உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    میونسپل عملے کی لاپرواہی، دریا میں بیت الخلاء کا فضلا ڈال کر پانی کو کیا آلودہ، لوگوں نے کیا احتجاج

     لوگوں نے کہا کہ قدرتی طور پر بہنے والے اس دریا میں غلاظت اور فضلاء کو ٹھکانے لگانے کی وجہ سے دریا کا پانی بھی پوری طرح سے آلودہ ہو گیا جبکہ اس دریا کا پانی متعدد دیہات کے لوگ پینے کےلیے استعمال کرتے ہیں۔

    لوگوں نے کہا کہ قدرتی طور پر بہنے والے اس دریا میں غلاظت اور فضلاء کو ٹھکانے لگانے کی وجہ سے دریا کا پانی بھی پوری طرح سے آلودہ ہو گیا جبکہ اس دریا کا پانی متعدد دیہات کے لوگ پینے کےلیے استعمال کرتے ہیں۔

    لوگوں نے کہا کہ قدرتی طور پر بہنے والے اس دریا میں غلاظت اور فضلاء کو ٹھکانے لگانے کی وجہ سے دریا کا پانی بھی پوری طرح سے آلودہ ہو گیا جبکہ اس دریا کا پانی متعدد دیہات کے لوگ پینے کےلیے استعمال کرتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir, India
    • Share this:
    جموں کشمیر: جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ کے پوشناڈی چھترگل علاقے میں میونسپل عملے کی غفلت شاری کا ایک سنگین معاملہ سامنے آیا ہے۔ جس کے بعد لوگوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ لوگوں نے میونسپل عملے پر الزام لگایا کہ ملازمین نے ایک سکر مشین کے ذریعے ایک گھر کے بیت الخلاء کا ٹرنچ صاف کیا جس کے بعد فضلاء کو مبینہ طور پر وہاں سے بہنے والے ایک دریا میں ڈال دیا۔ لوگوں نے کہا کہ قدرتی طور پر بہنے والے اس دریا میں غلاظت اور فضلاء کو ٹھکانے لگانے کی وجہ سے دریا کا پانی بھی پوری طرح سے آلودہ ہو گیا جبکہ اس دریا کا پانی متعدد دیہات کے لوگ پینے کےلیے استعمال کرتے ہیں۔

    اس واقعے کے خلاف پوشناڈی علاقہ کے لوگوں نے احتجاج کیا اور غیر اخلاقی حرکت میں ملوث افراد کے خلاف قانونی کاروائی کا مطالبہ کیا۔ اس دوران محکمہ صحت کے اہلکاروں اور پولیس نے بھی علاقے کا دورہ کیا اور واقع میں ملوث قصورواروں کے خلاف سخت کاروائی کا لوگوں کو یقین دلایا۔ لوگوں نے کہا کہ ایسی حرکت نہ صرف غیر اخلاقی ہے بلکہ ماحولیاتی توازن کو بگھاڑنے کی ایک کوشش کے ساتھ ساتھ لوگوں کی جانوں کے ساتھ کھیلنے کا ایک موجب بھی بن سکتا ہے۔

    بھائی نے سوتیلی بہن کا کیا ریپ، حاملہ ہو گئی 13 سالہ لڑکی تو کرا دیا اسقاط حمل اور پھر۔۔۔

    جنوبی کشمیر میں انکاؤنٹر کے دوران پولیس نے ہائبریڈ ملیٹنٹ کے مارے جانے کا کیا دعویٰ

    چناچہ پولیس نے فوری کاروائی کے تحت پولیس اسٹیشن اترسو میں ایک ایف آئی آر درج کر لی۔ پولیس نے اس سلسلے میں فی الحال 3 افراد کو گرفتار کر لیا ہے اور مزید تحقیقات جاری ہے۔ لوگوں کے مطابق اس دریا سے شانگس کے متعدد علاقوں کو پینے کا پانی فراہم کیا جاتا ہے اور دریا کو آلودہ کرنے سے لوگوں میں بیماری پھوٹنے کا خدشہ لاحق ہے۔ لوگوں نے ملوث افراد کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ ادھر بلاک میڈیکل افیسر شانگس نے لوگوں سے احتیاط برتنے کی صلاح دیتے ہوئے پانی ابال کر استعمال کرنے کی صلاح دیتے ہوئے کہا ہے کہ مزید جانچ کےلیے پانی کے نمونے بھی حاصل کئے گئے ہیں اور جلد سے جلد پانی کا ٹیسٹ عمل میں لاکر انتظامیہ کو حتمی رپورٹ پیش کی جائے گی۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: