ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں اب نوجوان مختلف قسم کی موسیقی کی طرف ہو رہے ہیں راغب

مرتضیٰ نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بارہ سال کی عمر میں اس موسیقی کی شروعات کی تھی اور وہ آہستہ آہستہ اب کامیابی کی سیڑھیاں بھی چڑھ رہےہیں۔ اس معاملہ میں مرتضی کے گھر والے بھی انہیں اپنا تعاون پیش کر رہے ہیں۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں اب نوجوان مختلف قسم کی موسیقی کی طرف ہو رہے ہیں راغب
وادی کشمیر میں اب نوجوان مختلف قسم کی موسیقی کی طرف ہو رہے ہیں راغب

سری نگر۔ وادی کشمیر میں اگرچہ صدیوں سے لوگ صوفیانہ موسیقی کے ساتھ دلچسپی رکھتے تھے۔ تاہم وقت بدلنے کے ساتھ ساتھ اب یہاں کی نوجوان نسل مختلف قسم کی موسیقی میں حصہ لے رہی ہے۔ نودل ترال کے رہنے والے ایک 16 سالہ نوجوان مرتضیٰ رفیق بھی بچپن سے ہی ریپ موسیقی میں اپنی دلچسپی دکھا رہے ہیں۔


مرتضیٰ نے نیوز 18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بارہ سال کی عمر میں اس موسیقی کی شروعات کی تھی اور وہ آہستہ آہستہ اب کامیابی کی سیڑھیاں بھی چڑھ رہےہیں۔ اس معاملہ میں مرتضی کے گھر والے بھی انہیں اپنا تعاون پیش کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں بچن سے ہی اس موسیقی کا شوق تھا تو ان کے والدین نے بھی انہیں اس شعبے میں آگے بڑھنے کی صلاح دی اور ان کے تئیں اپنی نیک خواہشات ظاہر کیں۔ مرتضیٰ گلوکاری کے ساتھ ساتھ اداکاری بھی کرتے ہیں لیکن ابھی تک انہیں ایسا کوئی پلیٹ فارم انہیں میسر نہیں ہوا ہے جس سے وہ مزید آگے بڑھ سکیں۔


حال ہی میں نیوز 18 اردو کی جانب سے شروع کئے گئے ٹیلنٹ ہنٹ پروگرام  کشمیر کے ستارے کے بارے میں بات کرتے ہوئے مرتضیٰ نے کہا کہ اس پروگرام کی مدد سے کشمیری نوجوانوں کا ہنر دنیا تک پہنچے گا۔  اس پروگرام کے شروع کرنے پر انہوں نے نیوز ایٹین کا شکریہ ادا کیا۔ مرتضیٰ کو دیکھ کر اسی گاوں کے ایک اور بچے نے بھی ریپ موسیقی میں حصہ لینا شروع کیا ہے۔ وادی میں اگرچہ ریپ موسیقی کی طرف نوجوان زیادہ توجہ نہیں دے رہے تھے تاہم اب آہستہ آہستہ نوجوان اس موسیقی کی طرف راغب ہونے لگے ہیں۔ اب ضرورت اس بات کی ہے کہ ایسے باصلاحیت نوجوانوں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرایا جائے جہاں یہ اپنی صلاحیت اور اپنے ہنر کو چار چاند لگا سکیں۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 20, 2020 08:11 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading