتیاں منسوخ کر دی گئیں۔ اس پورے معاملے میں بی ایس ایف میڈیکل آفیسر، جموں و کشمیر ایس ایس بی سے لے کر کوچنگ سینٹر سمیت 30 سے ​​زیادہ مقامات پر سی بی آئی نے کارروائی کی ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: