உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سانبہ: چک فقیرہ میں آئی بی کے پاس بی ایس ایف کو ملی 150 لمبی سرنگ، امرناتھ یاترا کو نشانے بنانے کی پاکستان کی کوشش کو IG- BSF نے بنایا ناکام

    Youtube Video

    Tunnel Discovered near IB in samba sector: ایسا معلوم ہوتا ہے کہ یہ ٹنل حال ہی میں کھودی گئی ہے اور اس کا مقصد پاکستان کی جانب سے دہشت گردوں کو سرحد کے اس پار بیجنے کے لئے راستہ فراہم کرنا ہے تاہم بی ایس ایف نے اس ٹنل کا بروقت پتہ لگا کر پاکستان کے ناپاک عزائم کو کامیاب ہونے نہیں دیا۔ آئی جی نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے سالانہ شری امرناتھ جی یاترا میں رخنہ ڈالنے کے لئے درانداز اس ٹنل کا استعمال کرسکتے تھے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر: بی ایس ایف کی جانب سے سانبہ سیکٹر میں چار مئی کو ایک ٹنل (Tunnel Discovered near IB in samba sector) کا پتہ لگایا گیا۔ یہ ٹنل سانبہ کے بین الا اقوامی سرحد کے پاس بارڈر آوٹ پوسٹ چک فکیرہ کے مقام پر پائی گئی۔ بی ایس ایف کے مطابق سرحدی حفاظتی فورس کے جوانوں نے ایک خصوصی گشت کے دوران اس مقام پر ایک گڑھا جیسا پایا اور تحقیقات کے بعد پتہ چلا کہ یہاں پر ایک ٹنل کھودی گئی ہے۔ انسپیکٹر جنرل بی ایس ایف ڈی کے بورا نے میڈیا کو بتایا کہ یہ ٹنل لگ بھگ ایک سو پچاس میٹر لمبی اور حال ہی میں کھودی گئی ہے۔ انہوں نے کہا یہ ٹنل پاکستانی طرف سے کھودی گئی ہے اور اس کی لمبائی لگ بھگ ایک سو پچاس میٹر ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ یہ ٹنل حال ہی میں کھودی گئی ہے اور اس کا مقصد پاکستان کی جانب سے دہشت گردوں کو سرحد کے اس پار بیجنے کے لئے راستہ فراہم کرنا ہے تاہم بی ایس ایف نے اس ٹنل کا بروقت پتہ لگا کر پاکستان کے ناپاک عزائم کو کامیاب ہونے نہیں دیا۔

    آئی جی نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے سالانہ شری امرناتھ جی یاترا میں رخنہ ڈالنے کے لئے درانداز اس ٹنل کا استعمال کرسکتے تھے۔ اس ٹنل کا دہانہ لگ بھگ دو فُٹ چوڑا ہے اور ابھی تک اکیس ریت کے بیگ برآمد کئے گئے ہیں جو ٹنل کے باہری دہانے کو مظبوطی فراہم کرنے کے لئے استعمال کئے گئے تھے۔ آئی جی بی ایس ایف نے کہا کہ پاکستان اس علاقے میں لگاتار ایسی حرکتیں کرتا آیا ہے تاکہ دہشت گردوں کو سرحد کے اس پار بیجا جاسکے۔

    انہوں نے کہا پچھلے لگ بھگ ڈیڑھ سال کے وقفے میں اس علاقے میں یہ پانچواں موقع ہے جب بی ایس ایف نے ٹنل کو دریافت کیا۔دو ہزار بارہ سے لے کے آج تک سرحد پر ایسے گیارہ ٹنل دریافت کئے گئے ہیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ پاکستان بھارت میں دہشت گردی کی وارداتیں انجام دینے کے لئے اسطرح کی ناپاک حرکتیں کرنے میں مصروف ہے۔ ایک سوال کے جواب میں کہ کیا سُنجواں جھڑپ میں مارے گئے غیر ملکی دہشت گرد اسی ٹنل سے اس پار داخل ہوگئے تھے ، آئی جی بی ایس ایف نے کہا کہ ایسا کہنا قبل از وقت ہوگا۔  یہ ٹنل حال ہی میں کھودی گئی ہے لیکن یہ کہنا کہ سُنجواں میں مارے گئے دہشت گرد اسیدس ٹنل کے زریع جموں و کشمیر میں داخل ہوئے تھے مشکل ہے کیونکہ اسبارےمیں ابھی تک کوئی ثبوت نہیں ملا ہے وہ کس راستے یا کس جگہ سے جموں تک پہنچے تھے اسبارے میں صیح معلومات تحقیقات مکمل ہونے کے بعد ہی سامنے آئے گی۔

    یہ بھی پڑھئے:  ملک سے غداری قانون: آئینی جواز پر7 ججوں کی بنچ کر سکتی ہے سماعت، سریم کورٹ کر رہا ہے غور۔

    یہ بھی پڑھئے: لڑکی نے لائیو میچ میں بوائے فرینڈ کو کیا پرپوز، RCB فین لڑکے نے انگوٹھی پہننے کے بعد....

    انہوں نے کہا کہ اس بار ٹنل میں پائے گئے ریت کے تھیلوں پر پاکستان کے کسی شہر کا نام نہیں ہے جبکہ ماضی میں اکثر اوقات پاکستان کے کراچی شہر کا نام لکھا رہتا تھا۔ شاید پاکستان کی یہ کوشش ہے کہ وہ اپنے آپ کو اس سے دور رکھنے کا ڈرامہ کرنا چاہتا ہے۔ ڈی کے بورا نے کہا کہ بھارت پاکستان کی جانب سے اسطرح کی حرکات کو روکنے کے لئے پڑوسی ملک پاکستان کے ساتھ ایسے معاملات کے بارے میں اپنی ناراضگی کا اظہار کرتا رہا ہے اور یہ معاملہ بھی پاکستانی رینجرس کے ساتھ اُٹھایا جائے گا۔ واضح رہے کہ سرحد پر تاربندی اور سخت چوکسی کی وجہ سے پاکستان دہشت گردوں کو اس پار بیجنے کے لئے زیر زمین راستوں کا استعمال کر نے کی کوشش کر رہا ہے۔ حالانکہ اسکی زیادہ تر کوششیں ناکام بنائی جاتی رہی ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: