ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر کے نوجوانوں کو کوروناوائرس کے درمیان سائیکلنگ کرنے کا مشورہ

وادی کے نوجوانوں کوکوروناوائرس کے بیچ سائیکلنگ کرنے کامشورہ ۔سماجی فاصلہ برقرار رکھنے اورانسان کے اندرقوت مدافعت مضبوط کرنےکےلئےسائیکلنگ بہترین سواری۔ وادی کشمیر کے سائیکلسٹ سیاحتی مقامات کاکررہےہیں دورہ۔ سائیکلنگ کوزیادہ سے زیادہ عام کرنے کی غرض سے اٹھایا جا رہا ہے قدم۔

  • Share this:
وادی کشمیر کے نوجوانوں کو کوروناوائرس کے درمیان سائیکلنگ کرنے کا مشورہ
وادی کشمیر کے نوجوانوں کو کوروناوائرس کے بیچ سائیکلنگ کرنے کا مشورہ

سری نگر۔ کوروناوائرس کے بیچ وادی کے مختلف سائیکلسٹ ان دنوں مختلف سیاحتی مقامات پرسائیکلنگ کرتے ہوئے پہنچ کر سیر وتفریح کررہے ہیں ۔سرینگرکے ساتھ ساتھ دوسرے دیگراضلاع سےتعلق رکھنے والےسائیکلسٹ سیاحتی مقامات جن میں خاص طورپر گلمرگ ،پہلگام ،سونہ مرگ،دودھ پتھری،توسہ میدان،پیجن پتھری کے علاوہ دیگرمقامات کادورہ کررہے ہیں ۔وادی کشمیرمیں کھیل کود کی جانب نوجوانوں کی خاصی رغبت پائی جارہی ہے۔کھیل کےہر میدان میں کشمیرکےنوجوان اپنی صلاحیتوں کالوہا منوارہے ہیں۔ اتناہی نہیں بلکہ دنیا میں جتنے بھی نئے کھیل متعارف ہوتے ہیں کشمیرکے نوجوان ان کھیلوں کو سیکھنے کی جانب متوجہ اور فکرمند ہوتے ہیں۔


سجادحسین نامی ایک فزیکل ٹیچر نے نیوز18اردو کو بتایا کہ جتنی بھی نئی کھیلیں متعارف ہوتی ہیں یہاں کے بچے یوٹیوب یا سوشل میڈیا سے جانکاری حاصل کرکے ان کھیلوں کو سیکھنے کی کوشش میں نظرآتےہیں جیسے کہ تائیکانڈو، کراٹی، وغیرہ کھیلوں کارجحان یہاں بہت زیادہ نظر آتا ہے۔ سائیکلنگ کے میدان میں کشمیر سے تعلق رکھنے والےکافی نوجوانوں نے سائیکلنگ کی تاریخ میں اپنانام درج کیا۔ قومی اوربین الاقوامی مقابلوں میں حصہ لے کر ملک کانام روشن کیا،جن میں کاوسہ نارہ بل کے بلال احمد ڈارقابل ذکرہیں۔


کوروناوائرس سے جہاں زندگی کا ہرشعبہ متاثرہوا وہیں کھیل کامیدان بھی متاثر رہا۔کھلاڑی بھی اپنے گھروں کے اندر محصور ہوکررہ گئے۔اب جبکہ زندگی کی رفتار نے تھوڑی بہت حرکت کرناشروع کیا تو وادی کے نوجوان کھلاڑیوں نے بھی اس رفتارکو تیزکرنے کاتہیہ کیا۔ شروعات میں سائیکلسٹ سامنے آئے جنہوں نے سرکارکی گائیڈلائن اور ایس اوپیزپر عمل پیراہوکرایسا قدم اٹھایاجس سے نہ ہی لوگوں کی بھیڑ جع ہوگی نہ سماجی فیصلہ رکھنے میں دشواریاں پیش آئیں گی۔ یعنی ان سائیکلسٹس نے سیاحتی مقامات کے اونچی اونچی پہاڑوں پرسائیکل کے ذریعےپہنچنے کاقدم اٹھایا۔اس قدم سے سماجی فیصلہ بھی برقراررہے گابلکہ انسانیکے اندر قوت مدافعت بھی مضبوط ہوگا۔


فیروزاحمدنامی سائیکلسٹ نےنیوز 18اردوکوبتایاکہ ''انہوں نے سرینگرسے گلمرگ،پہلگام اورسونہ مرگ تک کاسفرسائیکل پرکیا ۔فیروزنے مزید بتایاکہ وہ گزشتہ بیس سالوں سے سائیکلنگ کررہے ہیں۔ سہیل احمدنامی ایک اور سائیکلسٹ نے نیوز 18 اردو کو بتایاکہ انہوں نے کوروناوائرس کے بیچ کئی سیاحتی مقامات کادورہ کیا،اب وہ سرینگرسے جموں تک کا 300 کلومیٹر کا سفر سائیکل کے ذریعے کرنےکا ارادہ رکھتےہیں۔بلال احمدنامی سائیکلسٹ نے نیوز18اردوکو بتایاکہ ''وادی کے نوجوانوں کو سائیکلنگ کی جانب راغب کرنے اوریہاں سائیکلنگ کو زیادہ سے زیادہ عام کرنےکی غرض سے یہ قدم اٹھایا۔ انہوں نے وادی کے نوجوانوں کوکورونا وائرس کے بیچ سائیکلنگ کرنے کامشورہ دیا۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 10, 2020 10:21 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading