உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pulwama Encounter: جموں وکشمیر کے پلوامہ میں انکاؤنٹر،2دہشت گردہلاک، ایک جوان زخمی

    Youtube Video

    Two terrorist were killed in an encounter:کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں مارے گئے دہشت گردوں کی شناخت اعجاز حافظ اور شاہد ایوب کے طور پر کی گئی ہے۔ ان کے پاس سے دو اے کے 47 رائفلیں بھی برآمد ہوئی ہیں۔

    • Share this:
      ہندوستانی سیکورٹی فورسز نے بدھ کے روز ضلع پلوامہ (Pulwama )کے متری گام میں رات بھر جاری رہنے والے انکاؤنٹر میں البدر (دہشت گرد تنظیم) کے 2 دہشت گردوں کو ہلاک(Two terrorist were killed in an encounter) کردیا۔ جموں و کشمیر پولیس نے اس کی تصدیق کی ہے۔ کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں مارے گئے دہشت گردوں کی شناخت اعجاز حافظ اور شاہد ایوب کے طور پر کی گئی ہے۔ ان کے پاس سے دو اے کے 47 رائفلیں بھی برآمد ہوئی ہیں۔

      وجے کمار نے کہا کہ یہ دونوں دہشت گرد اس سال مارچ سے اپریل کے درمیان پلوامہ میں مہاجر مزدوروں پر کئی حملوں میں ملوث تھے۔ متریگام انکاؤنٹر کے سلسلے میں پلوامہ ضلع میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات کو معطل کر دیا گیا ہے۔ جموں و کشمیر پولیس، سینٹرل ریزرو پولیس فورس اور ہندوستانی فوج کے جوانوں نے ایک بڑے باغ میں دہشت گردوں کے چھپے ہونے کی اطلاع ملنے کے بعد متریگام گاؤں کا محاصرہ کر لیا۔ اس کے بعد بدھ کی دوپہر سے سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم شروع ہوا جو رات گئے تک جاری رہا۔

      سیکیورٹی فورسز نے باغ کا محاصرہ کیا تو دہشت گردوں نے فائرنگ شروع کردی۔ دونوں طرف سے فائرنگ میں ایک فوجی زخمی ہوا۔ بعد ازاں سیکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں دونوں دہشت گرد مارے گئے۔ پولیس نے کہا کہ انکاؤنٹر کی جگہ پر مقامی شہریوں کو نکالنے کے لیے آپریشن کو کچھ دیر کے لیے روکنا پڑا۔ اعجاز حافظ انجینئرنگ کا طالب علم تھا۔ وہ جنوری 2022 میں گھر سے اچانک لاپتہ ہو گیا۔ بعد میں انکشاف ہوا کہ اس نے البدر تنظیم میں شمولیت اختیار کر لی تھی

      ۔

      جبکہ شاہد ایوب نے گزشتہ ماہ اپنا گھر چھوڑ کر ہتھیار اٹھا لیے تھے۔ ان دونوں نے مارچ اور اپریل کے دوران جموں و کشمیر میں مہاجر مزدوروں پر کئی حملے کیے تھے۔ تب سے سیکورٹی ایجنسیاں ان کی تلاش میں تھیں۔ بالآخر سیکورٹی فورسز نے ان دونوں دہشت گردوں کو ہلاک کرنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ ہم آپ کو بتادیں کہ کہ اپریل کے مہینے میں جموں و کشمیر میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان ایک درجن سے زیادہ انکاؤنٹر ہو چکے ہیں۔ لشکر اور جیش کے اعلیٰ کمانڈروں سمیت 20 سے زیادہ دہشت گرد مارے گئے ہیں۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: