ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر کی سیاسی پارٹیاں بہت جلد کرسکتی ہیں نئی دہلی کادورہ ، جانئے کیا ہے وجہ

Jammu and Kashmir News : جموں وکشمیر کی سیاسی جماعتیں بہت جلد کرسکتی نئی دہلی کادورہ ہیں اور ریاست کے درجہ کی بحالی اور انتخابات کرانے کے سلسلے میں  بی جے پی کی اعلیٰ قیادت کے ساتھ ملاقات کرسکتی ہیں ۔

  • Share this:
جموں وکشمیر کی سیاسی پارٹیاں بہت جلد کرسکتی ہیں نئی دہلی کادورہ ، جانئے کیا ہے وجہ
جموں وکشمیر کی سیاسی پارٹیاں بہت جلد کرسکتی ہیں نئی دہلی کادورہ ، جانئے کیا ہے وجہ

جموں : مرکزی حکومت نے جموں و کشمیر کی خصوصی آئینی پوزیشن کے خاتمے کے بیس ماہ بعد پہلی مرتبہ جموں وکشمیر کی سیاسی جماعتوں ، خاص طور پر کشمیر میں قائم جماعتوں اور گپکار اعلامیہ (پی اے جی ڈی) کے ساتھ آنے والی پارٹیوں کے ساتھ نئی ​​دہلی میں سنجیدہ بات چیت کرسکتی ہے۔ یہ جماعتیں نئی دہلی میں بی جے پی کی اعلی قیادت سے ملنے کے لئے جائیں گی ۔ ذرائع سے حوالے سے بتایا گیا کہ "مرکز کے لوگ کئی ہفتوں سے جموں و کشمیر کی علاقائی سیاسی جماعتوں کے اعلی رہنماؤں کے ساتھ رابطہ میں ہیں ، جس میں اس خطے کی سب سے پرانی سیاسی جماعت نیشنل کانفرنس (این سی) بھی شامل ہے ۔ جس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبد اللہ اور گپکار اتحاد کے سربراہ ہیں۔


اس کے علاوہ پیپلز کانفرنس کے سجاد لون اور جموں و کشمیر اپنی پارٹی کے الطاف بخاری کو بھی اس میں شامل کیا جاسکتا ہے ۔ مرکز کی طرف سے 5 اگست 2019 کو آرٹیکل 370 کو منسوخ کرنے کے اقدام کے بعد سے کشمیر کی صورتحال تبدیل ہوئی ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ اگر یہ پہل سود مند ثابت ہوئی توامکان ہے کہ جموں و کشمیر کے سیاسی لیڈران نئی دہلی کا سفر کریں گے اور بی جے پی کی اعلی قیادت سے ملاقات کریں گے۔


امکان ہے کہ یہ مذاکرات جموں و کشمیر کوریاست کا درجہ دینے اور یہاں  انتخابات منعقد کرانے کے سلسلے میں ہوں گے ۔ یہ بات قابل غور ہے کہ ڈاکٹر عبد الله نے نو جون کو سری نگر میں پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کی رہائش گاہ پر گپکار اتحاد کے لیڈران کے ساتھ ملاقات کے بعد وسیع اشارے دیئے تھے اور انتخابات میں شامل ہونے کی تیاریوں کا بھی اشارہ دیا۔


ذرائع نے بتایا کہ گپکار اتحاد سے وابستہ پانچوں جماعتیں، جن میں پی ڈی پی بھی شامل ہے ، نے نئی دہلی کی پیش کش پر تبادلہ خیال کیا ۔ یہ بھی لگ رہا ہے کہ  ڈاکٹرعبد الله حد بندی  کے عمل میں شامل ہوں گے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 13, 2021 11:41 PM IST