உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امت شاہ کے جموں وکشمیر دورے کے کیا رہے مثبت نتائج، جانئے دفاعی اور سیاسی ماہرین کی رائے

    امت شاہ کے جموں وکشمیر دورے کے کیا رہے مثبت نتائج، جانئے دفاعی اور سیاسی ماہرین کی رائے

    امت شاہ کے جموں وکشمیر دورے کے کیا رہے مثبت نتائج، جانئے دفاعی اور سیاسی ماہرین کی رائے

    Jammu and Kashmir : مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے جموں وکشمیر کے تین روزہ طویل دورے کے دوران انہوں نے پاکستان کویہ سخت پیغام دیا کہ ہندوستان پاکستان کے ساتھ بات چیت نہیں کرے گا، کیونکہ اسلام آباد دہشت گردی کی اعانت کررہاہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir | Jammu | Srinagar
    • Share this:
    جموں و کشمیر : مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے جموں وکشمیر کے تین روزہ طویل دورے کے دوران انہوں نے پاکستان کویہ سخت پیغام دیا کہ ہندوستان پاکستان کے ساتھ بات چیت نہیں کرے گا، کیونکہ اسلام آباد دہشت گردی کی اعانت کررہاہے۔ راجوری اور بارہمولہ میں  عوامی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے امت شاہ نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ دہشت گردی کوجڑ سےاکھاڑ پھینکنے کے لئے کارروائی جاری رہے گی۔ انہوں نے ان ملک دشمن عناصر کی نشاندہی کرنے کے لیے عوام سے تعاون طلب کیا جو نوجوانوں کودہشت گردی کی طرف دھکیلنے کی کوشش کرتے ہیں تاکہ ایسے عناصر کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ ماہرین نے امت شاہ کے اس بیان کی تعریف کی۔

    معروف دفاعی ماہر، لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ) راکیش شرما کا کہنا ہے کہ وزیر داخلہ کے بیان سے دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے میں مدد ملے گی کیونکہ امت شاہ نے کشمیر میں دہشت گردی کے بیرونی اور اندرونی دونوں جہتوں پر بات کی ہے۔ سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ امت شاہ نے ان سیاستدانوں کو بھی پیغام دیا جو پاکستان کے ساتھ بات چیت کی وکالت کررہے ہیں۔

    دفاعی ماہر، لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ) راکیش شرما نے نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیر داخلہ نے دہشت گردی کے بیرونی اور اندرونی دونوں پہلوؤں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ "وزیر داخلہ جو کچھ بھی کہتے ہیں، وہی زمین پر لاگو کیا جاتاہے۔ فوج نے آل آؤٹ آپریشن شروع کیا تھا اور دہشت گردوں کو مجبور کیا گیا تھا کہ وہ اپنی نقل و حرکت صرف جنوبی کشمیر تک محدود رکھیں۔ حکومت نے دہشت گرد تنظیموں کو حوالہ کے ذریعے رقومات فراہم کرنے پر قدغن لگائی۔تاکہ وہ ہائبرڈ دہشت گردوں کو کشمیر میں تخریبی سرگرمیاں کرنے کے لیے آمادہ نہ کر سکیں"۔ وزیر داخلہ نے پاکستان کو سخت پیغام دیا ہے کہ ہندوستان ان سے بات نہیں کرے گا بلکہ وہ وادی کے نوجوانوں کے ساتھ بات چیت کرنے کو ترجیح دے گا۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کی کوشش ہے کہ عالمی سطح پر پاکستان کو معاشی طور پر کمزور کیا جائے۔

     

    یہ بھی پڑھئے: ڈویژنل کمشنر جموں نے ضلع رام بن میں نیشنل ہائی وے-44 چار لین کے تعمیراتی کاموں لیا جائزہ


    سیاسی تجزیہ کار دنیش منہوترا نے کہا کہ " بی جے پی کو اس کی خارجہ پالیسیوں کے بارے میں کوئی بھی تجویز نہیں دے سکتا۔ امت شاہ نے کشمیر پر مرکوز سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں کو بھی ایک سخت پیغام دیا ہے، جو پاکستان کے ساتھ بات چیت کی وکالت کر رہے ہیں ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے ماضی میں بھی سابق وزیر اعلیٰ مرحوم مفتی محمد سعید سے کھلے عام کہا تھا کہ کوئی بھی وزیر اعلیٰ پاکستان کے ساتھ بات چیت کا مشورہ نہیں دے سکتا" ۔

    پہاڑی برادری کو شیڈول ٹرائب کا درجہ دینے کے حوالے سے امت شاہ کے اعلان کی عوامی سطح پر بھی پزیرائی ہورہی ہے۔ سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ اگرچہ یہ اعلان سیاسی نوعیت کا لگتا ہے ۔ تاہم امت شاہ نے دونوں قبائلی برادریوں کے درمیان توازن قائم کرنے کی کوشش کی۔ پہاڑی برادری کو شڈول ٹرائب کا درجہ دینا گجر اور بکروال برادری کو متاثر نہیں کرے گا۔ مرکزی وزیر داخلہ کی طرف سے جموں و کشمیر میں سرمایہ کاری کے حوالے سے کئے گئے اعلانات نے مقامی نوجوانوں کی امیدیں بڑھا دی ہیں کہ ان کے لیے روزگار کے مزید مواقع دستیاب ہو سکتے ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: جموں وکشمیر: امت شاہ نے بارہمولہ ریلی میں کہا- ’کچھ لوگ کہتے ہیں کہ پاکستان سے بات کرو...‘


    جموں چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری سرمایہ کاری کے بارے میں بھی پرامید ہے۔ تاہم چیمبر کے صدر کا کہنا ہے کہ حکومت کو صنعتی یونٹ قائم کرنے کے لئے سرمایہ کاروں پر درکار زمین الاٹ کرنے کے لئے ایک واضح لائحہ عمل مرتب کرنا چاہے۔ کے سی سی آئی کے صدر ارون گھپتا نے نیوز18 سے بات چیت کرتے ہوئے کہا،"ہم اس قدم کی حمایت کرتے ہیں کہ جموں و کشمیر میں زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کو تاہم سرکار کو چاہئے کہ وہ سرمایہ کاروں کو درکار زمین الاٹ کرنے کے لئے واضح پلان بنانا چاہے"۔

    اپنے دورے کے دوران مرکزی وزیر داخلہ نے کشمیر ڈویژن کے لیے تقریباً 2000 کروڑ روپے کے 240 ترقیاتی منصوبوں کے علاوہ جموں ڈویژن کے لیے 263 ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح اور سنگ بنیاد رکھا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اس دورے نے عام لوگوں سے متعلق تقریباً تمام پہلوؤں کو چھو لیا، جس سے عوام میں ایک مثبت پیغام چلا گیا ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: