உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir کی معشیت میں باغبانی شعبے کی نرسریوں کا رول اہم، زون کیموہ سے ملک کے دیگر حصوں میں بھیجے جاتے ہیں پیڑ پودے

    Jammu and Kashmir کی معشیت میں باغبانی شعبے کی نرسریوں کا رول اہم، زون کیموہ سے ملک کے دیگر حصوں میں بھیجے جاتے ہیں پیڑ پودے

    Jammu and Kashmir کی معشیت میں باغبانی شعبے کی نرسریوں کا رول اہم، زون کیموہ سے ملک کے دیگر حصوں میں بھیجے جاتے ہیں پیڑ پودے

    J&K News : جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) کی معیشت میں باغبانی شعبہ ریڑھ کی ہڈی تصور کیا جاتا ہے اور ایسے میں ہارٹیکلچر کو بڑھاوا دینے کے لئے ہارٹیکلچر نرسریوں (Horticulture Nurseries)کا رول نہایت اہم ہے جبکہ اس سے روزگار کے مواقع فراہم ہو رہے ہیں ۔

    • Share this:
    کولگام: جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) کی معیشت میں باغبانی شعبہ ریڑھ کی ہڈی تصور کیا جاتا ہے اور ایسے میں ہارٹیکلچر کو بڑھاوا دینے کے لئے ہارٹیکلچر نرسریوں (Horticulture Nurseries)کا رول نہایت اہم ہے جبکہ اس سے روزگار کے مواقع فراہم ہو رہے ہیں ۔ ضلع کولگام اس وقت ہارٹیکلچر نرسریوں کا سرچشمہ ہے ۔ محکمہ ہارٹیکلچر زون کیموہ سے ملک کی نارتھ ایسٹ ریاستوں کے لئے پیڑ سپلائی کئے جاتے ہیں اور اس کی وجہ یہاں کی زرخیز مٹی ہے ، جس نے باغبانی شعبے میں نیا سنگ میل طے کیا ہے ۔ اس زون میں اس وقت 330 نرسریاں موجود ہیں ، جہاں سے ہر سال لاکھوں کی تعداد میں ہارٹیکلچر پیڑ پودے ریاست و ملک کے دیگر حصوں کی طرف رونہ ہوتے ہیں ، جن سے سالانہ 20 سے 25 کروڑ روپے کی آمدنی حاصل ہوتی ہے اور یہاں کی معیشت میں نہ صرف اضافہ ہورہا ہے بلکہ اس شعبے سے تعلق رکھنے والے افراد کے اہل خانہ کی مالی حالت مستحکم ہو رہی ہے۔

    نرسری مالکان نے محکمہ ہارٹیکلچر کے کام کی سراہنا کرنے کے علاوہ مرکزی سرکار کی معاونت والی اسکیموں کا بھی شکریہ ادا کیا۔ مشتاق احمد نامی مقامی نرسری مالک کا کہنا ہے کہ ان کی آمدنی میں کافی اضافہ ہوا ہے اور ساتھ ہی بے روزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم ہوا ۔ ادھر عبد الحمید نامی ایک اور نرسری مالک نے کہا کہ حکومت اور محکمہ نے تعاون دے کر کافی مشکلات کو آسان بنادیا ہے اور ضلع کولگام میں انتظامیہ نے روزگار کے نئے مواقع فراہم کرنے کی پہل کی ہے ۔

    محکمہ ہارٹیکلچر ضلع کولگام باغبانی شعبے میں انقلابی اقدامات اٹھارہی ہے اور یہی وجہ سے کہ وادی کی 80 فیصد نرسریاں صرف ضلع کولگام میں موجود ہے۔ محکمہ اس وقت سبسڈی کے تحت نرسریوں کو قائم کرنے پر زور دے رہا ہے جبکہ ہائی ڈینسٹی پیڑ لگانے پر کام جاری ہے ۔

    ہارٹیکلچر ڈیولیمپنٹ افسر زون کیموہ کولگام ارشد جمیل نے نرسریوں کے رول کی سراہنا کرتے ہوئے اسے اہم قرار دیا جبکہ چیف ہارٹیکلچر آفیسر کولگام ڈاکٹر محمد اقبال بابا کے مطابق ہارٹیکلچر شعبے کو بڑھاوا دینے میں ایسی نرسریوں کا رول اہم ہے اور اس طرح نہ صرف معاشی حالت میں بہتری آنے کا امکان ہے بلکہ انفرادی سطح پر روزگار کے مواقع فراہم ہو سکتے ہیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: