உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: پلوامہ میں دہشت گردوں کے خلاف پوسٹر چسپاں پائے گئے، یہاں جانئے پورا معاملہ

    جموں وکشمیر: پلوامہ ضلع میں دہشت گردوں کے خلاف پوسٹر چسپاں پائے گئے

    جموں وکشمیر: پلوامہ ضلع میں دہشت گردوں کے خلاف پوسٹر چسپاں پائے گئے

    جموں وکشمیر کے سب سے زیادہ دہشت گردی سے متاثر ضلع پلوامہ میں دہشت گردوں کے خلاف پوسٹر چسپاں پائے گئے۔ اپنی نوعیت کے ایسے پوسٹر پلوامہ میں پائے گئے، جس میں نوجوانوں کو دہشت گردوں کے عزائم سے ہوشیار رہنے کی تلقین کی گئی۔

    • Share this:
    پلوامہ: جموں وکشمیر کے سب سے زیادہ  دہشت گردی سے متاثر ضلع پلوامہ میں دہشت گردوں کے خلاف پوسٹر چسپاں پائے گئے۔ اپنی نوعیت کے ایسے پوسٹر پلوامہ میں پائے گئے، جس میں نوجوانوں کو دہشت گردوں کے عزائم سے ہوشیار رہنے کی تلقین کی گئی۔

    تفصیلات کے مطابق، پلوامہ میں آج صبح دہشت گردوں کے عزائم کے خلاف پوسٹر پائے گئے۔ قصبہ پلوامہ کی مرکزی جامع مسجد کے پاس یہ پوسٹر پائے گئے، جن میں لکھا تھا کہ پلوامہ ضلع سے تعلق رکھنے والا ارجمند گلزار نامی دہشت گرد گذشتہ تین برسوں سے پاکستان میں بیٹھ کر پلوامہ کے نوجوانوں کو دہشت گردی کی طرف دھکیل رہا ہے اور نوجوانوں کا مستقبل تاریک کرنے کی تک میں بیٹھا ہے۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    جموں وکشمیر: سری نگر میں دہشت گردوں نے پولیس اہلکارکو ماری گولی

    چسپاں پائے گئے پوسٹروں میں یہ بھی لکھا ہے کہ اسلام جہاد کے نام پر غیر مسلمانوں کو قتل کرنے کی اجازت نہیں دیتا اور مذکورہ مذہب میں یہ سراسر حرام ہے۔ گرچہ ان پوسٹروں کی کسی نے بھی ذمہ داری نہیں لی ہے۔ پوسٹروں میں یہ لکھا گیا ہے کہ قصبہ پلوامہ کے ڈلی پورہ سے تعلق رکھنے والا انجینئرنگ طالب علم اعجاز حافظ کو دہشت گردی میں دھکیلنے میں بھی ارجمند گلزار کا ہی ہاتھ ہے، جوکہ حال ہی میں سیکورٹی فورسیزکے ساتھ ہوئے انکاونٹر میں ہلاک ہوا۔ اعجاز سے  کچھ ماہ قبل پلوامہ میں غیر مقامی مزدوروں اور ڈرائیوروں پر حملہ کروایا گیا تھا۔

    اس سے قبل پلوامہ کے مختلف علاقوں میں  علحیدگی پسندوں کے خلاف مختلف مقامات پر پوسٹر پائے گئے تھے، جس میں لکھا تھا کہ علحیدگی پسند لیڈراں اپنے بچوں کو اعلی تعلیم دے رہے ہیں جبکہ عام لوگوں خاص طور پر نوجوانوں کو ملک مخالف کارروایئوں میں دھکیل رہے ہیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: