உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: جنوبی کشمیر کے سب ضلع ترال میں پھر دیکھنے کو ملی بھائی چارہ کی انوکھی مثال، ہر طرف ہورہی تعریف، جانئے پورا معاملہ

    J&K News: جنوبی کشمیر کے سب ضلع ترال میں پھر دیکھنے کو ملی بھائی چارہ کی انوکھی مثال، ہر طرف ہورہی تعریف، جانئے پورا معاملہ

    J&K News: جنوبی کشمیر کے سب ضلع ترال میں پھر دیکھنے کو ملی بھائی چارہ کی انوکھی مثال، ہر طرف ہورہی تعریف، جانئے پورا معاملہ

    Jammu and Kashmir News: جنوبی کشمیر کے سب ضلع ترال علاقے میں بھائی چارے کی ایک اور انوکھی مثال اس وقت دیکھنے کو ملی ، جب اعتکاف مکمل کرنے والے ایک مسلم نوجوانوں کی ایک سکھ شہری نے پگڑی باندھ کر عزت افزائی کی ، جس کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ہر طرف اس روایتی بھائی چارے کی مثال دی جا رہی ہے ۔

    • Share this:
    ترال : جنوبی کشمیر کے سب ضلع ترال علاقے میں بھائی چارے کی ایک اور انوکھی مثال اس وقت دیکھنے کو ملی ، جب اعتکاف مکمل کرنے والے ایک مسلم نوجوانوں کی ایک سکھ شہری نے پگڑی باندھ کر عزت افزائی کی ، جس کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ہر طرف اس روایتی بھائی چارے کی مثال دی جا رہی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق پاری بل ترال کے مقامی نوجوان محمد وسیم مقامی مسجد میں اعتکاف مکمل کرنے کے بعد مسجد سے باہر آئے تو وہاں مقامی سکھ شہری کرنیل سنگھ نے اس نوجوان کو پگڑی باندھی اور مٹھائی سے استقبال کیا ۔ تاکہ گاوں میں روایتی بھائی چارہ بنا رہے ۔ اس واقعہ کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سماج کا ہر فرد اس کو اصل کشمیریت سے تعبیر کر رہا ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر اسمبلی میں پہلی مرتبہ کشمیری پنڈتوں کو ریزرویشن، جانئے رپورٹ کی 5 اہم باتیں


    مقامی لوگوں کا ماننا ہے کہ وہ صدیوں سے ایک ساتھ بھائی چارے کے ساتھ رہ رہے ہیں اور ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شریک رہتے ہیں اور گاوں کا یہ بھائی چارہ ایک مثال بنا ہوا ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ آج کے دور میں اس بھائی چارے کو فروغ دینے کی ازحد ضرورت ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر کے کس ضلع کو ملی کتنی اسمبلی سیٹیں؟ 5 لوک سبھا سیٹوں کے بارے میں بھی یہاں جانئے


    ترال میں مسلمانوں کے ساتھ ساتھ سکھ طبقہ کی ایک بڑی تعداد آباد ہے اور یہاں ہمیشہ سے ہندو مسلم بھائی چارہ قائم رہا ہے اور یہاں ابھی کچھ پنڈت خاندان ابھی بھی مقیم ہیں ، جنہوں نے نامساید حالات کے دوران بھی ہجرت نہیں کی وہ ابھی بھی یہاں اپنے مسلمان اور سکھ بھائیوں کے ساتھ رہتے ہیں ۔

    نیوز 18 اردو سے بات چیت کرتے ہوئے کچھ لوگوں نے کہا کہ اس گاوں میں شادی بیاہ کے تقریبات میں وہ سکھ برادری کے لیے کھانے پینے کا الگ انتظام کرتے ہیں اور سکھ برادری بھی مسلمانوں کیلئے الگ انتظامات کرتے ہیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: