உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News : پندرہ سے 18 سال تک کی عمر کے بچوں کو کورنا مخالف ٹیکے لگانے کا آغاز، ایل جی نے کہی یہ بڑی بات

    J&K News : پندرہ سے 18 سال تک کی عمر کے بچوں کو کورنا مخالف ٹیکے لگانے کا آغاز، ایل جی نے کہی یہ بڑی بات

    J&K News : پندرہ سے 18 سال تک کی عمر کے بچوں کو کورنا مخالف ٹیکے لگانے کا آغاز، ایل جی نے کہی یہ بڑی بات

    Jammu and Kashmir News : ٹیکہ کاری کی اس مہم کا یو ٹی کے لیفٹننٹ گورنر منوج سنہا نے جموں میں منعقدہ ایک تقریب پر آغاز کیا۔ اس موقع پر منوج سنہا نے ملک کے سائنسدانوں کی یہ ٹیکہ تیار کرنے کی کوششوں کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ یو ٹی انتظامیہ نے بچوں کی ٹیکہ کاری کی اس مہم کو کامیاب بنانے کے لئے ہر ممکن انتظام کیا ہے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : ملک کے دیگر حصوں کی ہی طرح جموں و کشمیر یوٹی میں بھی آج پندرہ سے اٹھارہ سال تک کی عمر کے بچوں کو کورنا مخالف ٹیکے لگانے کا آغاز کیا گیا۔ ٹیکہ کاری کی اس مہم کا یو ٹی کے لیفٹننٹ گورنر منوج سنہا نے جموں میں منعقدہ ایک تقریب پر آغاز کیا۔ اس موقع پر منوج سنہا نے ملک کے سائنسدانوں کی یہ ٹیکہ تیار کرنے کی کوششوں کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ یو ٹی انتظامیہ نے بچوں کی ٹیکہ کاری کی اس مہم کو کامیاب بنانے کے لئے ہر ممکن انتظام کیا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کا اس بات کے لئے شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے اس عمر کے بچوں کے لئے درکار 70 فی صد ٹیکے یو ٹی کو دستیاب کرائے ہیں۔

    ملک کے مختلف حصوں میں اومیکران کے کیسوں میں اضافے کا ذکر کرتے ہوئے منوج سنہا نے کہا کہ اس وائیرینٹ کو یو ٹی میں پھلنے سے روکنے کے لئے تمام تر احتیاطی تدابیر کا بندوبست کیا گیا ہے۔ منوج سنہا نے کہا کہ ہندوستانی سرکار نے ابھی 70 فی صد ویکسین مہیا کرانے کا بھروسہ دیا ہے اور کہا ہے  کہ جلد ہی باقی ڈوز بھی مہیا کرائے جائیں گے۔  ملک بھر میں جس طرح سے اومیکران کا خطرہ بڑھ رہا ہے یا انفیکشن بڑھا ہے ، اُس کو لے کر کل ہم نے ایک جائزہ میٹنگ میں حالات کا جائزہ لیا تھا اور اپنی تیاری ہم مکمل کر رہے ہیں۔ ابھی تک مجھے لگتا ہے کہ ہم اس خطرے سے بچے ہوئے ہیں۔ ہم ہر ایک کوشش کریں گے کہ یہاں کے لوگوں کو بہتر سے بہتر طبی سہولیت فراہم کرسکیں ۔

    بچوں کے لئے آج ٹیکہ کاری کی مہم شروع ہوتے ہی کافی تعداد میں پندرہ سے اٹھارہ سال تک کی عمر کے بچے ٹیکہ کاری کے مراکز پر پہنچے اور کورونا مخالف ٹیکے لگوائے۔ نیوز 18 اردو سے بات چیت کرتے ہوئے لکھشئے سمبھیال نے کہا کہ گزشتہ دو برسوں سے ہم کافی مشکلات سے دوچار ہیں ۔ کووڈ وبا کی وجہ سے ہمارے اسکول بند ہیں اور ہماری پڑھائی متاثر ہو رہی ہے۔ آن لائن کلاسیز تو ہوتی ہیں تاہم ہماری یو ٹی میں کئی دور دراز علاقےایسے ہیں ، جہاں انٹرنیٹ کی سہولت دستیاب نہیں ہے ، جس کی وجہ سے طالب علم پریشان  ہیں۔ آج ہمیں خوشی ہے کہ ویکسنیشن کی مہم شروع ہوگئی ہے اس سے ہم کورونا کی بیماری سے محفوظ رہیں گے اور ہمارے سکول بھی کھُل جائیں گے تاکہ ہم اچھی طرح سے تعلیم حاصل کرسکیں ۔

    وہیں ابھینندن جموال نامی ایک اور طالب علم نے نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کی وجہ سے لوگ کافی پریشان رہے ہیں ۔ لہذا ویکسین لگوانا نہایت لازمی ہے۔ یہاں پر پندرہ سے اٹھارہ سال تک کی عمر کے سبھی بچوں کو مفت ویکسین لگائے جارہے ہیں ۔ لہذا میں سب ساتھیوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ویکسین ضرور لگوائیں ۔ سریندر شرما نامی ایک اور طالب علم نے کہا کہ سکول انتظامیہ نے کئی روز قبل انہیں مطلع کیا تھا کہ وہ تین جنوری کو ویکسین لگوانے کے لئے اسکول میں حاضر رہیں ۔ لہذا وہ اپنے کئی دیگر ساتھیوں سمیت کورونا مخالف ٹیکہ لگوانے کے لئے اسکول پہنچے۔

    نیوز18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے سُریندر شرما نے کہا کہ کورونا ایسی بیماری ہے جو ایک ایسے دوسرے شخص تک پھیل جاتی ہے۔ تاہم ویکسین لگانے سے اس کا پھیلاو روکا جاسکتا ہے۔ لہذا ہر ایک فرد کو ویکسین لگوانا چاہئے تاکہ ہم خود بھی اس بیماری سے بچ سکیں اور ہمارا سماج بھی اس وبائی بیماری سے محفوظ رہ سکے۔

    واضح رہے محکمہ صحت کی طرف سے جاری کئے گئے اعداد و شمار کے مطابق جموں و کشمیر یوٹی کے آٹھ لاکھ 33 ہزار بچوں کو اس مہم کے تحت کورونا مخالف ٹیکے لگائے جائیں گے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: