உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں۔کشمیر: Ayushman Bharat کے تحت بدل رہی ہے طبی شعبے کی تصویر، سرکار ہیلتھ میلوں کا کررہی ہے اہتمام

    وہیں لوگ دیہی سطح پر اس طرح کی خدمات کو میسر رکھنے کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں۔ جموں کشمیر میں محکمہ صحت کو مزید فعال اور مستحکم بنانے کی کوششوں کے تناظر میں ایوشمان بھارت کے تحت اب سرکار ہیلتھ میلوں کا اہتمام کر رہی ہے۔

    وہیں لوگ دیہی سطح پر اس طرح کی خدمات کو میسر رکھنے کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں۔ جموں کشمیر میں محکمہ صحت کو مزید فعال اور مستحکم بنانے کی کوششوں کے تناظر میں ایوشمان بھارت کے تحت اب سرکار ہیلتھ میلوں کا اہتمام کر رہی ہے۔

    وہیں لوگ دیہی سطح پر اس طرح کی خدمات کو میسر رکھنے کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں۔ جموں کشمیر میں محکمہ صحت کو مزید فعال اور مستحکم بنانے کی کوششوں کے تناظر میں ایوشمان بھارت کے تحت اب سرکار ہیلتھ میلوں کا اہتمام کر رہی ہے۔

    • Share this:
    جموں کشمیر: مرکزی زیر انتظام والے جموں کشمیر میں طبی شعبے کی تصویر بدلنے کی غرض سے ایوشمان بھارت کے تحت محکمہ صحت اب ہیلتھ میلوں کا انعقاد کررہا ہے۔ میلوں کے دوران جہاں محکمہ صحت کی اسکیموں کو عام لوگوں تک پہنچایا جاتا ہے۔ وہیں لوگ دیہی سطح پر اس طرح کی خدمات کو میسر رکھنے کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں۔
    جموں کشمیر میں محکمہ صحت کو مزید فعال اور مستحکم بنانے کی کوششوں کے تناظر میں ایوشمان بھارت کے تحت اب سرکار ہیلتھ میلوں کا اہتمام کر رہی ہے۔ ان میلوں کا مقصد طبی خدمات اور عوام کےلیے مختص مختلف اسکیموں کو عام لوگوں تک پہنچانا ہے۔ تاکہ عام لوگ گولڈن کارڈ و ٹیلی کونسلنگ جیسی کئ خدمات کے بارے میں جانکاری حاصل کر سکے۔ اس طرح کے میلے پورے جموں کشمیر کے ہیلتھ بلاکوں میں جاری ہیں اور لوگوں کی خاصی تعداد ان میلوں میں شمولیت اختیار کر رہے ہیں۔ بلاک میڈیکل افسر مٹن ڈاکٹر محمد اشرف پڈر کا کہنا ہے کہ ایوشمان بھارت کے تحت اس طرح کے پروگرام یو ٹی میں پہلی بار منعقد ہو رہے ہیں اور ان پروگراموں کا مقصد بنیادی سطح پر لوگوں کو مرکزی حکومت کی طبی و فلاحی اسکیموں کا فائدہ پہنچانا ہے۔ ڈاکٹر اشرف کے مطابق لوگوں کو لگاتار اس طرح کے میلوں میں شرکت کےلیے مدعو کیا جاتا ہے اور انہیں موقع پر ہی نہ صرف اعلیٰ طبی خدمات بہم پہنچائی جا رہی ہیں بلکہ گولڈن کارڈس بھی فراہم کۓ جا رہے ہیں۔
    ان میلوں کے ذریعے جہاں مختلف امراض میں مبتلا لوگوں کو اسپر اسپیشلٹی ٹریٹمنٹ فراہم کرنے کی ایک کوشش بھی کی جا رہی ہے۔ وہیں نوجوان نسل کےلیے پیشہ ور کونسلروں کے ذریعے کونسلگ کا عمل بھی جاری ہے۔ جسکی وجہ سے ان میلوں کی جانب طالب علموں کی ایک خاصی تعداد راغب ہو رہی ہے۔ جبکہ ای- سنجیونی جیسے پروگراموں کو بھی تقویت حاصل ہو رہی ہے۔ ایڈولیسینٹ ہیلتھ کونسلر تحمیدہ قادری کے مطابق اس طرح کے پروگرام یقینی طور پر ثمر آور ثابت ہو رے ہیں اور طلبا و طالبات کی ایک بڑی تعداد ان پروگراموں کی جانب راغب ہو رہے ہیں جہاں نہ صرف انکی طبی جانچ کی جاتی ہے بلکہ انہیں پیشہ وارانہ طور پر ماہر کونسلروں کے ذریعے کونسلنگ بھی فراہم کی جاتی ہے اور انہیں اس بات کی جانکاری حاصل ہوتی ہے کہ محکمہ صحت میں کونسلگ کا بھی ایک شعبہ ہے۔ تحمیدہ کے مطابق منشیات اور دیگر مسائل سے آج کی نوجوان نسل بری طرح سے متاثر ہے اور وقت پر اگر نوجوانوں کی کونسلگ کی جاۓ تو یقینی طور پر وہ ایسی برائیوں کا شکار نہیں بنیں گے۔ جبکہ ہیلتھ ہائ جین سے متعلق لڑکیوں کو اس طرح کے پروگراموں میں ضروری جانکاری بھی فراہم کی جا رہی ہے۔

    ہیلتھ میلوں میں لوگوں کی رغبت سے یہ بات عیاں ہوتی ہے کہ ایوشمان بھارت کا پروگرام خاصی مقبولیت حاصل کر رہا ہے۔ وہیں دور دراز علاقوں میں رہائش پزیر لوگوں کا کہنا ہے کہ سرکار مستقل طور پر ان علاقوں میں طبی ڈھانچے کو مضبوط بناۓ۔ واضح رہے کہ سرکار اس طرح کے پروگراموں کے تحت جہاں عام لوگوں کو جانکاری فراہم کر رہی ہے وہیں ضرورت اس بات کی ہے کہ متعلقین کی جانب سے اس طرح کی کوششیں مستقبل میں بھی جاری رہیں۔ تاکہ دیہی علاقوں میں قائم طبی نظام نی صورت میں نمایاں مثبت تبدیلیاں رونما ہو۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: