ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کشمیر: ترال کے لیکچرر سہیل جیلانی ڈینگو پر اپنی تحقیق کے لئے ایوارڈ سے سرفراز

قابل ذکر ہے کہ ترال میں کم عمر طلباء میں کتابیں تحریر کرنے کا سلسلہ تیزی کے ساتھ پھیل رہا ہے جبکہ آج تک ایک درجن کے قریب طلباء نے کتابیں تحریر کی ہیں جو منظر عام پر آچکی ہیں۔

  • Share this:
کشمیر: ترال کے لیکچرر سہیل جیلانی ڈینگو پر اپنی تحقیق کے لئے ایوارڈ سے سرفراز
کشمیر: ترال کے لیکچرر سہیل جیلانی ڈینگو پر اپنی تحقیق کے لئے ایوارڈ سے سرفراز

جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال روز اول سے ہی علم و ادب کا گہوارہ رہ چکا ہے۔ جہاں آج تک علاقے نے متعدد علمی اور ادبی شخصیات کو پیدا کیا ہے ۔گزشتہ کئی سال کے دوران یہاں سے سینکڑوں کی تعداد میں مسلم ،پنڈت اور سکھ فرقے وغیرہ کے لوگوں نے اعلیٰ تعلیم حاصل کر کے مختلف میدانوں میں شاندار کامیابی کا مظاہرہ کر کے علاقے کا نام ملکی سطح پر روشن کیا ہے۔


حال ہی میں علاقے سے تعلق رکھنے والے شعبہ زالوجی کے لیکچرر ڈاکٹر سہیل جیلانی ساکن ترال بالا کو ”ڈینگو“ پرکامیاب ریسرچ کر نے پر اعزاز سے نوازا گیا ہے جس پر مقامی لوگوں نے خوشی کا اظہار کر کے انہیں مبارک باد پیش کی ہے ۔ ڈاکٹر سہیل نے اپنی ریسرچ ڈینگو پر کی تھی جس کو” انسٹی چیوٹ آف اسکالرس “بنگلور نے سراہتے ہوئے انہیں ”ریسرچ ایکسلنس ایوارڑResearch Excellence Award 2020))سے نوازا ہے ۔ڈاکٹر سہیل جیلانی نے نیوز ایٹین کو بتایا کہ انہوں نے ڈینگو پر ریسرچ کی تھی جس پر مذکورہ ادارے  ’انسٹچیوٹ آف اسکالرس ‘ نے انہیں ایوارڑ سے نوازا ہے ۔انہوں نے اس حوالے سے ادارے کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میں خوش ہوں کہ میری ریسرچ کو قومی ادارے نے پسند کیا ہے۔


سہیل کا کہنا تھا کہ موجودہ کورونا وائرس لاک ڈاون کے نتیجے میں وہ اس تقریب میں شرکت نہیں کر سکے ہیں ۔خیال رہے ڈاکٹر سہیل جیلانی گورنمنٹ ڈگری کالج ترال میں شعبہ زالوجی کے پروفیسر ہیں ۔ پروفیسر کے اعزاز کے حوالے سے خبر آنے کے بعد ہی علاقے کے لوگوں کے ساتھ ڈگری کالج ترال کے طلبا اور عملے نے انہیں مبارک باد پیش کی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ ترال میں کم عمر طلباء میں کتابیں تحریر کرنے کا سلسلہ تیزی کے ساتھ پھیل رہا ہے جبکہ آج تک ایک درجن کے قریب طلباء نے کتابیں تحریر کی ہیں جو منظر عام پر آچکی ہیں۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 03, 2020 10:30 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading