ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: سڑک حادثات میں دو افردا ہلاک

کپواڑہ ضلع کے سرحدی علاقے میں دو الگ الگ سڑک حادثہ پیش اے بنگس وادی کے قریب بڑی بہک علاقہ میں اس وقت ایک فوجی گاڑی کو حادثہ پیش آیا، جب وہ فوجی پوسٹ کی طرف جارہی تھی۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: سڑک حادثات میں دو افردا ہلاک
جموں وکشمیر: سڑک حادثات میں دو افردا ہلاک

کپواڑہ: جموں وکشمیر میں سڑکوں کی خستہ حالی اورگاڑیوں کی تیز رفتاری سے سڑک حادثات میں ہر گزرتے دن کے ساتھ انسانی جانیں چلی جاتی ہیں۔ شاہراہوں پرحادثات کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے اور ہر دن کسی نہ کسی خاندان پر قیامت ٹوٹ پڑتی ہے۔ سڑکوں پر ڈرائیوروں کی تیز رفتاری اور منمانی کی وجہ سے ان حادثات میں اضافہ ہو رہا ہے، لیکن اس کے باوجود بھی ٹرانسپورٹ حکام اور ٹریفک پولس خاموش تماشائی بنے بھیٹے ہوئے ہیں۔ تیز رفتار گاڑیاں چلانے والے ڈرائیوروں پر قانون کی کوئی مار نظر نہیں آرہی ہے، جس کی وجہ سے وہ دن دھاڑے قانون کی دھجیاں اڑاتے ہیں اور سڑکوں پر پیدل چلنے والا ایک محصوم راہگیر اپنے آپ کو غیر محفوظ سمجھتا ہے۔ کیونکہ ٹرانسپورٹ مکمہ چھوٹے چھوٹے بچوں کو لائسنس فراہم کر رہے ہیں اور گاڑی چلانے شخص کو درکار لوازمات نہ ہونے کے باوجود لائسنس فراہم کی جاتی ہے۔


کپواڑہ ضلع کے سرحدی علاقے میں دو الگ الگ سڑک حادثہ پیش اے بنگس وادی کے قریب بڑی بہک علاقہ میں اس وقت ایک فوجی گاڑی کو حادثہ پیش آیا، جب وہ فوجی پوسٹ کی طرف جارہی تھی۔ بتایا جاتا ہے گاڑی ڈرائیور کے قابو سے باہر ہوکر الٹ گئی، جس کے نتیجے میں ایک مزدور دولت حسین ساکنہ مارسری موقع پر ہی ہلاک ہوگیا جبکہ گا ڑی میں سوار 3 فوجی اور 4 مزدور شدید طور زخمی ہوئے، جنہیں علاج ومعالجہ کیلئے اسپتال میں  بھرتی کرایا گیا۔ پولیس اسٹیشن کرالہ پورہ نے ایک کیس درج کرکے معاملے کی نسبت تحقیقات شروع کر دی ہے۔ وہی ایک اور سڑک حادثے میں وادی لولاب کے کلاروس علاقہ میں ایک ٹریکٹر الٹ گیا اور ایک گہری کھائی میں گرگیا، جس کے نتیجے میں فاروق احمد میر ساکنہ کلاروس کی موقع پر موت واقع ہوگئی جبکہ منظور احمد ڈار اور بشیر احمد میر ساکناں کلاروس شدید طور زخمی ہوئے، جنہیں فوری طور پر اسپتال میں علاج و معالجہ کیلئے داخل کیا گیا۔ وہیں کپواڑہ ضلع کے ہندواڑہ علاقے میں ایک ماروتی کار نے 9 سالہ بچی کو ٹکر مارکر زخمی کر دیا۔ اس طرح سے ایک ہی دن سڑک حادثات میں ایک درجن افراد زخمی ہوگئے اور دو افراد کی موت واقع ہوگئی۔

ضرورت اس بات کی ہے کہ محکمہ ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولس کو متحرک ہوکر ٹریفک رول کو عمل  میں لانےکیلئے ایک بیداری مہم شروع کرنی چاہئے تاکہ سڑکوں پر چلنے ایک محصوم راہگیر اپنے آپ کو محفوظ سمجھ سکے۔ کیونکہ ڈرائیوروں کی جانب سے گاڑیوں کی تیز رفتاری میں سڑک پر چلنے والا ایک محصوم راہگیر حادثہ کا شکار بن جاتا ہے۔ کیونکہ گزشتہ دنوں سڑکوں پر پیش اے مختلف حادثات میں سڑکوں پر چلنے والے کئی افردا حادثے کے شکار ہوگئے۔ زخمی افراد نے سوالیہ انداز میں کہا کہ وہ سڑک کے کنارے چل رہے تھے کہ تیز رفتار گاڑی نے سڑک کے بجائے کنارے کی طرف آکر عام راہگیروں کی ٹکر مار دی۔ زخمی افراد نے محکمہ ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولس پر الزام عائد کیا کہ وہ تیز رفتاری سے چلنے والے ڈرائیوروں کی خلاف کوئی کارروائی نہیں کرتے ہیں، جس کی وجہ سے دن دھاڑے قانون کی دھجیاں اڑاتے ہیں۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 25, 2020 11:29 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading