உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    منشیات کی استعمال سے ایک نوجوان کی موت، وادی کشمیر میں DRUGS کا بڑھتا رحجان تشویشناک

     ترال میں گزشتہ روز مبینہ طور منشیات کی استعمال سے ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی تھی جس کےبعد علاقے میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

    ترال میں گزشتہ روز مبینہ طور منشیات کی استعمال سے ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی تھی جس کےبعد علاقے میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

    ترال میں گزشتہ روز مبینہ طور منشیات کی استعمال سے ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی تھی جس کےبعد علاقے میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

    • Share this:
    وادی کشمیر میں نوجوان نسل میں منشیات کا رجحان بڑھتا جا رہا ہے جس پر ہر کسی کو توجہ دینے کی ضرورت ہے اور آئے دن یہ وبا نوجوان نسل کو تباہ کر رہی ہے۔ ادھر ترال میں گزشتہ روز مبینہ طور منشیات کی استعمال سے ایک نوجوان کی موت واقع ہوئی تھی جس کےبعد علاقے میں سخت تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ اگرچہ وادی میں ترال ایک ایسی جگہ تھی جہاں منشیات نہ ہونےکے برابر تھا تاہم اب یہاں پر بھی اس وباہ نے آہستہ آہستہ اپنے دستک دی ہے اور لوگوں کو نیند سے جاگایا ہے تاہم نوجوان کی موت کے بعد علاقے میں پولیس، رضاکار تنظیموں، عام لوگوں اور سرکاری و غیر سرکاری تعلیمی اداروں نے منشیات مخالف سرگرمیاں شروع کی ہے۔ اس سلسلے میں عوام اور پولیس کے بیچ ایک مٹینگ بھی منقعد ہوئی جس میں علاقے میں منشیات کے خلاف ایک ٹاسک فورس بنانے پر حکمت عملی طے کی گئی جس میں مقامی نوجوان منشیات کے خلاف پولیس کو اپنا تعاون پیش کریں گے۔

    وہیں ڈگری کالج ترال میں آج سماج میں منشیات کے تدارک کے حوالے سے ایک سیمنار کا بھی اہتمام کیا گیاجس کا اہتمام کالیج انتظامیہ نے ڈسٹرکٹ سوشل ویلفیئر آفس کے باہمی اشتراک سے کیا تھا جس میں کالیج طلباء نے موضوعات کے حوالے سے مقالات پڑے جبکہ معروف مزاحیہ اداکار بشیر کوتر نے ساتھیوں کے ہمراہ منشیات سے دور رہنے کے لیے مزاحیہ انداز میں اپنا پیغام پہنچایا سیمنار میں ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ بصیر الحق چودھری مہمان خصوصی کے بطور شریک ہوئے۔

    انھوں نے اپنے خطاب میں اس بات پر زور دیا کہ والدین اپنے بچوں کے ساتھ وقت بتائیں تاکہ والدین کو پتہ چلے کہ ان کے بچے کس راہ پر چل رہے ہیں انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ والدین کو اپنے بچوں کے ساتھ دوستانا ماحول رکھنا چاہےنہ کہ انہیں الگ چھوڈ دیا جائے وہی کالیج کے پرنسپل پروفیسر فاروق میر نے بتایا کہ منشیات کی وباء سماج میں نہ پھیلے اس لیے اس ورکشاپ کا اہتمام کیا گیا تھا تاکہ سماج میں منشیات کے گھنونے کام کے حوالے سے آگاہی فراہم کی جائے وہی علاقے میں نوجوان متحرک ہوگئے ہیں ۔انہوں نے یہ عہد کیا ہے کہ علاقہ منشیات سے پاک ہو اس سلسلے میں انہوں نے اپنی سرگرمیاں شروع کی ہے وہی پولیس کے ایک عہد دار نے بتایا کہ اگر لوگوں کو کہی پر شک ہے کہ کسی جگہ کی پر منشیات فروخت کی جارہی ہے یا کویی بھی بچہ اس میں لت میں ملوث ہوگیا ہے تو وہ فوراََ پولیس کو اطلاع دیں تاکہ وقت پر کاروائی کی جایےجائے اور اس پھیلاو کو روکا جاسکے۔
    قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: