ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

کشمیر میں پانچ ماہ کی پابندی کے بعد شروع ہوگی ایس ایم ایس خدمات، ان مقامات پر چلےگا انٹرنیٹ

نئے سال کی شروعات کے ساتھ ہی کشمیرکے سبھی سرکاری اسپتالوں میں انٹرنیٹ خدمات کی شروعات کردی جائے گی۔ ساتھ ہی سبھی طرح کی موبائل ایس ایم ایس خدمات شروع کردی جائیں گی۔

  • Share this:
کشمیر میں پانچ ماہ کی پابندی کے بعد شروع ہوگی ایس ایم ایس خدمات، ان مقامات پر چلےگا انٹرنیٹ
علامتی تصویر

نئی دہلی: نئےسال کی شروعات کے ساتھ ہی کشمیرکےسبھی سرکاری اسپتالوں میں انٹرنیٹ خدمات کی شروعات کردی جائے گی۔ ساتھ ہی سبھی طرح کی موبائل ایس ایم ایس خدمات شروع کردی جائیں گی۔ ایسا 31 دسمبرکی نصف شب سے کئے جانے کی اطلاع جموں وکشمیرکےسرکاری ترجمان روہت کنسل سےبات چیت کی بنیاد پرنیوزایجنسی پی ٹی آئی نے دی۔


کچھ دنوں قبل فون میں شروع کردی گئی تھیں ایس ایم ایس خدمات


گزشتہ 10 دسمبرکوکچھ موبائل فون کےلئےایس ایم ایس خدمات کوشروع کردیا گیا تھا۔ یہ سہولیات طلباء، اسکالرشپ کےلئےاپلائی کرنے والے طلباء، تاجروں اوردیگرلوگوں کی سہولیات کےلئےشروع کی گئی تھی۔ روہت کنسل نےکہا ہےکہ اب 31 دسمبرکی نصف شب سے پورے کشمیرمیں خدمات بحال کرنےکا فیصلہ کیا گیا ہے۔ انٹرنیٹ خدمات کوکشمیرمیں 5 اگست کومرکزی وزیرداخلہ کےآرٹیکل 370 کوہٹانےکےاعلان سے قبل ہی بند کردیا گیا تھا۔ اس اعلان کےبعد جموں وکشمیرریاست کومرکزکے زیرانتظام دوخطوں میں تقسیم کردیا گیا ہے۔


کارگل میں شروع کی گئی تھی موبائل انٹرنیٹ خدمات

گزشتہ ہفتے موبائل انٹرنیٹ خدمات کولداخ کی کارگل ضلع میں شروع کردیا گیا تھا۔ کارگل میں ان خدمات کوآئین کے آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے 145 دنوں کی پابندی کے بعد شروع کیا گیا تھا۔ حالانکہ، سب سے پہلے لینڈ لائن فون خدمات کو دھیرے دھیرے شروع کیا گیا۔ اس کے بعد پوسٹ پیڈ موبائل خدمات کو شروع کیا گیا۔ حالانکہ پری پیڈ موبائل اورانٹرنیٹ خدمات کو پوری وادی میں ابھی بھی شروع کیا جانا باقی ہے۔
First published: Dec 31, 2019 07:56 PM IST