ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : رامبن ضلع میں بر وقت علاج نہ ملنے سے حاملہ خاتون کی بچہ سمیت موت ، لوگوں میں غم وغصہ

خاتون کو چار روز پہلے بڑی مشکل سے ضلع اسپتال رام بن پہنچایا گیا تھا اور وہاں مبینہ طور ضروری توجہ نہ ملنے کی وجہ سے پہلے ماں کے پیٹ میں بچے کی موت ہوگئی اور پھر بعد میں جموں منتقل کئے جانے کے دوران ماں بھی لقمہ اجل بن گئی ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : رامبن ضلع میں بر وقت علاج نہ ملنے سے حاملہ خاتون کی بچہ سمیت موت ، لوگوں میں غم وغصہ
جانچ افسر کے آر بیجو نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد جے موہن تھمپی کے بیٹے اشون کو گرفتاری کے بعد اشون نے اپنا جرم قبول کر لیا ہے۔

ضلع رام بن کی تحصیل راجگڑھ کی ایک حاملہ خاتون کے جموں منتقل کئے جانے کے دوران بچہ سمیت موت کی آغوش میں چلے جانے پر مقامی لوگوں اور مرنے والی خاتون کے رشتہ داروں نے محکمہ صحت پر لاپروائی کا الزام عائد کیا ہے اور محکمہ صحت کے لاپروا اور بدنظمی کا شکار طریقہ کار کو اس موت کیلئے ذمہ دار قرار دیا ہے ۔ راجگڑھ کے سرپنچ محمد شفیع زرگر نے نیوز 18 کو بتایا کہ راجگڑھ پی ایچ ڈی کی ایمبولینس گاڑی گزشتہ طویل عرصہ سے راجگڑھ سے ہٹا کر ایمرجنسی اسپتال بٹوت کے ساتھ منسلک کردی گئی ہے ، جس کی وجہ سے لاک ڈاؤن کے دوران اور اس سے پہلے بھی ایمرجنسی نوعیت کے کیس نمٹانے کیلئے راجگڑھ کی بھاری آبادی کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور لاک ڈاؤن کے دوران چار حاملہ خواتین کو لوگوں کی نجی گاڑیوں کی مدد سے رام بن اسپتال پہنچایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ راجگڑھ اسپتال کی ایمبولینس گاڑی کو فوری طور پر علاقہ میں واپس بھیجنے کیلئے ابتک بلاک میڈیکل افسر بٹوت اور چیف میڈیکل افسر رام بن اور ضلع حکام سے کئی بار درخواست کی گئی ہے ، لیکن اب تک اس کا کوئی نتیجہ نہیں نکلا ہے۔


علاقہ کے سرپنچ غلام نبی بٹ  چکہ ، برٹنڈ  تحصیل راجگڑھ نے کہا کہ لاک ڈاؤن کی دوران اسپتال منتقل کی گئیں چار خواتین میں سے 37 سالہ حاملہ خاتون سلیمہ بیگم زوجہ محمد قاسم شیخ ساکنہ ستھرا ، پنچایت چکہ اے بھرٹنڈ تحصیل راجگڑھ دیگر تین حاملہ خواتین کی طرح خوش قسمت نہیں تھیں ۔ ستھرا راجگڑھ سے ایک گاؤں والے کی نجی گاڑی میں اس خاتون کو چار روز پہلے ضلع اسپتال رام بن پہنچایا گیا تھا اور اس کے پیٹ میں بچہ کو ڈاکٹروں نے مردہ قرار دیا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ چار بچوں کی ماں حاملہ سلیمہ بیگم نے جمعرات کو رام بن ضلع اسپتال سے جموں منتقل کئے جانے کے دوران راستے میں ہی دم توڑ دیا ۔ مہلوک خاتون کے گھر والے ضلع اسپتال رام بن میں ڈاکٹروں کی مبینہ عدم توجہی اور لاپروائی کو زچہ اور بچہ کی موت کا ذمہ دار ٹھہراتے ہیں ۔


سرپنچ غلام نبی بٹ نے مرنے والی خاتون کے شوہر اور دیگر رشتہ داروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ خاتون کو چار روز پہلے بڑی مشکل سے ضلع اسپتال رام بن پہنچایا گیا تھا اور وہاں مبینہ طور ضروری توجہ نہ ملنے کی وجہ سے پہلے ماں کے پیٹ میں بچے کی موت ہوگئی اور پھر بعد میں جموں منتقل کئے جانے کے دوران ماں بھی لقمہ اجل بن گئی ۔

First published: Apr 24, 2020 08:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading