உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Srinagar Terror Attack:دہشت گرد تنظیم نے پولیس اہلکاروں پر حملے کا ویڈیو کیا وائرل،دہشت گرد لگاتار کررہا ہے فائرنگ

    علامتی تصویر ۔

    علامتی تصویر ۔

    Srinagar Terror Attack: پولیس نے عادل کو تھانہ باڑی برہمن میں رکھا ہوا ہے۔ اس سے بھی پوچھ تاچھ کی جا رہی ہے۔ امرناتھ یاترا کے سلسلے میں سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان اگر مشتبہ نظر آتے ہیں تو سیکورٹی فورسز فوری کارروائی کر رہی ہیں۔

    • Share this:
      Srinagar Terror Attack:سرینگر: سری نگر کے لال بازار میں منگل کو جموں و کشمیر پولیس پر دہشت گردانہ حملے کا ویڈیو ایک دہشت گرد تنظیم نے جاری کیا ہے۔ 39 سیکنڈ کی اس ویڈیو کو باڈی کیمرے کے ذریعے شوٹ کیا گیا ہے۔ واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ دہشت گرد پستول سے پولیس اہلکاروں پر پیچھے سے فائرنگ کرتا ہے۔

      اس کے بعد وہ پولیس کی گاڑی میں بیٹھے ایک اور پولیس اہلکار کو نشانہ بناتا ہے۔ لگاتار فائرنگ کے بعد، وہ پستول کا میگزین بدلتا ہے اور درخت کے پاس کھڑے تیسرے پولیس اہلکار کو نشانہ بناتا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ اس ویڈیو میں صاف سنائی دے رہا ہے کہ حملہ کرنے والا دہشت گرد مذہبی نعرے لگا رہا ہے۔

      فوج نے سرور ٹول پلازہ پر پکڑا مشتبہ شخص
      سرور ٹول پلازہ پر بدھ کو فوج نے ایک مشتبہ شخص کو پکڑا ہے۔ دوران تفتیش ملزم کی ذہنی حالت غیر مستحکم پائی گئی۔ فوج اور پولیس نے احتیاط کے طور پر ٹول پلازہ کے اردگرد سرچ آپریشن کیا۔

      جب فوج کی گشتی پارٹی نے اسے دیکھا تو اس کا پیچھا کرنے لگے۔ اچانک وہاں سینکڑوں لوگ جمع ہو گئے۔ اس دوران فوج نے مشتبہ شخص کو حراست میں لے لیا۔ اس کے بعد اسے باڑی برہمن پولیس اسٹیشن لایا گیا۔ پولیس اور فوج کی مشترکہ پوچھ تاچھ میں مذکورہ شخص نے اپنا نام عادل ولد بشیر احمد ساکن اوڑی بتایا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      کولگام علاقے سے تعلق رکھنے والا کُنبہ دہشت گردی سے متاثر، پہلے بیٹا اور اب باپ تشدد کاشکار

      یہ بھی پڑھیں:
      جموں وکشمیر: پلوامہ میں سیکورٹی فورسیز نے وقت پرکارروائی کرکے ایک بڑے حادثےکو ٹال دیا

      اس نے بتایا کہ وہ دو ہفتے قبل اڑی سے جموں آیا تھا اور آس پاس کے علاقوں میں گھوم رہا تھا۔ پولیس نے عادل کو تھانہ باڑی برہمن میں رکھا ہوا ہے۔ اس سے بھی پوچھ تاچھ کی جا رہی ہے۔ امرناتھ یاترا کے سلسلے میں سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان اگر مشتبہ نظر آتے ہیں تو سیکورٹی فورسز فوری کارروائی کر رہی ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: