உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیراعظم نریندرمودی کی رہنمائی میں جموں وکشمیر میں بیرونی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کی سمت میں کئے جارہے ہیں مؤثر اقدامات، ایل جی منوج سنہا کاخلیجی ممالک کے سرمایہ؟

    وزیراعظم نریندرمودی کی رہنمائی میں جموں وکشمیر میں بیرونی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کی سمت میں کئے جارہے ہیں مؤثر اقدامات

    وزیراعظم نریندرمودی کی رہنمائی میں جموں وکشمیر میں بیرونی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کی سمت میں کئے جارہے ہیں مؤثر اقدامات

    جموں وکشمیر میں بیرونی ممالک کے سرمایہ کاروں کو یوٹی میں سرمایہ کاری کے لئے مرکز اور یوٹی انتظامیہ کی جانب سے کوششیں لگاتار جاری ہیں تاکہ جموں وکشمیر کے بیروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کیا جاسکے۔

    • Share this:
    جموں وکشمیر: جموں وکشمیر میں بیرونی ممالک کے سرمایہ کاروں کو یوٹی میں سرمایہ کاری کے لئے مرکز اور یوٹی انتظامیہ کی جانب سے کوششیں مسلسل جاری ہیں تاکہ جموں وکشمیر کے بیروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کیا جاسکے۔ اسی سلسلے کی ایک کڑی کے تحت خلیجی ممالک کے سرمایہ کار اور وہاں کی کمپنیوں کے سربراہان گزشتہ دو روز سے وادی کشمیر کے دورے پر ہیں۔ اس گروپ میں شامل سرمایہ کاروں اور دیگر متعلقہ عہدیداروں کے ساتھ جموں وکشمیر کے ایل جی منوج سنہا نے منگل کے روز سری نگر میں ملاقات کی۔

    اپنے خطاب کے دوران منوج سنہا نے زمین پر جنت کہلائے جانے والے کشمیر میں سرمایہ کاری کرنے کی گنجائش اور فوائد کو اجاگر کیا۔ منوج سنہا نے کہا کہ اس وفد کے کشمیر دورے سے جموں وکشمیر اورخلیجی ممالک کے درمیان تجارت کرنے والے افراد کا اعتماد بڑھے گا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اور خلیجی ممالک کے درمیان تجارتی اعتبار سے ایک قدیم تعلق ہے اور ان ممالک کے سرمایہ کاروں کی جموں وکشمیر میں سرمایہ کاری سے ایک نیا باب رقم ہوگا، جس سے آپسی سرمایہ کاری مزید پروان چڑھے گی۔

    لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا، "دوہزار چودہ سے ہندوستان اور خلیجی ممالک کے درمیان رشتوں میں نمایاں بہتری واقع ہوئی ہے۔
    لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا، "دوہزار چودہ سے ہندوستان اور خلیجی ممالک کے درمیان رشتوں میں نمایاں بہتری واقع ہوئی ہے۔


    لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا، "دوہزار چودہ سے ہندوستان اور خلیجی ممالک کے درمیان رشتوں میں نمایاں بہتری واقع ہوئی ہے، جس کی مدد سے تجارت کے شعبے میں شراکت داری مزید بڑھے گی۔ اس سے نہ صرف ہماری برآمدات میں اضافہ ہوگا بلکہ جموں وکشمیر میں بیرونی سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے لیے موزوں ماحول قائم ہوگا"۔ اس موقع پر منوج سنہا نے کہا کہ یوٹی انتظامیہ نے قدرتی وسائل سے بھر پور استفادہ کرنے کے لئے کئی مثبت اقدامات کئے ہیں تاکہ یوٹی کو مالی اعتبار سے مستحکم بنایا جاسکے۔

    منوج سنہا نے کہا،" وزیراعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کی قابل رہنمائی اور مشوروں کے طفیل ہی جموں وکشمیر انتظامیہ نے یوٹی میں بیرونی سرمایہ کاری کے طریقہ کار کو آسان بنانے کے لئے کئی موثر قدم اٹھائیں ہیں۔ صرف ایک سال کے عرصے میں سترہزار کروڑ روپئے سے زیادہ سرمایہ کاری کی تجاویز ہمارے پاس آئی ہیں"۔ انہوں نے سرمایہ کاروں کو یقین دلایا کہ یوٹی انتظامیہ انہیں ہنر مند افراد کی فراہمی کے ساتھ ساتھ درکار دیگر ہر طرح کی سہولت میسر رکھے گی تاکہ وہ ایک اچھے ماحول میں اپنے کاروباری ادارے چلا پائیں۔

    ایل جی منوج سنہا نے کہا،" اس سال جنوری کے مہینے میں Dubai Expo میں میری شرکت کے بعد بیرونی ممالک کی بے شمار کمپنیوں نے جموں وکشمیر میں سرمایہ کاری کے طویل مدتی منصوبوں کا اعلان کیا ہے اور ہم ان کے ساتھ تجارتی رشتوں کو مضبوطی فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن قدم اٹھانے کے لئے تیار ہیں"۔ نیوز 18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے منوج سنہا نے کہا کہ اس اقدام سے ابتدائی طور پر تقریباً سات لاکھ مقامی نوجوانوں کو روزگار فراہم ہوگا۔ اس موقع پرخلیجی ممالک کے سرمایہ کاروں نے جموں وکشمیر میں سرمایہ کاری کرنے کی حامی بھرتے ہوئے کہا کہ وہ اس دورے سے نہایت خوش ہیں اور انہیں امید ہے کہ وہ کشمیر میں سرمایہ کاری کرکے وادی کے عوام کے ساتھ مزید قریبی رابط کرپائیں گے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: