ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

مرکزی حکومت نے بڈگام کے کانہامہ ماگام گاوں کو ہینڈ لوم ولیج کے طور پر ترقی دینے کو دی منظوری

ہینڈ لوم کے فروغ اور اسے نئے سرے سے آگے لے جانے کی غرض سے مرکزی سرکار نے یہ قدم اٹھایا ہے۔

  • Share this:
مرکزی حکومت نے بڈگام کے کانہامہ ماگام گاوں کو ہینڈ لوم ولیج کے طور پر ترقی دینے کو دی منظوری
بڈگام کے کانہامہ ماگام گاوں کو ہینڈ لوم ولیج کے طور پر ترقی دینے کو ملی منظوری

مرکزی سرکار کی وزارت برائے ٹیکسٹائلز نےچند ماہ پہلے وسطی ضلع بڈگام کے کانہامہ ماگام گاوں کو ہینڈ لوم ولیج کے طور پر ترقی دینے کو منظوری دی ہے تاکہ کشمیر میں روایتی کانی شال اور پشمینہ کی بُنائی کو ترقی دی جا سکے۔ گزشتہ چند مہینے پہلے بڈگام میں اس سلسلے میں ضلع تر قیاتی کمشنر بڈگام کی صدارت میں ایک میٹنگ بھی منعقد ہوئی تھی۔جس میں  پروجیکٹ کیلئے ایکشن پلان کی تشکیل اور کام کی تقسیم کاجائزہ لیا گیا۔


کانہامہ گاوں ہینڈ لوم اور ہینڈی کرافٹس کے لئے کافی مشہور ہے۔ لاکھو ں قیمت والا کانی شال یہاں تیار ہوتا ہے۔ کشمیری کانی شال کا استعمال پوری دنیا میں کیا جاتا ہے۔ ہینڈ لوم کے فروغ اور اسے نئے سرے سے آگے لے جانے کی غرض سے مرکزی سرکار نے یہ قدم اٹھایا ہے۔ حکومت اب کانہامہ کا نقشہ ایک ماڈل نمونے کے طور پر بنانے جارہی ہے تاکہ عالمی سطح پر اس ماڈل ولیج کو دکھایا جاسکے ۔کانہامہ گاوں کی اپنی ایک پرانی تاریخ ہے۔ کہا جاتاہے کہ کانی شال کی بنائی کی وجہ سے  ہی کانہامہ کو کانہامہ کا نام دیا گیا ہے۔


سجاد احمد نامی ایک مقامی کاریگر نے نیوز 18اردو کو بتایا کہ کانہامہ کا پرانانام گنڈ کارہامہ تھا اور کانی شال کی بنیاد پڑنے کے بعد اس گاوں کا نام کانہامہ پڑا۔کیونکہ کانی شال کی شروعات کانہامہ سے ہی ہو چکی ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ غلام محمد کانہامی اپنے دور کی ایک جلیل القدر شخصیت تھی جنہوں نے کانہامہ میں کانی شال اور پشمینہ شال کی صنعت کے فروغ میں کافی اہم رول ادا کیا۔ مرکزی سرکار کے اس اعلان  سے کانہامہ میں مقامی لوگوں میں کافی خوشی پائی جارہی ہے۔ کانہامہ میں بیشتر لوگ کانی شال بنانے کا فن جانتے ہیں اور بہت سارے لوگ آج بھی اس کام سے وابستہ ہیں۔ اس صنعت سے وابستہ لوگوں  میں روزگار کی وسعت اور ترقی کی ایک کرن جاگ اٹھی۔


کئی لوگوں نے نیوز18اردو کو بتایا کہ حکومت کے  اس اعلان سے نئی نسل کے لئے روزگار کے وسائل کھلیں گے۔ وہیں دوسری جانب لوگوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ مرکزی سرکار کی جانب سے جاری  کردہ یہ اعلان  صرف کاغذات تک ہی محدود نہیں  رہنا چاہئے ۔بلکہ اس اعلان پر عمل پیرا ہو کر کانہا مہ میں اس صنعت کی بنیادی سطح پر اس کے ڈھانچے استوار کرنے کا  کا م شروع کیا جانا چاہئے۔ حبیب اللہ وانی نامی ایک مقامی کاریگر نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ مرکزی سرکار نے اعلان تو کیا ہے لیکن ابھی تک اس کے لئے کوئی پہل شروع نہیں کی گئی وہ چاہتے ہیں کہ جلد اس پروجیکٹ کا کام شروع کیاجائے۔ یہ بات قابل غور ہے کہ ہندوستان کے وزیراعظم نریندر مودی نے اپنی حلف برداری کی تقریب میں  پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف کی والدہ کیلئے پشمینہ شال ہی کا تحفہ دیا تھا۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 27, 2020 08:27 AM IST