உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال ہمیشہ سے ہندو مسلم بھائی چارے کا گہوارہ رہا

    جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال ہمیشہ سے ہندو مسلم بھایی چارے کا گہورا رہا

    جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال ہمیشہ سے ہندو مسلم بھایی چارے کا گہورا رہا

    جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال ہمیشہ سے ہی ہندو مسلم بھائی چارے کا گہوارہ رہا اوراس کی مثال حالیہ دنوں ڈی ڈی سی انتخابات کے نتائج کے دوران دیکھنے کو ملی، یہاں تین نشتوں پر دو سکھ امیدواروں کو اکثریت نے ووٹ دے کر کامیاب کیا ہے۔

    • Share this:
    ترال: جنوبی کشمیر کا سب ضلع ترال ہمیشہ سے ہی ہندو مسلم بھائی چارے کا گہوارہ رہا اور اس کی مثال حالیہ دنوں ڈی ڈی سی انتخابات کے نتائج کے دوران دیکھنے کو ملی، یہاں تین نشتوں پر دو سکھ امیدواروں کو اکثریت نے ووٹ دے کر کامیاب کیا ہے۔ حالیہ ڈی ڈی سی انتخابات کے دوران ترال میں ہندو مسلم سکھ بھائی چارے کی ایک شاندار مثال گزشتہ دنوں اس وقت سامنے آئی ہے، جب علاقے کے کل 3 بلاکوں کے نشستوں پر کھڑے متعدد امیدواروں میں سے مقامی اکثریتی طبقے کے لوگوں نے سکھ مذہب کے 2 امیدواروں کو ووٹ دے کر کامیاب بنایا ہے۔ اسی طرح ایک اور بلاک میں سکھ فرقے نے یہاں میدان میں کھڑا مسلمان امیدواروں کو ووٹ دے کر کامیاب کیا۔


    اس کے علاوہ ترال کے متعدد گاوں دیہات میں دونوں مذاہب کے لوگ رہائش پذیر ہیں، ان کا صحن بھی ایک ہی ہے۔ علاقے کے لوگوں نے اس بات کا عہد کیا ہے کہ وہ ہر حال میں اس بھائی چارے کو قائم رکھیں گے۔ ادھر میونسیپل کمیٹی کے چیئرمین کے فرائض گزشتہ سال سے ایک پنڈت نبھا رہا ہے، جس کو مسلم طبقے نے ہمیشہ ساتھ دیا ہے۔ ترال صدیوں سے سکھ، مسلم، ہندو بھائی چارے کا گہوارہ رہ چکا ہے، جہاں علاقے کے لوگ ہر قسم کے حالات  میں خوشی اور غم میں ایک دوسرے کے ساتھ ساتھ رہ کر حالات کا مقابلہ کرتے ہیں۔ ترال کے مذہبی بھائی چارے کو نہ صرف یہاں کے بزرگوں نے قائم رکھا ہے بلکہ علاقے کی نوجوان نسل اس بھائی چارے کو آگے لے کر مزید مضبوط کر رہے ہیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: