ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

محبوبہ مفتی حراست معاملہ: سپریم کورٹ نےالتجا مفتی کی عرضی پرجموں وکشمیر انتظامیہ کوجاری کیانوٹس

جسٹس ارون مشرا، جسٹس نوین سرن اور جسٹس ایم آرشاہ کی بینچ نے محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا مفتی کی حراست سے متعلق عرضی پر مرکزی حکومت اور مرکز کے زیر انتظام ریاست کی انتظامیہ اوردیگرکو نوٹس جاری کئے۔

  • Share this:
محبوبہ مفتی حراست معاملہ: سپریم کورٹ نےالتجا مفتی کی عرضی پرجموں وکشمیر انتظامیہ کوجاری کیانوٹس
جموں وکشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی۔ فائل فوٹو: پی ٹی آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے سابق وزیراعلی اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) لیڈر محبوبہ مفتی کی پبلک سیفٹی ایکٹ (پی ایس اے) کے تحت حراست کو چیلنج دینے والی پٹیشن پر بدھ کے روز مرکزی حکومت اور جموں و کشمیر انتظامیہ سے جواب طلب کیا ہے۔ جسٹس ارون مشرا، جسٹس نوین سرن اور جسٹس ایم آر شاہ کی بینچ نے محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا مفتی کی حراست سے متعلق عرضی پر مرکزی حکومت اور مرکز کے زیر انتظام ریاست کی انتظامیہ اور دیگر کو نوٹس جاری کئے۔


سپریم کورٹ

التجا مفتی نے محبوبہ مفتی کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت حراست میں لئے جانے کے حکم کو چیلنج کیا ہے۔ بنچ نے نوٹس کےجواب کے لئے 18 مارچ تک کی وقت دیا ہے۔ معاملے کی آئندہ سماعت اسی دن ہوگی۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال 5 اگست 2019 جموں وکشمیر میں آرٹیکل 370 ختم کئے جانے کے بعد سے ریاست کے کئی اہم لیڈران کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت حراست میں رکھا گیا ہے۔ اس میں محبوبہ مفتی بھی شامل ہیں۔ اس کے علاوہ جموں وکشمیر کے سابق وزیراعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے سربراہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیراعلیٰ عمرعبداللہ بھی حراست میں ہیں۔

First published: Feb 26, 2020 04:34 PM IST