ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

سری نگر:20 ہفتوں کےبعد تاریخی جامع مسجد کے منبر و محراب گرج اٹھے، فرزندان توحید کا جم غفیرسربسجود

سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں 20ہفتے بعد مسلمانوں نے ادا کی جمعہ کی نماز

  • Share this:
سری نگر:20 ہفتوں کےبعد تاریخی جامع مسجد کے منبر و محراب گرج اٹھے، فرزندان توحید کا جم غفیرسربسجود
سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں 20ہفتے بعد مسلمانوں نے ادا کی جمعہ کی نماز

سری نگر کے پائین شہر کے نوہٹہ میں واقع وادی کی سب سے بڑی اور تاریخی عبادت گاہ جامع مسجد میں مسلسل 19 ہفتے نماز جمعہ معطل رہنے کے بعد جمعہ کے روز محراب و منبر اذان و خطبہ جمعہ اور درود و اذکار سے گرج اٹھے اور لوگوں کی بڑی تعداد نے شدید سردی اور ہلکی برف باری کے بیچ ساڑھے چار ماہ کے بعد جامع میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے فرائض انجام دیے۔قابل ذکر ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے پانچ اگست کے جموں کشمیر کو دفعہ 370 اور دفعہ 35 اے کے تحت حاصل خصوصی اختیارات کی تنسیخ اور ریاست کو دو وفاقی حصوں میں منقسم کرنے کے فیصلوں کے بعد وادی میں پیدا شدہ صورتحال کے پیش نظر نوہٹہ میں واقع تاریخی جامع مسجد کے منبر ومحراب مسلسل خاموش تھے تاہم بدھ کے روز جامع میں نمازظہربا جماعت ادا کی گئی تھی اور لوگوں نے اس وقت امید ظاہر کی تھی کہ جامع میں نماز جمعہ بھی اب ادا کی جائے گی۔


سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں 20ہفتے بعد مسلمانوں نے ادا کی جمعہ کی نماز(تصویر:یواین آئی)۔
سری نگر کی تاریخی جامع مسجد میں 20ہفتے بعد مسلمانوں نے ادا کی جمعہ کی نماز(تصویر:یواین آئی)۔


دریں اثنا ریاستی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ جامع مسجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی پر کسی قسم کی کوئی پابندی عائد نہیں ہے تاہم جامع مسجد کے انتظامیہ کا کہنا تھا کہ حکومت جب تک نہ جامع کے گرد وپیش سیکورٹی حصار کو ختم کرے گی تب تک نماز جمعہ کی بحالی ناممکن ہے۔جامع کے امام حی سید احمد سعید نقشبندی نے بھی گزشتہ دنوں کہا تھا کہ جامع کے ارد گرد سیکورٹی حصار کے خاتمے تک جامع میں نماز جمعہ کا بحال ہونا بعید از امکان ہے۔وادی کے قدیم ترین معبد جامع مسجد میں جمعہ کے روز شدید سردی اور ہلکی برف باری کے بیچ ساڑھے چار ماہ کے بعد نماز جمعہ ادا کی گئی۔ عینی شاہدین نے کہا کہ جمعہ کے روز لوگوں کی بڑی تعداد اذان ہوتے ہی جامع میں داخل ہوئے اور خطبہ جمعہ سے فیض یاب ہونے کے بعد نماز جمعہ کی ادائیگی کے فرائض انجام دیے۔ نماز جمعہ کی امامت کے فرائض امام حی سید احمد سعید نقشبندی نے انجام دیے۔


جامع مسجد میں مسلسل 19 ہفتے نماز جمعہ معطل رہنے کے بعد جمعہ کے روز محراب و منبر اذان و خطبہ جمعہ اور درود و اذکار سے گرج اٹھے
جامع مسجد میں مسلسل 19 ہفتے نماز جمعہ معطل رہنے کے بعد جمعہ کے روز محراب و منبر اذان و خطبہ جمعہ اور درود و اذکار سے گرج اٹھے


انہوں نے کہ جامع میں 19 ہفتوں کے بعد جمعہ کے روز درود اذکار اور خطبہ جمعہ کی گونج سے ماحول پر پُرسکون کیفیت طاری ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ نے جہاں ایک طرف جامع کی طرف جانے والی سڑکوں پر سیکورٹی فورسز اہلکاروں کو بھاری تعداد میں تعینات کیا تھا جو نماز جمعہ کے دوران گاڑیوں کو جامع کی طرف جانے کی اجازت نہیں دے رہے تھے تاہم نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد ہی گاڑیوں کو جامع کی طرف جانے کی اجازت دی گئی۔عینی شاہدین نے بتایا کہ جامع کے اندر ہی نمازیوں نے آزادی کے حق میں نعرے بلند کئے۔ انہوں نے کہا کہ جامع مارکیٹ اور ملحقہ بازار نماز جمعہ شروع ہونے سے قبل ہی بند ہوگئے۔اس دوران نمازیوں کے ایک گروپ نے یو این آئی اردو کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ ساڑھے چار ماہ کے بعد جامع مسجد میں نماز جمعہ ادا کرنے سے دلی سکون اور روحانی تسکین محسوس ہوئی۔انہوں نے کہا: ‘ہم بہت ہی خوش ہیں کہ ہم نے آج جامع میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے فرائض انجام دیے، دل سکون اور روح کو تسکین محسوس ہوئی، جامع میں نماز جمعہ ادا کرنے کی سعادت حاصل کرنا ہمارے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے’۔

نماز جمعہ کی امامت کے فرائض امام حی سید احمد سعید نقشبندی نے انجام دیے
نماز جمعہ کی امامت کے فرائض امام حی سید احمد سعید نقشبندی نے انجام دیے


 

ادھر میر واعظ عمر فاروق ایک بار پھر نگین میں واقع اپنی رہائش گاہ پر مسلسل نظر بند ہونے کی وجہ سے جامع میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد خصوصی خطبہ نہیں دے سکے۔یہاں پر یہ بات قابل ذکر ہے کہ سال 2016 میں حزب المجادین سے وابستہ معروف جنگجو کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد بھی جامع مسجد میں 19 ہفتوں کے بعد نماز جمعہ کی ادائیگی بحال ہوئی تھی۔
First published: Dec 20, 2019 07:01 PM IST
  • India
  • World

India

  • Active Cases

    6,039

     
  • Total Confirmed

    6,761

     
  • Cured/Discharged

    515

     
  • Total DEATHS

    206

     
Data Source: Ministry of Health and Family Welfare, India
Hospitals & Testing centres

World

  • Active Cases

    1,205,178

     
  • Total Confirmed

    1,680,527

    +76,875
  • Cured/Discharged

    373,587

     
  • Total DEATHS

    101,762

    +6,070
Data Source: Johns Hopkins University, U.S. (www.jhu.edu)
Hospitals & Testing centres