உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران ملک کے لوگوں کے لئے بہت زیادہ تشویش کا باعث

    کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران ملک کے لوگوں کے لئے بہت زیادہ تشویش کا باعث

    کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران ملک کے لوگوں کے لئے بہت زیادہ تشویش کا باعث

    کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران، ہمارے ملک بھر کے لوگوں کے لئے بہت زیادہ تشویش کا باعث بنی ہے۔ جموں وکشمیر میں انتظامیہ اور محکمہ صحت نے بھی اس نئے خطرے سے نمٹنے کے لیے کمر کس لی ہے۔ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے پوری طرح سے کوشش کی جارہی ہے اس بیماری کو جموں و کشمیر پنپنے نہ دیا جائے۔

    • Share this:
    کورونا وائرس کے نئے ویریئنٹ اومیکران، ہمارے ملک بھر کے لوگوں کے لئے بہت زیادہ تشویش کا باعث بنی ہے۔ جموں وکشمیر میں انتظامیہ اور محکمہ صحت نے بھی اس نئے خطرے سے نمٹنے کے لیے کمر کس لی ہے۔  اس بات کو یقینی بنانے کے لیے پوری طرح سے کوشش کی جارہی ہے اس بیماری کو جموں و کشمیر میں پنپنے نہ دیا جائے۔

    ملک کے دیگر حصوں کی طرح جموں و کشمیر بھی گزشتہ دو سالوں کے دوران covid wave-1 اور covid wave-2 کے دوران انتہائی تکلیف دہ صورتحال سے گزرا ہے۔ اب کووڈ کی 3RD لہر کی آمد کا بہت بڑا خطرہ ہے، خاص طور پر جب ڈبلیو ایچ او نے اعلان کیا کہ اومیکرون نامی ایک نیا وائرس بہت سے افریقی ممالک میں پھیل چکا ہے۔ جموں و کشمیر میں انتظامیہ نے بھی نئے چیلنجوں کا سامنا کرنے کے لئے کمر کس لی ہے۔ جموں وکشمیر انتظامیہ نے تمام غیر ملکی مسافروں کے لئے ہوائی اڈوں پر RT-PCR ٹیسٹ کو لازمی قرار دینے کا فیصلہ کیا ہے۔  مسافروں کو جموں و کشمیر میں داخل ہونے کی اجازت صرف اسی صورت میں دی جائے گی، جب ان کا ٹیسٹ منفی ہوگا۔  اگر ٹیسٹ منفی آیا تو مسافروں کو سات دن کے لئے ہوم کوارنٹائن (Home  Quarantine) میں بھیج دیا جائے گا اور آٹھویں دن دوبارہ ٹیسٹ کیا جائے گا۔ جموں وکشمیر محکمہ صحت کے حکام نے جموں کے بھگوتی نگر میں 500 بستروں پر مشتمل ڈی آر ڈی او ہسپتال کو بھی دوبارہ کھول دیا ہے تاکہ نئے کورونا ویریئنٹ اومیکران کی وجہ سے پیدا ہونے والی کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار رہیں۔

    جموں وکشمیر کے ڈویژنل کمشنروں نے لیا جائزہ

    جموں اور کشمیر دونوں کے ڈویژنل کمشنروں نے متعلقہ افسران سے کہا ہے کہ وہ ائیر سوودھا پورٹل سے ڈیٹا کا جائزہ لیں تاکہ خطرے میں درج ممالک سے آنے والے مسافروں کا جلد پتہ لگایا جا سکے۔ انہوں نے ریاستی نگرانی کے افسرکو یہ بھی ہدایت کی ہے کہ وہ فہرستیں سی ایم اوز اور فیلڈ سرویلانس یونٹس کے ساتھ حقیقی وقت کی بنیاد پر شیئر کریں۔ سی ایم اوز سے کہا گیا ہے کہ وہ 8 دنوں کے مشاہدے کے دوران غیر ملکی مسافروں کے گیٹ پر ’home quarantine‘ کے اسٹیکرز چسپاں کریں۔  دریں اثنا، عام لوگ بھی فکر مند نظر آرہے ہیں اور کووڈ کے پھیلاؤ پر قابو پانے کی کوششوں میں حکومت کو ہر طرح کا تعاون دینا چاہتے ہیں۔

    تین خصوصی کوارنٹائن سینٹر قائم

    ضلع افسر نے بتایا کہ سری نگر ضلع میں ملکی اور غیر ملکیوں کے لیے تین خصوصی کوارنٹائن سینٹر قائم ہوگئے ہیں۔ سنت نگر میریج ہال اور اس علاقے کے دو ہوٹلوں کو کوارنٹائن سینٹر میں تبدیل کر دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر کوئی مسافر کووڈ-19 یا نئے وائرس کے لئے مثبت ٹیسٹ کرتا ہے اور اس کا نتیجہ مثبت آتا ہے تو اسے خصوصی علاج کے لئے ڈی آر ڈی او کووڈ اسپتال منتقل کیا جائے گا۔ انتظامیہ نے یہ قدم نئے وائرس کے مختلف قسم تبدیل شدہ اومیکران کے پھیلاؤ کے تناظر میں اٹھایا ہے۔

    محکمہ صحت کو دی گئی ہدایت

    اس دوران محکمہ صحت کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ غیر ملکی سفری تاریخ والے کووڈ-19 مثبت مریضوں کے لئے علیحدہ وارڈز مختص کرے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ وہ غیر ملکی سفری تاریخ کے بغیر مثبت کیسز (مقامی/گھریلو/رابطے) کے ساتھ نہ ملے۔ جموں کے رہنے والے سشیل شرما نے کہا کورونا نے پتہ نہیں کتنے ہی لوگوں کے گھروں کے چراغ بھجا دیئے ہیں۔ ابھی ہم نے ویکسین لینے کے بعد اپنے روزمرہ کے کام شروع ہی کئے تھے کہ اب ہمارے سامنے کورونا ایک نئی شکل لے کے سامنے آیا ہے، لیکن اس بار ہمیں کسی بھی طرح کی لاپرواہی نہیں برتنی چاہئے۔ ہمیں انتظامیہ کو اپنا پورا تعاون دینا چاہئے تاکہ یہ بیماری آنے سے پہلے ہی اس کو جڑ سے مٹا دیا جائے۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    Jammu and Kashmir: میں دہشت گردی کو فروغ دینے کے لئے پاکستان اپنا رہا ہے یہ نئی حکمت عملی: دلباغ سنگھ کا سنسنی خیز انکشاف


    جموں کے رہنے والے نادر علی نے کہا ابھی اس بیماری کا ہمیں کوئی بھی علم نہیں کہ کیا یہ کرونا کی طرح ہی جان لیوا ہے یا پھر اس سے بھی بھیانک ہے۔ حکومت کو چاہیے اس بیماری کے بارے میں کھل کر لوگوں کو بتائیں تاکہ لوگ وقت پہ ہی اس سے بچنے کے لئے احتیاط کرنا شروع کریں کیونکہ اب ہم سب لوگ اس نئی بیماری کا بوجھ نہیں اٹھا سکتے ہیں۔ میں سبھی لوگوں سے گزارش کرتا ہوں کہ اس سے بچنے کے لیے جو بھی انتظامیہ قدم اٹھا رہی ہے اس میں اُن کو اپنا پورا تعاون دے۔

    قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: