உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir: سری نگر میں ڈل جھیل کے کنارے مغل گارڈن کے پاس گرینیڈ حملہ، 9 زخمی

    جموں وکشمیر: سری نگر میں ڈل جھیل کے کنارے مغل گارڈن کے پاس گرینیڈ حملہ

    جموں وکشمیر: سری نگر میں ڈل جھیل کے کنارے مغل گارڈن کے پاس گرینیڈ حملہ

    Srinagar Blast News: افسران نے کہا کہ سات زخمیوں کو ایس ایچ ایم ایس اسپتال لے جایا گیا اور دو کو ایس کے آئی ایم ایس اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu, India
    • Share this:
      سری نگر: شہر کے نشاط علاقے میں اتوار کو دہشت گردوں نے ایک ہتھگولہ پھینکا، جس سے نو افراد زخمی ہوگئے۔ افسران نے یہ جانکاری دی۔ انہوں نے بتایا کہ ڈل جھیل کے کنارے مغل گارڈن کے پاس یہ حملہ ہوا۔ افسران نے کہا کہ حملے میں 9 افراد زخمی ہوگئے۔ افسران نے کہا کہ سات زخمیوں کو ایس ایچ ایم ایس اسپتال لے جایا گیا اور دو کو ایس کے آئی ایم ایس اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

      یہ حملہ ایسے وقت میں ہوا ہے، جبکہ راجوری ضلع میں کنٹرول لائن کے پاس اتوار کو فوج کے جوانوں نے ایک پاکستانی درانداز کو گرفتار کیا۔ راجوری کے سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ محمد اسلم نے بتایا کہ نوشیرا سیکٹر کے سحر مرکی علاقے میں کنٹرول لائن کی پہرے داری کر رہے فوج کے جوانوں کو کسی درانداز کی مشتبہ سرگرمی نظر آئی اور انہوں نے اسے للکارا، تب وہ بھاگنے لگا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ہندوستان کے خلاف نہیں کی جارہی ہے دہشت گردانہ سازش، پاکستان نے کی خبروں کی تردید

      محمد اسلم نے کہا، ’اس پر درانداز پر گولی چلائی گئی، جس میں وہ زخمی ہوگیا اور اسے پکڑ لیا گیا۔ اس کا مقامی فوجی اسپتال میں علاج کرایا گیا اور اب اسے راجوری میں فوج کے اسپتال لے جایا گیا ہے‘۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملے کی جانچ اور درانداز سے پوچھ گچھ بعد میں کی جائے گی۔

      حالانکہ سرکاری ذرائع نے درانداز کی پہچان پاکستان مقبوضہ کشمیر کے باشندہ 32 سالہ تبارک حسین کے طور پر کی ہے۔ ذرائع کے مطابق، تبارک حسین کے پاس سے کوئی مشتبہ اشیا نہیں ملی ہے اور وہ ایل او سی پار کرنے کی کوشش کیوں کر رہا تھا، پوچھ گچھ کے بعد ہی اس کا پتہ چل پائے گا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: