ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : 25 مارچ سے عوام کیلئے کھلے گا مشہور باغ گل لالہ ، جانئے اس مرتبہ کیا ہوگا خاص

ڈائریکٹر ٹورزم کشمیر ڈاکٹر جی این ایتو نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ اس سال باغ میں پندرہ لاکھ گُل لالہ اُگائے گئے ہیں۔ 62 اقسام کے گُل لالہ آئندہ چند دنوں میں کھلیں گے ، جس کے بعد اس باغ کو عام لوگوں کے لئے کھول دیا جائے گا۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : 25 مارچ سے عوام کیلئے کھلے گا مشہور باغ گل لالہ ، جانئے اس مرتبہ کیا ہوگا خاص
جموں و کشمیر : 25 مارچ سے عوام کیلئے کھلے گا مشہور باغ گل لالہ ، جانئے اس مرتبہ کیا ہوگا خاص

سرینگر میں واقع باغ گل لالہ پچیس مارچ کو سیاحوں اور عام لوگوں کے لئے کھول دیا جائے گا۔ ڈائریکٹر ٹورزم کشمیر ڈاکٹر جی این ایتو نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ اس سال باغ میں پندرہ لاکھ  گُل لالہ اُگائے گئے ہیں۔ 62 اقسام کے گُل لالہ آئندہ چند دنوں میں کھلیں گے ، جس کے بعد اس باغ کو عام لوگوں کے لئے کھول دیا جائے گا۔ ڈائریکٹر ٹورزم کشمیر کا کہنا ہے کہ محکمہ نے ٹولپ گارڈن کی تشہیر کے لئے پہلے ہی کئی اقدامات کئے ہیں ، جن میں احمد آباد ، کولکتہ ، رانچی اور ملک کے دیگر کئی شہروں میں روڈ شو کرنا شامل ہے۔


انہوں نے کہا کہ سیاحوں کو باغ گُل لالہ کی طرف راغب کرنے کے لئے سوشل میڈیا کا بھی استعمال کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس باغ کی تشہری کے لئے میٹرو ٹرین اور دلی کے ٹرمنل تھری ہوائی اڈے پر بھی ہورڈنگس لگائی گئی ہیں ۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ باغ گُل لالہ کی سیر کیلئے آئیں ۔ ڈاکٹر جی این ایتو نے کہا کہ محکمہ سیاحت اور محکمہ باغبانی کی جانب سے تین اور چار اپریل کو باغ گُل لالہ میں دو دن کا میگا فیسٹول منعقد کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ باغ کے باہر مختلف اسٹال بھی لگائے جائیں گے ، جہاں کشمیر کی دستکاریوں ، کشمیر کے کھان پان اور یہاں کی تہذیب و تمدن کی عکاسی کی جائے گی۔


انہوں نے کہا کہ باغ میں جانے  کے لئے سرکار نے انٹری ٹکٹ اجرا کرنے کا کام گزشتہ برس کی طرح ہی نجی کمپنی کو سونپ  دیا ہے ۔ محکمہ سیاحت کے ڈائریکٹر کشمیر کووڈ کی وبا کے بعد یہاں آنے والے سیاحوں کی تعداد سے کافی خوش ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جولائی دو ہزار بیس سے سیاحوں نے دوبارہ وادی کشمیر کا رُخ کرنا شروع کیا اور پندرہ مارچ تک لگ بھگ 63 ہزار سیاح وادی آچکے ہیں۔ ان کے مطابق زیادہ تر سیاح موسم سرما کے دوران ہی وارد کشمیر ہوئے اور آغاز میں زیادہ تر سیاحوں نے گُلمرگ کا رُخ کیا ۔


اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ برس دسمبر کے مہینے میں تیرہ ہزار سیاح گُلمرگ آئے جبکہ جنوری دو ہزار اکیس میں یہ تعداد بڑھ کر اٹھارہ ہزار ہوگئی ۔ فروری اور مارچ کے مہینوں کے دوران سیاحوں نے گُلمرگ کے ساتھ ساتھ پہلگام اور سرینگر کے اطراف کا بھی رُخ کیا ۔ فروری مہینے کے دوران 19 ہزار سیاح وادی کشمیر کی  سیر کیلئے آئے جبکہ مارچ کے وسط تک لگ بھگ تیرہ ہزار سیاحوں نے وادی کی سیر کی ۔

ڈاکٹر جی این ایتو کے مطابق ان سیاحوں میں سے زیادہ تر کا تعلق گُجرات اور بنگال سے تھا۔ سیاحوں کے بڑھتے رجحان کو دیکھتے ہوئے محکمہ کے اہلکار پُر امید ہیں کہ آنے والے دنوں میں کشمیر آنے والے سیاحوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہوگا۔ ڈائریکٹر جی این ایتو نے کہا کہ ٹولپ گارڈن کے قیام سے وادی کے سیاحتی سیزن میں ایک ماہ کا اضافہ ہوا ہے ، جس کی وجہ سے اس شعبہ سے وابستہ افراد میں بھی خوشی کا ماحول ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 16, 2021 04:53 PM IST