உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: سری نگر میں دہشت گردوں نے پولیس اہلکارکو ماری گولی، سنگین حالت میں اسپتال میں داخل

    سری نگر میں دہشت گردوں نے پولیس اہلکارکو ماری گولی

    سری نگر میں دہشت گردوں نے پولیس اہلکارکو ماری گولی

    اس حملے میں جموں وکشمیر پولیس کے کانسٹبل غلام حسن شدید طور پر زخمی ہوگئے۔ انہیں علاقے کے لئے مقامی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ علاقے کی گھیرا بندی کرکے حملہ آوروں کو پکڑنے کے لئے تلاشی مہم چلائی جا رہی ہے۔

    • Share this:
      سری نگر: جموں وکشمیر کے سری نگر میں ہفتہ کو دہشت گردوں نے ایک پولیس اہلکار کو گولی مار کر زخمی کردیا۔ زخمی کانسٹبل کو اسپتال میںداخل کرایا گیا ہے۔ جموں وکشمیر پولیس کے ایک افسر کے مطابق، ’سری نگر کے سفاک دال علاقے میں آئیوا برج کے پاس دہشت گردوں نے ہفتہ کی صبح 8:40 بجے کے قریب کانسٹبل غلام حسن پر گولی چلائی۔ اس حملے میں غلام حسن شدید طور پر زخمی ہوگئے۔ انہیں علاج کے لئے مقامی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ علاقے کی گھیرا بندی کرکے حملہ آوروں کو پکڑنے کے لئے تلاشہ مہم چلائی جا رہی ہے‘۔

      اس سے قبل سیکورٹی اہلکاروں نے جنوبی کشمیر میں جمعہ کو ہوئے تصادم میں 3 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا۔ ان میں حزب المجاہدین کا ایک اعلیٰ دہشت گرد کمانڈر بھی شامل تھا۔ جموں وکشمیر پولیس نے بتایا کہ محمد اشرف خان عرف اشرف مولوی، وادی کے سب سے پرانے زندہ دہشت گردوں میں سے ایک تھا۔ جنوبی کشمیر کے اننت ناگ کے کوکرناگ کے باشندہ، اشرف خان کا نام گزشتہ سال جموں وکشمیر پولیس کے ذریعہ جاری 10 موسٹ وانٹیڈ دہشت گرد کمانڈروں کی فہرست میں تھا۔ اسے پولیس ریکارڈ میں A++ دہشت گرد کے طور پر درجہ بندی کی گئی تھی۔ وہ نو سال سے وادی میں سرگرم تھا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      حزب المجاہدین کمانڈر اشرف مولوی کی ہلاکت پولیس اور سیکورٹی فورسز کی بڑی کامیابی

      وہیں جموں وکشمیر کے بڈگام ضلع میں سیکورٹی اہلکاروں نے جمعہ کو انصار غزوۃ الہند (اے جی یو ایچ) تنظیم کے دہشت گردوں کے دو معاونین کو گرفتار کیا۔ پولیس کے ترجمان نے بتایا، ’بڈگام پولیس نے فوج اور سی آر پی ایف کے ساتھ وسطی کشمیر کے بڈگام کے حورو علاقے میں ممنوعہ دہشت گرد تنظیم اے جی یو ایچ کے دہشت گردوں کے دو معاونین کو گرفتار کیا ہے۔ گرفتار کئے گئے ملزمین کی شناخت ڈانگیر پورہ رجوان کے باشندہ عامر منظور بوڈو اور گندربل کے پٹرملّا صفاپورہ باشدہ شاہد رسول غنی کے طور پر ہوئی ہے۔ ان کے پاس سے ایک ہتھگولہ اور اے کے -47 کے 25 کارتوس سمیت قابل اعتراض اشیا برآمد کی گئی ہے۔

      سیکورٹی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ کشمیر وادی میں الگ الگ تصادم میں اس سال اب تک 62 دہشت گردوں کو مار گرایا گیا ہے۔ ان میں 15 غیر ملکی دہشت گرد تھے۔ کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس (IGP) وجے کمار کے مطابق، مارے گئے 62 دہشت گردوں میں سے 39 لشکر طیبہ (LeT) کے تھے، جبکہ 15 جیش محمد (JeM) سے وابستہ تھے۔ اس کے علاوہ حزب المجاہدین کے 6 اور البدر کے 2 دہشت گردوں کو بھی مار گرایا گیا ہے۔ جموں وکشمیر میں اس وقت پاکستان واقع دہشت گرد گروہوں میں لشکر، جیش محمد اور حزب المجاہدین سرگرم ہیں۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ گزشتہ کچھ سالوں میں سیکورٹی اہلکاروں  نے ان دہشت گرد گروپوں کے بیشتر اعلیٰ کمانڈروں کو مار گرایا ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: