ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

امریکہ نے کشمیر میں انٹرنیٹ پر پابندی اور لیڈران کی حراست پر کیا فکرمندی کا اظہار

امریکی وزارت خارجہ (US State Department) نے جموں۔کشمیر (Jammu-Kashmir) میں انٹرنیٹ پر پابندی (Internet Ban) اور لیڈران کی حراست پر سنیچر کو فکر کا اظہار کیا ہے۔

  • Share this:
امریکہ نے کشمیر میں انٹرنیٹ پر پابندی اور لیڈران کی حراست پر کیا فکرمندی کا اظہار
امریکی وزارت خارجہ (US State Department) نے جموں۔کشمیر (Jammu-Kashmir) میں انٹرنیٹ پر پابندی (Internet Ban) اور لیڈران کی حراست پر سنیچر کو فکر کا اظہار کیا ہے۔

واشنگٹن: امریکی وزارت خارجہ (US State Department)  نے جموں۔کشمیر  (Jammu-Kashmir) میں انٹرنیٹ پر پابندی (Internet Ban) اور لیڈران کی حراست پر سنیچر کو فکر کا اظہار کیا ہے۔

امریکی وزارت خارجہ کے بیورو آف جنوبی اور وسطی ایشیائی امور (ایس سی اے)Bureau of South and Central Asian Affairs - United States Department of State Bureau)نے ٹویٹ کیا کہ وہ ہندوستان میں امریکی سفیر کینتھ جسٹر اور دیگر غیر ملکی سفارت کاروں کے جموں و کشمیر کے دورے پر سخت نظر رکھے ہوئے ہیں۔

بیورو نے ٹویٹ کیا ، "ہم لیڈران (Leaders) اور رہائشیوں کی حراست اور انٹرنیٹ پابندیوں سے فکرمند ہیں۔ ہم حالات معمول ہونے کی توقع کرتے ہیں، سب اچھا ہو"۔

اس  سے  پہلے جموں و کشمیر میں آرٹیکل 370 (Article 370) ہٹائے جانے کے بعد سے لگائی گئی روک پر سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ (Supreme Court) نے  کہا تھا  کہ جموں کشمیر (Jammu Kashmir) میں لوگوں کا تحفظ اور آزادی ہماری ترجیحات میں شامل ہے۔

سپریم کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر میں شخص کی آزادی سب سے اہم ہے۔ اس کے علاوہ کورٹ نے یہ بھی کہا ہے کہ بہت  ہی  ضروری  ہونے  پر  طے  شدہ  وقت  کیلئے ہی انٹرنیٹ بند کیا جانا چاہئے۔ ساتھ ہی کورٹ نے یہ بھی دوہرایا کہ انٹرنیٹ غیر معینہ مدت کے لئے بند نہیں کیا جاسکتا۔ سپریم کورٹ نے کہا سبھی ضروری خدمات کیلئے انٹرنیٹ شروع کیا جائے۔

First published: Jan 12, 2020 09:14 AM IST