உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : نظربندی کے بعد چھوڑی تھی سیاست، اب ایل جی منوج سنہا کے صلاح کار بن سکتے ہیں شاہ فیصل

    جموں و کشمیر : نظربندی کے بعد چھوڑی تھی سیاست، اب ایل جی منوج سنہا کے صلاح کار بن سکتے ہیں شاہ فیصل

    جموں و کشمیر : نظربندی کے بعد چھوڑی تھی سیاست، اب ایل جی منوج سنہا کے صلاح کار بن سکتے ہیں شاہ فیصل

    Jammu Kashmir News: گزشتہ سال شاہ فیصل نے پی ایس اے کے تحت نظربندی کے بعد سیاست چھوڑنے کا اعلان کردیا تھا ۔ شاہ فیصل نے تقریبا دس سال پہلے اس وقت سرخیاں حاصل کی تھیں ، جب پہلی مرتبہ کسی کشمیری نے یو پی ایس سی کے امتحان میں ٹاپ کیا تھا ۔

    • Share this:
      سری نگر : سابق آئی اے ایس افسر شاہ فیصل کو جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کے صلاح کار کے طور پر مقرر کیا جاسکتا ہے ، ذرائع نے سی این این نیوز 18 کو بتایا کہ شاہ فیصل ایل جی اور انتظامیہ کو مقامی معاملات میں مشورہ دیں گے ۔ شاہ فیصل کی تقرری کی خبر ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب وادی میں دہشت گرد عام شہریوں کو اپنا نشانہ بنا رہے ہیں ۔ کشمیر میں پانچ دنوں میں دہشت گردوں نے اقلیتی کمیونٹی کے چار لوگوں سمیت سات شہریوں کا قتل کردیا ہے ۔

      بتادیں کہ گزشتہ سال شاہ فیصل نے پی ایس اے کے تحت نظربندی کے بعد سیاست چھوڑنے کا اعلان کردیا تھا ۔ شاہ فیصل نے تقریبا دس سال پہلے اس وقت سرخیاں حاصل کی تھیں ، جب پہلی مرتبہ کسی کشمیری نے یو پی ایس سی کے امتحان میں ٹاپ کیا تھا ۔ اس کے بعد شاہ فیصل کشمیر میں ہی بیوروکریٹ کے طور پر سرگرم رہے اور 2019 میں تب سنسنی پھیلادی جب آئی اے ایس سے استعفی دے کر انہوں نے سیاست میں اترنے کا فیصلہ کیا ۔

      شاہ فیصل نے مارچ 2019 میں اپنی نئی علاقائی سیاسی پارٹی بنائی تھی اور انہیں سیاست میں امکانات نظر آرہے تھے ، لیکن مرکزی حکومت نے کچھ مہینوں کے بعد ہی جموں و کشمیر کا نقشہ ہی بدل دیا ۔ آرٹیکل 370 کو ختم کرکے جموں و کشمیر کے خصوصی درجہ کو ختم کردیا اور ریاست کو مرکز کے زیر انتظام دو خطوں میں تقسیم کردیا ۔

      یہی نہیں کثیر تعداد میں سیکورٹی فورسیز کی تعیناتی کے ساتھ ہی کشمیر کو فوجی چھاونی میں بدل کر آئے دن کرفیو لگا کر مرکز نے ریاست کے کئی لیڈروں کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت نظر بند اور گرفتار بھی کیا ، جن میں فیصل بھی شامل تھے ۔ کل ملا کر کشمیر کی سیاست کے حساب کتاب پوری طرح بدل گئے اور اس کے بعد شاہ فیصل نے بھی سیاست چھوڑنے کا اعلان کردیا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: