உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UAE کی سرمایہ کاری اس بات کا اشارہ کہ OIC ممالک کشمیر کو مان رہے ہیں ہندوستان کا اٹوٹ حصہ : ایکسپرٹس

    UAE کی سرمایہ کاری اس بات کا اشارہ کہ OIC ممالک کشمیر کو مان رہے ہیں ہندوستان کا اٹوٹ حصہ : ایکسپرٹس

    UAE کی سرمایہ کاری اس بات کا اشارہ کہ OIC ممالک کشمیر کو مان رہے ہیں ہندوستان کا اٹوٹ حصہ : ایکسپرٹس

    یو ای اے (UAE) میں واقع سات سرکاری اور پرائیویٹ کمپنیوں نے جموں وکشمیر (Jammu and kashmir) میں سرمایہ کاری کرنے کا عہد کیا ہے ۔ اس سے یوٹی میں بڑی سرمایہ کاری ہوسکتی ہے اور ملازمت کے مواقع پیدا ہوسکتے ہیں ۔ ایکسپرٹس اس کو ایک ماسٹر اسٹروک بتا رہے ہیں ۔

    • Share this:
      شیلیندر وانگو

      سری نگر : یو ای اے (UAE) میں واقع سات سرکاری اور پرائیویٹ کمپنیوں نے جموں  وکشمیر (Jammu and kashmir) میں سرمایہ کاری کرنے کا عہد کیا ہے ۔ اس سے یوٹی میں بڑی سرمایہ کاری ہوسکتی ہے اور ملازمت کے مواقع پیدا ہوسکتے ہیں ۔ ایکسپرٹس اس کو ایک ماسٹر اسٹروک بتا رہے ہیں ۔ بتادیں کہ جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے گزشتہ ہفتہ دبئی کا دورہ کیا تھا ۔ اس دوران لولو گروپ ، المایا گروپ ، ماتو انویسٹمنٹ ایل ایل سی ، جی ایل امپلائمنٹ بروکریج ایل ایل سی اور نون گروپ کے ساتھ مختلف شعبوں میں سات معاہدوں پر دستخط کئے گئے ۔ نیز ڈی پی ورلڈ جموں و کشمیر میں  inland port بھی بنائے گی۔ علاوہ ازیں سنچری فائنانشیل کے ذریعہ بھی 100 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کیلئے ایم او یو پر دستخط کئے گئے ہیں ۔

      ایکسپو دبئی میں سرمایہ کاروں اور کاروباری لیڈروں کی سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے ایل جی منوج سنہا کا کہنا تھا کہ 21ویں صدی میں پائیدار 'عالمی شراکت دار' بننے کیلئے ہندوستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان تعلقات گزشتہ برسوں میں کافی پختہ ہو چکے ہیں ۔ یہ جموں و کشمیر کے سفر کے وہ اوقات ہیں ، جہاں مواقع بہت زیادہ ہیں ۔

      ایکسپرٹس نے اس کو سفارتی اور سیاسی محاذ پر ایک ماسٹر اسٹروک قرار دیا ہے ۔ جموں و کشمیر میں اپنی خدمات انجام دینے والے ایک سابق ڈی جی پی نے نیوز 18 کو بتایا کہ یہ سفارتی طور پر ایک بہت بڑا قدم ہے کیونکہ او آئی سی کا ایک اہم ملک یو اے ای جموں و کشمیر میں سرمایہ کاری کر رہا ہے اور اس کا مطلب ہے کہ وہ تسلیم کرتے ہیں کہ ہندوستان کا دعوی درست ہے ۔

      انہوں نے مزید کہا کہ یہ پاکستان کیلئے بھی ایک بڑا دھچکا ہے ، کیونکہ پڑوسی ملک او آئی سی گروپ کو کشمیر پر متحرک کر رہا ہے۔ لیکن اب او آئی سی ممالک کشمیر کو ہندوستان کا اٹوٹ انگ تسلیم کرنے لگے ہیں ۔ اگر متحدہ عرب امارات کی سرمایہ کاری بڑھ جاتی ہے تو سعودی عرب بھی اس کے نقش قدم پر چل سکتا ہے ۔

      متحدہ عرب امارات میں ہندوستان کے سابق سفیرنودیپ سوری، جو فی الحال فکی دبئی ایکسپو کے شریک چیئرمین بھی ہیں، نے نیوز 18 کو ایک خصوصی انٹرویو میں بتایا کہ اگر ہندوستان نے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو ریڈ کارپیٹ فراہم کیا اور کامیابی کی چند کہانیاں لکھ دیں اور ان کمپنیوں کا یو ٹی میں اچھا تجربہ رہا تو  دوسرے بھی اس کی پیروی کریں گے ۔

      وہیں جموں و کشمیر کے سابق ڈی جی پی شیش پال وید نے کہا کہ روزگار کے نئے مواقع مقامی کشمیری نوجوانوں کو کارپوریٹ سیکٹر میں اپنا کیریئر بنانے کی ترغیب دیں گے اور وہ پاکستانی ایجنٹوں کے جھوٹے پروپیگنڈے کا شکار نہیں بنیں گے ، جو انہیں ملی ٹینسی میں شامل ہونے پر آمادہ کرتے ہیں ۔ نیز متحدہ عرب امارات کے سرمایہ کاروں کے ذریعہ قائم کردہ کاروباری اداروں کو پاکستان انسپانسرڈ دہشت گردوں کے ذریعہ نشانہ بھی نہیں بنایا جائے گا ، کیونکہ پاکستانی فوج اور دیگر ایجنسیاں جموں و کشمیر میں ایسے کاروباری اداروں کو کسی قسم کا نقصان پہنچانے کی متحمل نہیں ہوں گی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: