உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : سری نگر میں انکاونٹر میں کمانڈر سمیت لشکر کے دو دہشت گرد ہلاک

    جموں و کشمیر : سری نگر میں انکاونٹر میں کمانڈر سمیت لشکر کے دو دہشت گرد ہلاک ۔ فائل فوٹو ۔

    جموں و کشمیر : سری نگر میں انکاونٹر میں کمانڈر سمیت لشکر کے دو دہشت گرد ہلاک ۔ فائل فوٹو ۔

    Jammu and Kashmir News : انکاونٹر میں مارے گئے دونوں دہشت گردوں کے نام عباس شیخ اور ثاقب منظور بتائے جارہے ہیں ۔ عباس شیخ اپنے آپ کو ٹی آر ایف کا سرغنہ مانتا تھا ۔ پولیس کو علاقہ میں کچھ دہشت گردوں کے داخل ہونے کے ان پٹ ملے تھے ۔

    • Share this:
      سری نگر: پیر کو جموں و کشمیر کے سری نگر میں پولیس کو بڑی کامیابی ملی ۔ پولیس نے شہر میں داخل ہوئے دو دہشت گردوں کو انکاونٹر میں مار گرایا ۔ کشمیر کے آئی جی پی وجے کمار نے بتایا کہ سری سنگر میں دہشت گردوں اور سیکورٹی فورسیز کے درمیان انکاونٹر میں جموں و کشمیر پولیس کو بڑی کامیابی ملی ، جس میں دو دہشت گرد مارے گئے ۔ دونوں ہی ٹی آر ایف کے سینئر کمانڈر تھے جو کہ دہشست گرد تنظیم لشکر طیبہ کی ایک اہم ساتھی تنظیم ہے ۔

      انکاونٹر میں مارے گئے دونوں دہشت گردوں کے نام عباس شیخ اور ثاقب منظور بتائے جارہے ہیں ۔ عباس شیخ اپنے آپ کو ٹی آر ایف کا سرغنہ مانتا تھا ۔ پولیس کو علاقہ میں کچھ دہشت گردوں کے داخل ہونے کے ان پٹ ملے تھے ۔ اس کے بعد کشمیر پولیس نے دہشت گردوں کو پکڑنے کیلئے تلاشی مہم چلائی ۔ جانچ کے دوران دہشت گردوں اور پولیس کے درمیان گولی باری شروع ہوگئی اور دونوں دہشت گرد مارے گئے ۔ دونوں ہی دہشت گردوں کا نام کچھ دن پہلے ہی جموں و کشمیر پولیس نے موسٹ وانٹیڈ کی فہرست میں شامل کیا تھا ۔



      پہلے حزب المجاہدین میں تھا عباس

      مارا گیا عباس شیخ کولگام کے رام پور گاوں کا رہنے والا تھا اور وہ جنوبی کشمیر ضلع کے ٹی آر ایف کا کمانڈر تھا ۔ بتایا جارہا ہے کہ عباس شیخ موجودہ وقت میں وادی میں موجود دہشت گردوں میں سب سے عمردراز تھا ۔ ٹی آر ایف سے پہلے وہ حزب المجاہدین میں تھا ۔

      دونوں ہی دہشت گرد گزشتہ کافی وقت سے وادی میں معصوم اور بے قصور لوگوں کی جان لے رہے تھے ۔ اس سے پہلے وہ کئی مرتبہ سیکورٹی فورسیز کو چکمہ دے کر فرار ہونے میں کامیاب رہے ۔

      آئی جی پی وجے کمار نے کہا کہ میں وادی کے لوگوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ اپنے بچو کو دہشت گردی کی صف میں شامل نہ ہونے دیں اور جو لوگ دہشت گردی کا راستہ چھوڑ واپس آئیں گے ، ہم ان کا خیرمقدم کریں گے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: