ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جنوبی کشمیر: سیکورٹی فورسیز کا جیش کا ماڈیول بے نقاب کرنے کا دعویٰ، کئی ملیٹینٹ اور اوجی ڈبلیوز کوگرفتار کرنےکا بھی دعویٰ

جنوبی کشمیر میں سیکورٹی فورسیز نے جیش ملیٹینٹ تنظیم کا ایک ماڈیول بے نقاب کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ پولیس کے مطابق ماڈیول کے تحت سرگرم ملیٹینٹ اننت ناگ اور بجبہاڑہ قصبہ جات میں ایک بڑا حملہ انجام دینے کی کوشش میں تھے اور ماڈیول کے بے نقاب ہونے سے یہ بڑا خطرہ ٹل گیا۔

  • Share this:
جنوبی کشمیر: سیکورٹی فورسیز کا جیش کا ماڈیول بے نقاب کرنے کا دعویٰ، کئی ملیٹینٹ اور اوجی ڈبلیوز کوگرفتار کرنےکا بھی دعویٰ
جنوبی کشمیر: سیکورٹی فورسیز کا جیش کا ماڈیول بے نقاب کرنے کا دعویٰ۔ فائل فوٹو

جموں کشمیر: جنوبی کشمیر میں سیکورٹی فورسیز نے جیش ملیٹینٹ تنظیم کا ایک ماڈیول بے نقاب کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ پولیس کے مطابق ماڈیول کے تحت سرگرم ملیٹینٹ اننت ناگ اور بجبہاڑہ قصبہ جات میں ایک بڑا حملہ انجام دینے کی کوشش میں تھے اور ماڈیول کے بے نقاب ہونے سے یہ بڑا خطرہ ٹل گیا۔ اس سلسلے میں جموں کشمیر پولیس نے ایک پریس ریلیز بھی جاری کر دیا ہے، جس کے مطابق ایک مصدقہ اطلاع ملنے پر جموں کشمیر پولیس اور فوج کی 3 راشٹریہ رایفلز نے دونی پورہ بجبہاڑہ میں ایک مشترکہ ناکہ قائم کیا۔


اس دوران وہاں سے ایک آلٹو گاڑی کو رکنے کا اشارہ کیا گیا، لیکن اس میں سوار دو افراد نے راہ فرار اختیار کرنے کی کوشش کی۔ تاہم ایک منصوبے کے تحت فورسز نے دونوں افراد کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کی، جس کے بعد دونوں افراد نے کئی انکشافات کئے اور یہ بات سامنے آئی کہ دونوں کا تعلق جیش محمد تنظیم کی اکائی لشکر مصطفیٰ سے ہے اور دونوں حال ہی میں ملیٹینٹ صفحوں میں شامل ہوئے تھے۔ پولیس نے دونوں کی شناخت اننت ناگ کے عمران احمد حجام اور عرفان احمد آہنگر کے طور پر ہوئی ہے اور ان کے قبضے سے دو پستول، گولیوں کے راؤنڈاور 3 میگزین برآمد کر کے ضبط کر لئے گئے۔ دونوں ملیٹینٹوں نے اس بات کا بھی انکشاف کیا ہے کہ لشکر مصطفیٰ نامی تنظیم کو سرگرم کرکے اس بات کو عیاں کرنا مقصد تھا کہ جموں کشمیر میں مقامی سطح کی ملیٹینسی جاری ہے اور جس کے پیچھے پاکستان کا کوئی ہاتھ نہیں ہے۔


پولیس کے مطابق ماڈیول کے تحت سرگرم ملیٹینٹ اننت ناگ اور بجبہاڑہ قصبہ جات میں ایک بڑا حملہ انجام دینے کی کوشش میں تھے اور ماڈیول کے بے نقاب ہونے سے یہ بڑا خطرہ ٹل گیا۔ فائل فوٹو


پولیس کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ لشکر مصطفیٰ کے ان ملیٹینٹوں نے اننت ناگ اور بجبہاڑہ میں سیکورٹی فورسز کو نشانہ بنانے اور آئی ای ڈی نصب کرنے کے لئے ایک سروے بھی کیا ہے۔ جبکہ ان کی نشاندہی کے بعد مزید چار اور جی ڈبلیوز کو جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں سے گرفتار کرلیا گیا، جن کے قبضوں سے مزید ہتھیار اور گولی بارود بھی برآمد کرلیا گیا، جس میں ایک کلوگرام دھماکہ خیز مواد بھی شامل ہے۔ اس سلسلے میں پولیس نے باضابطہ طور پر ایک معاملہ درج کرکے مزید تحقیقات شروع کر دی ہے۔ سیکورٹی فورسز نے اس کارروائی کو ایک بڑی کامیابی قرار دیا ہے، جس کے تحت ایک بڑے حملے کے منصوبے کو ناکام بنا دیا گیا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jan 31, 2021 11:45 PM IST