ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں سبھی گھروں میں نصب کئے جائیں گے اسمارٹ میٹرس ، جانئے صارفین کو کیا ہوگا فائدہ

Jammu and Kashmir News : اسمارٹ میٹرس پیمائش ، بلنگ اور وصولی میں شفافیت لائیں گے ، جس سے بجلی کے نقصانات کم ہوجائیں گے اور صارفین کو معیاری اور قابل اعتماد بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے گی ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں سبھی گھروں میں نصب کئے جائیں گے اسمارٹ میٹرس ، جانئے صارفین کو کیا ہوگا فائدہ
جموں و کشمیر میں سبھی گھروں میں نصب کئے جائیں گے اسمارٹ میٹرس ، جانئے صارفین کو کیا ہوگا فائدہ

سری نگر : یونین ہوم سکریٹری اجے کمار بھلا نے مرکزی خطوں میں اسمارٹ میٹرنگ رول آؤٹ اور پاور سیکٹر اصلاحات کی پیشرفت کا جائزہ لینے کے لئے ایک اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کی ۔  منسٹری سیکٹری آف پاور گورنمنٹ آف انڈیا الوک کمار اور تمام مرکزی خطوں کے چیف سکریٹریوں نے اس میٹنگ میں حصہ لیا۔  ڈاکٹر ارون کمار مہتا چیف سکریٹری جموں و کشمیر نے جے اینڈ کے کی نمائندگی کی ۔ مرکزی سکریٹری داخلہ نے مشاہدہ کیا کہ ’’ Revamped Distribution Sector Scheme ‘‘ جس کا اعلان مرکزی وزیر خزانہ نے بجٹ تقریر (مالی سال 2021-22) کے دوران کیا تھا ، اس میں بنیادی طور پر اس شعبے میں اصلاحات پر توجہ دی گئی ہے ۔


انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس اسکیم کا مقصد صارفین کو بجلی کی فراہمی کے معیار کو بہتر بنانا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسمارٹ میٹرنگ پر زور دینا اسکیم کی ایک امتیازی خصوصیات ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسمارٹ میٹرنگ کو مرکزی خطوں میں مشن موڈ میں شروع کیا جانا ہے ۔ جو آخر کار ملک کی دیگر ریاستوں کے لئے نمونہ بن جائے گا۔


شروع میں وزارت بجلی نے یوٹیز میں اسمارٹ میٹرنگ کی پیشرفت کے بارے میں ایک پریزنٹیشن دیا ۔  یہ بتایا گیا کہ ملک میں وہ مقامات جہاں اسمارٹ میٹرز لگائے گئے ہیں ، ان میں بلوں کی کارکردگی اور وصولی کی کارکردگی میں بہتری کی وجہ سے نقصانات میں خاطر خواہ کمی واقع ہوئی ہے۔  یہ تجویز کیا گیا تھا کہ جموں و کشمیر میں اسمارٹ میٹرنگ پروجیکٹ کو مرکزی تعاون سے چلنے والی اسکیموں کے تحت مالی اعانت فراہم کی جائے گی ۔ عمل درآمد ایجنسی آر ای سی پی ڈی سی ایل کے ذریعہ ہائبرڈ کیپیکس اور اوپیکس ماڈل کے تحت ڈی ڈی یو جی جے وائی ، آئی پی ڈی ایس ، اور پی ایم ڈی پی اور باقی فنڈز کا بندوبست کیا جائے گا۔


چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے جموں و کشمیر میں اسمارٹ میٹرنگ کے رول آؤٹ کی تجویز پر مختصر بات کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت جموں و کشمیر مشن کے انداز میں اسمارٹ میٹرنگ کا کام کرے گی۔  انہوں نے کہا کہ یوٹی حکومت مذکورہ کام کو مقررہ مدت میں مکمل کرنے کے لئے پرعزم ہے۔  انہوں نے مزید بتایا کہ یوٹی کی توانائی کی کھپت کا تقریبا  2/3 حصہ شہری علاقوں اور صنعتی شہروں میں تھا اور اسی مشن میں اس کو ترجیح دی جائے گی۔

اسمارٹ میٹرس پیمائش ، بلنگ اور وصولی میں شفافیت لائیں گے ، جس سے بجلی کے نقصانات کم ہوجائیں گے اور صارفین کو معیاری اور قابل اعتماد بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے گی ۔  میٹر کو مواصلاتی چینلز کے ذریعہ سری نگر کے ڈیٹا سنٹر اور جموں کے ڈیٹا ریکوری سنٹر میں دور سے پڑھا جائے گا ، جس سے کارپوریشنوں کو بجلی کی فراہمی کی حیثیت معلوم کرنے میں بھی مدد ملے گی اور بجلی کی مداخلت کی صورت میں فوری کارروائی کی جائے گی۔

صارفین اپنے کھپت کے انداز اور بل کو حقیقی وقت کی بنیاد پر جان سکیں گے ، جس کے ذریعے وہ بوجھ کا انتظام کرنے اور اپنے ماہانہ بل کو کم کرنے کی پوزیشن میں ہوں گے۔  چونکہ میٹر ریڈنگ اور بلنگ کا مکمل چکر انسانی انٹرفیس کے بغیر خود کار ہے ، لہذا بلنگ کے تنازعات ختم ہوجائیں گے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 09, 2021 10:00 PM IST