ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر : خاتون کی موت کے بعد اس کے اہل خانہ کو ملی ایسی چونکا دینے والی خبر، سبھی کے اڑگئے ہوش

جنوبی کشمیر کے گلشن آباد اننت ناگ میں راجہ بیگم نامی خاتون کے اہل خانہ اس وقت حیرت زدہ ہو گئے ، جب انہیں موبائل پر راجہ بیگم کے انتقال کے بعد اس کے کورونا سے متاثر ہونے کی خبر ملی ۔

  • Share this:
جموں وکشمیر : خاتون کی موت کے بعد اس کے اہل خانہ کو ملی ایسی چونکا دینے والی خبر، سبھی کے اڑگئے ہوش
جموں وکشمیر : خاتون کی موت کے بعد اس کے اہل خانہ کو ایسی ملی چونکا دینے والی خبر

اننت ناگ : کورونا کی وبا سے جہاں ہر سو لوگ پریشانیوں میں مبتلا ہیں ، وہیں کئی مرتبہ لوگ اب تذبذب کے بھی شکار ہو رہے ہیں ۔ جنوبی کشمیر کے گلشن آباد اننت ناگ میں راجہ بیگم نامی خاتون کے اہل خانہ اس وقت حیرت زدہ ہو گئے ، جب انہیں موبائل پر راجہ بیگم کے انتقال کے بعد اس کے کورونا سے متاثر ہونے کی خبر ملی ۔ حیرانگی کی بات یہ ہے کہ راجہ بیگم کے اہل خانہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ راجہ بیگم کا کورونا کیلئے کوئی ٹیسٹ ہوا ہی نہیں ، لیکن اس کے باوجود اس کو کورونا مثبت دکھایا گیا ہے ۔ راجہ بیگم کے افراد خانہ کے مطابق انہیں کچھ دن قبل گورنمنٹ میڈیکل کالج اننت ناگ میں طبی شکایات کے بعد داخل کرایا گیا ، جس کے بعد ڈاکٹروں نے راجہ بیگم کی طبی جانچ کے ساتھ ساتھ ان کا کورونا ٹیسٹ کرنے کی ہدایت دی ۔


راجہ بیگم کے فرزند نثار احمد کا کہنا ہے کہ کووڈ ٹیسٹ کیلئے انہوں نے ایک فارم بھی بھرا ، لیکن اسی اثنا میں 11 جولائی کو ان کی والدہ کی موت واقع ہوگئی ، جس کے بعد کسی ٹیسٹ کے بغیر ان کی میت ان کے سپرد کی گئی اور راجہ بیگم کی آخری رسومات معمول کے مطابق انجام دی گئیں ۔ نثار کے مطابق راجہ بیگم کی وفات کے 3 دن بعد ان کو میڈیکل کالج سے کسی نے فون پر ان کی والدہ کے کورونا متاثر ہونے کی خبر دی ۔ جس سے نہ صرف ان کے گھر میں بلکہ دیگر رشتہ داروں اور ہمسایوں میں بھی تشویش کی لہر دوڈ گئی ۔ نثار کے مطابق یہ خبر نہایت ہی چونکا دینے والی ہے کہ ٹیسٹ کے بغیر ان کی والدہ کو کس طرح سے کورونا متاثرہ قرار دیا گیا ۔


 نثار کے مطابق یہ خبر نہایت ہی چونکا دینے والی ہے کہ ٹیسٹ کے بغیر ان کی والدہ کو کس طرح سے کورونا متاثرہ قرار دیا گیا ۔
نثار کے مطابق یہ خبر نہایت ہی چونکا دینے والی ہے کہ ٹیسٹ کے بغیر ان کی والدہ کو کس طرح سے کورونا متاثرہ قرار دیا گیا ۔


نثار نے ڈاکٹروں و میڈیکل کالج کے دیگر عملے پر لاپروائی کا الزام لگاتے ہوئے مزید کہا کہ اگر ان کی والدہ کا کورونا کیلئے نمونے حاصل بھی کئے گئے تھے ، تو اسپتال انتظامیہ نے کس طرح سے کسی پرٹوکول کے بغیر ان کی لاش افراد خانہ کے حوالے کردی ۔ جبکہ انہیں اسپتال انتظامیہ کی جانب سے آخری رسومات کی ادائیگی کیلئے بھی ڈبلیو ایچ او کے مرتب شدہ قواعد و ضوابط  پر عمل کرنے کی بھی ہدایت نہیں دی گئی ، جس کی وجہ سے اب نہ صرف افراد خانہ بلکہ رشتہ دار و دیگر لوگ بھی شدید پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں ۔

نیوز 18 نے جب اس حوالے سے میڈیکل کالج اننت ناگ کی انتظامیہ سے رجوع کیا ، تو انتظامیہ نے ان الزامات کو سرے سے مسترد کردیا ۔ تاہم مائیکرو بایولوجی کی سربراہ ڈاکٹر روبینہ حقائق کا کہنا ہے کہ ان الزامات کی بنیاد پر حقیقت کا پتہ لگایا جائے گا ۔ تاہم انہوں نے اس بات کو سرے سے خارج کردیا کہ مریضہ کو کسی ٹیسٹ کے بغیر کورونا سے متاثر دکھایا جائے گا ۔ ڈاکٹر روبینہ نے مزید کہا کہ کسی بھی مریض کے نمونے حاصل کرنے کے بعد ان نمونوں کو کورونا کی جانچ کیلئے سرینگر روانہ کیا جاتا ہے ، جہاں پر نمونوں کی باضابطہ جانچ کی بنیاد پر رپورٹ تیار کی جاتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے میں بنا ٹیسٹ کے کسی بھی مریض کو مثبت یا منفی قرار دینا یقینی طور پر خارج از امکان ہے ۔

ادھر لوگوں کا کہنا ہے کہ اگر مریضہ کے نمونے حاصل کئے گئے تھے ، تو اس کی وفات کے بعد کس طرح سے معمول کے مطابق اس کی لاش کو رشتہ داروں کے سپرد کدیا گیا ، جس کے بعد مرحومہ کے جنازے میں معمول کے مطابق لوگوں کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی ۔ لوگوں نے انتظامیہ سے معاملہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ڈی سی اننت ناگ سے فوری مداخلت کی اپیل کی ہے اور واقعہ کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 14, 2020 09:10 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading